ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

جموں و کشمیر : ڈل جھیل پر للی پودے کا گھیراو انتظامیہ کیلئے بڑا چلینج، جدید مشینیں کام پر لگانے کا دعوی 

Jammu and Kashmir News : لیکس اینڈ واٹر ویز اتھارٹی کا دعوٰی ہے کہ انہوں نے یہ کام اب جدید طرز عمل سے شروع کیا ہے اور جہاں جدید طرز کی مشینوں سے للی کو صاف کیا جائے گا وہاں اس کے دوبارہ اُگ آنے کا امکان نہیں ہے۔

  • Share this:
جموں و کشمیر : ڈل جھیل پر للی پودے کا گھیراو انتظامیہ کیلئے بڑا چلینج، جدید مشینیں کام پر لگانے کا دعوی 
جموں و کشمیر : ڈل جھیل پر للی پودے کا گھیراو انتظامیہ کیلئے بڑا چلینج، جدید مشینیں کام پر لگانے کا دعوی 

سرینگر : آلودگی کے چلتے شہرہ آفاق ڈل جھیل کئی مسائل سے دو چار ہے ۔ پہلے ازولہ نام کی گھاس اور پھر للی نام کے پودے نے جھیل کے ایک بڑے حصے کو جیسے جنگل میں تبدیل کردیا ہے۔ ڈل جھیل پر اس موسم میں للی نام کے پودے کی وجہ سے کئی مقامامات پر کشتیوں کا چلنا بھی مشکل ہوگیا ہے ۔ جموں و کشمیر ہائی کورٹ اور سائنسی مشاورتی کمیٹی نے للی کے پھیلاو کو جھیل کے لئے ایک بڑی پریشانی قرار دے کر لیکس اینڈ واٹر ویز ڈیولپمنٹ اتھارٹی کو للی کو اکھاڑ پھیکنے کے لئے ہدایات دیں ہیں ۔


پچھلے کچھ سال سے گرما شروع ہوتے ہی یہ کام مزدوروں اور کچھ مشینوں کے ذریعے انجام دیا جارہا تھا ، لیکن انہیں جھیل کو صاف کرنے میں کوئی نمایاں کامیابی نہیں ملی ۔ کیونکہ ہر سال للی پھر اُگ آتی ہے ۔ اس مرتبہ لیکس اینڈ واٹر ویز اتھارٹی کا دعوٰی ہے کہ انہوں نے یہ کام اب جدید طرز عمل سے شروع کیا ہے اور جہاں جدید طرز کی مشینوں سے للی کو صاف کیا جائے گا وہاں اس کے دوبارہ اُگ آنے کا امکان نہیں ہے۔


اتھارٹی کے اسسٹنٹ ایگزیکٹو انجینئر شبیر حسین کا کہنا ہے کہ اس بار للی کو جھیل سے نکالنے کا کام ایک نجی کمپنی کو دیا گیا ہے ، جو یہ کام نہ صرف جلدی انجام دے گی ، بلکہ جو حصہ یہ صاف کرے گی ، وہاں اگلے سال للی نہیں اُگ آئے گا ۔ انہوں نے کہا کہ فی الحال اس کام کے لئے چار مشینیں لگائی گئی ہیں اور دوسرا ٹینڈر بھی جلدی جاری کیا جارہا ہے ، جس کے بعد مزید مشینیں کام پر لگائی جائیں گی۔


لیکس اینڈ واٹر ویز ڈیولپمنٹ اتھارٹی  کے وائس چیئرمین بشیر احمد بٹ کا کہنا ہے کہ پچھلے سال کے تجربہ کی بُنیاد پر ان مشینوں کو یہ کام دیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ازولہ نامی گھاس کی صفائی کا کام بھی جاری ہے ، لیکن للی سے جھیل کو صاف کرنے کے لئے یہ کام ٹھیکے پر دیا گیا ہے ۔

ادھر ڈل میں آباد لوگ اور کشتی بان صفائی کے اس کام سے خوش ہیں ۔ محمد اشرف نامی ایک کشتی بان نے کہا کہ للی کے بے ہنگم پھیلنے کی وجہ سے کئی مقامات پر کشتی کے لئے راستہ ملنا مشکل ہوگیا تھا ۔ ان لوگوں کا مطالبہ ہے کہ مزید مشینیں کام پر لگا کر یہ کام تیزی سے کیا جانا چاہئے ۔

ڈل جھیل میں گھاس کے اُگ آنے کی سب سے بڑی وجہ اس میں کناروں پر آباد کئی بستیوں سے آنے والا انسانی فضلہ ہے۔ اس معاملہ پر لیکس اینڈ واٹر ویز اتھارٹی کے وائس چیئرمین بشیر احمد نے کہا کہ اس مسئلہ سے نمٹنے کے لئے اقدامات کئے جا رہے ہیں اور گُپت گنگا کے مقام پر ایک ایس ٹی پی قائم کیا جارہا ہے ۔ تاکہ جھیل میں آلودگی نہ پھیلے ۔

یہ بات قابل زکر ہے کہ محکمہ یو ای ڈی اس منصوبہ پر کئی سال سے کام کررہا ہے ، لیکن کئی ڈیڈ لائینز ختم بھی ہونے کے باوجود یہ کام ابھی مکمل نہیں ہوپایا ہے۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Jun 25, 2021 07:56 PM IST