உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    J&K News: پاکستان ایک 'خاص منصوبے' کے تحت جموں میں ملی ٹینسی کو  بڑھاوا دینے کے درپے، جانئے کیا کہتے ہیں ماہرین

    J&K News: پاکستان ایک 'خاص منصوبے' کے تحت جموں میں ملی ٹینسی کو  بڑھاوا دینے کے درپے، جانئے کیا کہتے ہیں ماہرین

    J&K News: پاکستان ایک 'خاص منصوبے' کے تحت جموں میں ملی ٹینسی کو  بڑھاوا دینے کے درپے، جانئے کیا کہتے ہیں ماہرین

    Jammu and Kashmir : گزشتہ کئی مہینوں کے دوران جموں میں ملی ٹینٹوں کی سرگرمیوں میں اضافہ دیکھنے کو ملا ہے۔ ملیٹینٹ سرگرمیوں میں اضافے کی وجہ سے قانون نافذ کرنے والی ایجنسیوں کو ایک نئے چلینج کا سامنا ہے۔

    • Share this:
    جموں و کشمیر : گزشتہ کئی مہینوں کے دوران جموں میں ملی ٹینٹوں کی سرگرمیوں میں اضافہ دیکھنے کو ملا ہے۔ ملیٹینٹ سرگرمیوں میں اضافے کی وجہ سے قانون نافذ کرنے والی ایجنسیوں کو ایک نئے چلینج کا سامنا ہے۔ دفاعی ماہرین کا ماننا ہے کہ پاکستان ایک خاص منصوبے کے تھت جموں میں ملیٹینسی کو بڑھاوا دینے کے درپے ہے۔ اپریل کے آخری ہفتہ میں ملی ٹینٹوں نے تین بار جموں ضلع میں اپنی موجودگی دکھائی۔ اگرچہ حفاظتی عملہ نے چوکسی کا مظاہرہ کرتے ہوئے ملی ٹینٹوں کے ناپاک عزائم کو ناکام بنادیا ۔ تاہم سُنجواں علاقے میں سی آئی ایس ایف کے ایک سب انسپیکٹر شیید ہوگئے ۔ جموں ضلع کے ساتھ ساتھ راجوری او ر پونچھ اضلاع میں بھی چند ماہ سے ملی ٹینٹوں کی سرگرمیوں میں اضافہ دیکھنے کو ملا ہے۔ دفاعی ماہرین کا ماننا ہے کہ جموں میں ملی ٹینٹ سرگرمیوں کو انجام دینے کی وجہ  کشمیر میں سرگرم ملی ٹینٹوں پر سکیورٹی فورسیز کا بڑھتا ہوا دباو ہے۔

     

    یہ بھی پڑھئے : کشمیر کے مشہور لوک رقص رؤف میں کیا ہےخاص بات؟ رؤف کا عید سے تعلق...؟


    سرکردہ  دفاعی ماہر اور جموں و کشمیر کے سابق ڈی جی پی  ڈاکٹر ایس پی وید کا کہنا ہے کہ  ملی ٹینٹ تنظیمیں یہ چاہتی ہیں کہ کشمیر میں ملٹینسی مخالف کارروائیوں کے لئے تعینات حفاظتی عملے کی کچھ تعداد جموں خطے میں تعینات رہیں تاکہ وادی میں ان پر دباو کم ہو۔ نیوز 18 اردو کے ساتھ بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہا : میری سمجھ کے مطابق کنٹرول لائن کے اس پار بیٹھے ملی ٹینٹوں کے آقا چاہتے ہیں کہ وہ جموں خطے میں جہاں گزشتہ کئی برسوں سے دہشت گردی لگ بھگ ختم ہو چکی ہے دوبارہ دہشت گردی شروع کی جائے ۔ اس کے پیچھے ان کا یہ مقصد ہے کہ اگر جموں خطے میں ملی ٹینٹ سرگرم ہوجاتے ہیں تو حفاظتی عملے کو یہاں بھی تعینات کرنا پڑے گا جس سے وادی کشمیر میں ان پر حفاظتی عملے کا دباو کم ہوجائے گا۔ حفاظتی عملے  کو اس طرف خصوصی توجہ دینی چاہئے تاکہ پاکستان اپنے منصوبے میں کامیاب نہ ہونے پائے ۔

    ایس پی وید کا کہنا ہے کہ حفاظتی ایجنسیوں کو اس معاملہ پر غور و فکر کرنے کی ضرورت ہے کہ جموں خطے میں امن کو درہم برہم کرنے کی پاکستان کی سازش کو کیسے  ناکام کیا جائے۔ انہون نے کہا اگرچہ جموں خطے کے عام لوگ امن پسند ہیں تاہم خطے میں ملی ٹینٹ سرگرمیوں میں اضافہ اس بات کی طرف اشارہ کرتا ہے کہ یہاں بھی کچھ عناصر ملی ٹینٹوں کے اعانت کار ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پولیس کو چاہئے کہ وہ عام لوگوں کے ساتھ قریبی رابطہ بنا کر ملک دشمن عناصر کے خلاف سخت کاروائی کرے۔

     

    یہ بھی پڑھئے : اب 18 گھنٹے ملے گی بجلی، رات 12 بجے کے بعد نہیں ہوگا Power Cut، دیکھئے نیا شیڈول


    ایس پی وید نے کہا کہ ملی ٹینٹوں کے آقاوں کی یہی کوشش ہے کہ جموں خطے میں مزہبی تناو پیدا کیا جائے تاکہ مقامی نوجوانون کو ملی ٹینٹ صفوں میں شامل کرنے میں آسانی ہو ۔ پولیس کو چاہئے کہ وہ پولیس کمیونٹی پارٹنر شپ گروپس کو دوبارہ بحال کرے اور عام لوگوں کے ساتھ قریبی تال میل بنا کر ملک دشمن عناصر ک پر نکیل کسے۔

    دفاعی ماہرین کا کہنا ہے کہ کشمیر وادی میں  ملی ٹینٹوں پر حفاظتی عملے کے بڑھتے ہوئے دباو کے پیش نظر اب پاکستان جموں خطے میں بین اُلا اقوامی سرحد اور کنٹرول لائن سے ملی ٹینٹون کو اس پار دھکیلنے کی کوششوں میں لگا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ اگرچہ دراندازی کی زیادہ تر کوششیں ناکام بنائی جاچکی ہیں تاہم ماضی قریب میں کشمیر وادی میں غیر ملکی ملی ٹینٹوں کی ہلاکتیں اس بات کی طرف اشارہ کرتی ہیں کہ کچھ غیر ملکی ملی ٹینٹ اس پار داخل ہونے میں کامیاب ہو رہے ہیں ، جس کے سد باب کے لئے مزید چوکسی بڑھانے کی ضرورت ہے ۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: