ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

جموں و کشمیر : کورونا وائرس کو پھیلنے سے روکنے کیلئے سری نگر انتظامیہ نے اب اٹھایا یہ بڑا قدم ، جانیں کیا پڑے گا لوگوں پر اثر

سرکاری ترجمان کے مطابق تمام بڑی مساجد و گردواروں کی انتظامیہ کمیٹیاں ضلع انتظامیہ کے اس فیصلے کے ساتھ متفق ہیں اور ضروری تعاون فراہم کررہی ہیں ۔

  • UNI
  • Last Updated: Mar 26, 2020 05:47 PM IST
  • Share this:
جموں و کشمیر : کورونا وائرس کو پھیلنے سے روکنے کیلئے سری نگر انتظامیہ نے اب اٹھایا یہ بڑا قدم ، جانیں کیا پڑے گا لوگوں پر اثر
نئی دہلی: ملک میں جان لیوا کورونا وائرس کوووڈ -19 سے اب تک 19 افراد کی موت ہو چکی ہے جبکہ متاثرہ مریضوں کی تعداد بڑھ کر 875 ہو گئی ہے۔

جموں و کشمیر میں کورونا وائرس کو مزید پھیلنے سے روکنے کے لئے ضلع انتظامیہ سری نگر نے ضلع میں مساجد و گردواروں سمیت تمام عبادت گاہوں کو بند رکھنے کا حکم نامہ جاری کردیا ہے۔ ضلع مجسٹریٹ سری نگر ڈاکٹر شاہد اقبال چودھری نے اس سلسلے میں اپنے ایک ٹویٹ میں کہا کہ انتظامیہ کمیٹیوں کے بھر پور تعاون سے سری نگر میں تمام عبادت گاہوں کو بند کیا جارہا ہے ، مقدس زیارت گاہیں حضرت بل اور نقش بند صاحب نشان راہ بند ہوگئے ہیں ، گھروں میں ہی بیٹھے رہیں ۔


ایک سرکاری ترجمان کے مطابق تمام بڑی مساجد و گردواروں کی انتظامیہ کمیٹیاں ضلع انتظامیہ کے اس فیصلے کے ساتھ متفق ہیں اور ضروری تعاون فراہم کررہی ہیں ۔ انہوں نے بتایا کہ متعلقہ افسران ضلع کے گوشہ وکنار میں جاکر مساجد، گردواروں، مندروں اور گرجا گھروں کو بند کرنے کے عمل کو یقینی بنانے کے لئے سرگرم عمل ہیں ۔


موصوف ضلع مجسٹریٹ نے عبادت گاہوں کی انتظامیہ کمیٹیوں اور لوگوں سے ضلع انتظامیہ کے اس فیصلے کو عمل میں لانے کے لئے تعاون فراہم کرنے کی اپیل کی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ یہ فیصلہ مشکل ضرور ہے ، لیکن موجودہ حالات کے پیش نظر ناگزیر بھی ہے۔ پائین شہر کے نوہٹہ علاقے میں واقع 625 برس قدیم تاریخی جامع مسجد کا انتظام و انصرام چلانے والی انجمن اوقاف نے کورونا وائرس کے پھیلائو کے خطرات کے پیش نظر فی الحال جامع مسجد میں تمام اجتماعی نمازیں موقوف کرنے کا اعلان کرتے ہوئے لوگوں سے اپیل کر رکھی ہے کہ وہ اپنے گھروں میں قیام کرکے وہیں پر نمازوں کا اہتمام کریں ۔


انجمن اوقاف جس کی سربراہی گھر میں مسلسل نظر بند میرواعظ مولوی عمر فاروق کررہے ہیں ، نے 24 مارچ کو جاری ایک بیان میں لوگوں سے درخواست کی تھی کہ وہ موجودہ غیر معمولی، بحرانی اور سنگین حالات میں احتیاطی اقدامات پر مکمل عمل کریں اور اللہ تعالیٰ کی ذات بابرکات پر بھر پور توکل اور بھروسہ کرکے پوری انسانیت کی حفاظت اور سلامتی کے لئے بارگاہ خداوندی میں گھر پر توبہ و استغفار اور دعائوں کا اہتمام جاری رکھیں ۔ انجمن اوقاف جامع مسجد سے قبل بھی بعض مذہبی جماعتوں نے مساجد ، امام بارگاہوں اور دیگر عبادت گاہوں میں اجتماعات منعقد نہ کرنے کا اعلان کیا تھا۔
First published: Mar 26, 2020 05:46 PM IST