ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

آرٹیکل 35 اے اور 370 کیلئے مہم جاری رکھیں گے ، حد بندی کوئی ایشو نہیں : محبوبہ مفتی

جموں و کشمیر کی سابق وزیر اعلی محبوبہ مفتی (Mehbooba Mufti) نے کہا ہے کہ آرٹیکل 35 اے اور 370 ریاست کے لوگوں کی شناخت ہے ، اس کو لے کر لڑائی جاری رہے گی ۔ حدبندی پر انہوں نے کوئی دلچسپی دکھانے سے انکار کردیا ۔

  • Share this:
آرٹیکل 35 اے اور 370 کیلئے مہم جاری رکھیں گے ، حد بندی کوئی ایشو نہیں : محبوبہ مفتی
آرٹیکل 35 اے اور 370 کیلئے مہم جاری رکھیں گے ، حد بندی کوئی ایشو نہیں : محبوبہ مفتی

نئی دہلی : وزیر اعظم مودی کے ساتھ جمعرات کو ہوئی اہم میٹنگ کے بعد پی ڈی پی لیڈر محبوبہ مفتی نے کہا ہے کہ آرٹیکل 35 اے اور 370 کی لڑائی ختم نہیں ہوئی ہے ۔ نیوز 18 سے بات چیت میں جموں و کشمیر کی سابق وزیر اعلی نے کہا کہ ہم نے اپنی پارٹی کی طرف سے میٹنگ میں کہا کہ پانچ اگست 2019 کو جو فیصلہ آپ نے لیا ، وہ صحیح نہیں تھا ۔ وہ غیر آئینی تھا ۔ اس فیصلہ سے جموں و کشمیر کو نہ صرف جذباتی طور پر ٹھیس پہنچی بلکہ اقتصادی طور پر بھی دھکا لگا ۔


انہوں نے کہا کہ ہم اس ملک کے آئین کو مانتے ہیں ۔ وزیر اعظم نے بلایا ، اس لئے ہم آئے ، ہم سے دل کی دوری کم کرنے کی ضرورت نہیں ، بلکہ لوگوں کے ساتھ دل کی دوری کم کرنے کی ضرورت ہے ۔ لوگوں تک پیغام بھیجنے کیلئے بھروسہ قائم کرنا ہوگا ۔


محبوبہ مفتی نے کہا کہ ہم 35 اے اور 370 کیلئے مہم جاری رکھیں گے ۔ ہم نے کل میٹنگ میں کہا کہ آپ کو 70 سال لگے ، ہوسکتا ہے کہ 70 مہینوں میں ہمارے مطالبات پورے ہوجائیں ۔ یہ ہمارے لوگوں کی شناخت کا سوال ہے ۔ اس کی بحالی کیلئے ہماری جدوجہد جاری رہے گی ۔ میں اپنی بات پر قائم ہوں ۔ میرے لئے 370 یا 35 اے صرف کوئی نعرہ نہیں ہے ۔ اس کی بحالی تک الیکشن نہیں لڑوں گی ، پارٹی الیکشن لڑے گی ، پی ڈی میں وزیر اعلی کے چہرہ کی کمی نہیں ۔


پاکستان سے بات چیت پر انہوں نے کہا کہ ہم نے پاکستان سے بات چیت کا معاملہ وزیر اعظم مودی کے سامنے رکھا ہے ۔ چین سے بھی ہندوستانی حکومت بات چیت کررہی ہے ، جبکہ وہاں صرف زمین ہے ، جموں و کشمیر میں تو عام لوگوں کا سوال ہے ۔ وہیں حد بندی کو لے کر انہوں نے کہا کہ یہ ہمارے لئے کوئی ترجیح نہیں ، اس میں میری کوئی دلچسپی نہیں ۔

گپکار ایلائنس ایک ساتھ الیکشن لڑے گا یا نہیں ، اس معاملہ پر مل بیٹھ کر فیصلہ کیا جائے گا ۔ علاحدگی پسندوں کے ساتھ بات چیت سے پہلے ان کو رہا کیا جائے یا باہر کی جیلوں سے واپس جموں و کشمیرلایا جائے ۔ ہم لداخ کی بات کرتے رہیں گے ، ہمارے لئے جموں و کشمیر لداخ آج بھی ایک ہے ۔ لداخ الگ نہیں ہے ، کل کی میٹنگ میں بھی لداح کے حالات پر بات کی ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Jun 25, 2021 09:14 PM IST