உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    دہشت گردوں کے حملے میں شہید ہوئے بلال احمد کو شوریہ چکر ایوارڈ سے نوازا گیا، والدہ سارہ ایوارڈ لیتے ہوئے روپڑیں

    دہلی میں بلال کی والدہ سارہ بیگم کو صدر جمہوریہ نے عطا کیا ایوارڈ۔ اشک بار ہوئیں بلال کی والدہ

    دہلی میں بلال کی والدہ سارہ بیگم کو صدر جمہوریہ نے عطا کیا ایوارڈ۔ اشک بار ہوئیں بلال کی والدہ

    جب بلال احمد نے اپنی جان کی بازی لگا کر مکان میں رہائش پذیر لوگوں کو بحفاظت نکال رہے تھے تو ملی ٹنٹنوں نے بلال پر گرنیڈ پھینکا اور اندھا دھند گولیاں چلائی جس کے نتیجے میں بلال شدید زخمی ہوگئے اس دوران بلال نے ایک ملی ٹنٹ کو ہلاک کیا تھا اور بعد میں بلال زخموں کی تاب نہ لاکر دم توڑ بیٹھے۔

    • Share this:
    جموں وکشمیر پولیس میں کام کررہے  ایس پی او شہید بلال احمد ماگرے کو شوریہ چکر ایوارڈ سے نوازا گیا۔راشٹر پتی بھون دہلی میں منعقدہ تقریب میں صدر جمہوریہ رام ناتھ کوند نے بلال کی والدہ سارہ بیگم کویہ ایوارڈ عطا کیا۔ سارہ بیگم نے پر نم آنکھوں سے یہ ایوارڈ حاصل کیا۔ تقریب میں یہ ایوارڈ حاصل کرتے ہوئے بلال کی والدہ سارہ بیگم اشک بار ہوئیں اور اس دوران ایک پولیس خاتون اہلکار انہیں حوصلہ دیتی رہیں۔ صدر جمہوریہ رام ناتھ کوند اس کے سامنے آکر انہیں یہ ایوارڈ عطا کیا۔ ملیٹنسی مخالف آپریشن کے دوران بلال کی بہادی پر تقریب میں خصوصی رپورٹ پیش کی گئی۔ان کی بنیادری کے نمونے بیان کئے گئے۔واضح رہے کہ بلال احمد ماگرے شمالی کشمیر کے ضلع بارہمولہ کے ٹنگمرگ کے بادی پورہ گاؤں سے تعلق رکھتے تھے۔

    بلال احمد ماگرے بارہمولہ میں جموں وکشمیر پولیس میں بطور ایس پی او کام کررہے تھے۔ بیس اگست دوہزار انیس کو بارہمولہ میں ایک گھر میں ملیٹنٹنوں کی موجودگی کی خبر ملتے ہی سیکورٹی فورسز نے اس گھر کا محاصرہ کیا تھا اور سرچ آپریشن چلایا گیا تھا، بلال اس آپریشن کا حصہ تھے۔ جب بلال احمد نے اپنی جان کی بازی لگا کر مکان میں رہائش پذیر لوگوں کو بحفاظت نکال رہے تھے تو ملی ٹنٹنوں نے بلال پر گرنیڈ پھینکا اور اندھا دھند گولیاں چلائی جس کے نتیجے میں بلال شدید زخمی ہوگئے اس دوران بلال نے ایک ملی ٹنٹ کو ہلاک کیا تھا اور بعد میں بلال زخموں کی تاب نہ لاکر دم توڑ بیٹھے۔



    دہلی میں منعقدہ تقریب میں وزیراعظم نریندر مودی اور دیگر مرکزی وزراء اور فوج کے اعلی افسران بھی تھے۔ ٹنگمرگ میں بلال کی بہن نے نیوز18اردو کے ساتھ بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ انہیں بے حد خوشی ہے کہ ان کے بھائی کو مرنے کے بعد اس ایوارڈ کے لیے چنا گیاانہوں نے کہاکہ ان کے بھائی بہادر تھے انہوں نے بہادری سے اپنے ملک کے لیے اپنی جان نشاور کی۔ بلال کی بہن نے صدر جمہوریہ کا شکریہ ادا کیا۔تاہم انہوں نے کہاکہ بلال کے مرنے کے بعد کہاگیا تھا کہ ان کے اہل خانہ میں سے کسی ایک فرد کو ایس آر او کے تحت نوکری فراہم کی جائے گی لیکن آج تک وہ نوکری فراہم نہیں کی گئی۔انہوں نے سرکار سے اپیل کی ان کے اہل خانہ میں سے کسی ایک فرد کو نوکری فراہم کی جائے۔ بلال ایک غریب گھرانے سے تعلق رکھتے تھے ان کے گھر والے مزدوری کرتے ہیں۔
    Published by:Sana Naeem
    First published: