உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    جموں وکشمیر: دیگر فصلوں کی طرح ہی لیونڈر کی کاشت کی طرف کسانوں کا بڑھ رہا ہے رحجان

    وادی کشمیر میں ذائقہ دار میوہ جات کے ساتھ ساتھ اب لیونڈر پھولوں کی کاشت کو بھی فروغ حاصل ہو رہا ہے۔ گزشتہ کچھ برسوں میں ضلع پلوامہ میں نجی سطع پرلیونڈر کی کاشت میں اضافہ ہو رہا ہے۔

    وادی کشمیر میں ذائقہ دار میوہ جات کے ساتھ ساتھ اب لیونڈر پھولوں کی کاشت کو بھی فروغ حاصل ہو رہا ہے۔ گزشتہ کچھ برسوں میں ضلع پلوامہ میں نجی سطع پرلیونڈر کی کاشت میں اضافہ ہو رہا ہے۔

    وادی کشمیر میں ذائقہ دار میوہ جات کے ساتھ ساتھ اب لیونڈر پھولوں کی کاشت کو بھی فروغ حاصل ہو رہا ہے۔ گزشتہ کچھ برسوں میں ضلع پلوامہ میں نجی سطع پرلیونڈر کی کاشت میں اضافہ ہو رہا ہے۔

    • Share this:
    پلوامہ: وادی کشمیر میں ذائقہ دار میوہ جات کے ساتھ ساتھ اب لیونڈر پھولوں کی کاشت کو بھی فروغ حاصل ہو رہا ہے۔ گزشتہ کچھ برسوں میں ضلع پلوامہ میں نجی سطع پرلیونڈر کی کاشت میں اضافہ ہو رہا ہے۔ وہاں ضلع میں لیونڈرکے پروسسنگ یونٹ کی بھی ضرورت سامنے آرہی ہے۔

    اعجاز احمد وادی کشمیر کے ایسے لیونڈر کاشت کرنے والے پہلے کسان ہیں، جس نے نجی سطح پر پہلا Distilation unit کا قیام عمل میں لایا ہے۔ ضلع پلوامہ کے بھٹنور علاقے میں اعجاز نے پانچ سال قبل لیونڈرکی کامیابی سے کاشت کے ساتھ ہی اس نے لیونڈر سے تیل حاصل کرنے کی نجی سطح کا اپنی نوعیت کا پہلا یونٹ کا قیام بھی عمل میں لایا۔

    اعجاز اور ماہر سائنسدانوں کا ماننا ہے کہ آج کل کے اس بدلتے موسمی حالات سے جہاں باقی فصلوں پر برے اثرات مرتب ہو رہے ہیں۔ تاہم وہاں لیونڈر کی کاشت اس موسم کے لئے بہتر ہے۔ پلوامہ میں لیونڈرکی کاشت پہلے سرکاری فارموں تک ہی محدود تھی۔ کسانوں کی دلچسپی کے ساتھ ساتھ مرکزی حکومت نے پانچ سے قبل آروما مشن سے لیونڈرکی کاشت کچھ حد تک سرکاری فارموں کے علاوہ نجی سطح پرکی گئی۔

    یہ بھی پڑھیں۔

    جموں وکشمیر: پلوامہ میں پولیس اور سی آر پی ایف کے مشترکہ ناکے پر دہشت گردوں کا حملہ

    لیونڈر کی کاشت میں ہو رہا اضافے سے کسانوں کے علاوہ مقامی اور غیر مقامی مزدوروں کو بھی روزگار حاصل ہورہاہے ۔تاہم کاشتکاروں کا کہنا ہے کہ Distilation unit قائم کرنے کے لیے سرکار کو آگے آنے کی ضرورت ہے لیونڈر کی کاشت کے لیے وادی کشمیرکے موسم کو موزوں مانا جاتا ہے۔

    لیونڈر سے حاصل ہونے والے تیل کی بین الاقوامی بازار میں کافی مانگ ہے۔ لیونڈر اور دیگر آروما پھولوں کی کاشت کے علاوہ پروسسنگ کے لئے کسانوں کو خصوصی تربیت فراہم کرنا وقت کی اہم ضرورت ہے۔ تاکہ یہ صنعت وادی کشمیر کی معیشت میں مزید اضافہ کرسکیں۔
    Published by:Nisar Ahmad
    First published: