ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

جموں و کشمیر : جمعتہ الوداع کے موقع پر مسجدوں سے اللہ اکبر کی صدائیں تو بلند ہوئیں ، مگر چھایا رہا سناٹا

سرینگر کی تاریخی جامع مسجد آج کورونا وائرس لاک ڈاون کی وجہ سے بند ہے ۔ یہاں کے بلند دروازوں پر تالے لگے ہوئے ہیں اور دور دور تک کوئی نظر نہیں آرہا ۔

  • Share this:
جموں و کشمیر : جمعتہ الوداع کے موقع پر مسجدوں سے اللہ اکبر کی صدائیں تو بلند ہوئیں ، مگر چھایا رہا سناٹا
فائل فوٹو ۔

سرینگر کی چھوٹی و بڑی مساجد کے میناروں سے اللّہ اکبر کی صدائیں بلند تو ہوئیں ، مگر کوئی ان مساجد میں نہیں جا سکا ۔ ہر سال اس دن یہان کی مساجد و درگاہوں میں صبح سے ہی لوگ جمع ہونا شروع کر دیتے تھے ۔ سرینگر میں جمتہ الوداع کے سب سے بڑی تقریب تاریخی جامع مسجد درگاہ حضرت بل میں منقعد ہوا کرتی تھی ، جہاں لاکھوں لوگ نماز ادا کرنے کے لئے نہ صرف سرینگر بلکہ وادی کے مختلف اضلاع  سے یہاں آتے تھے  ۔ سرینگر کی تاریخی جامع مسجد آج کورونا وائرس لاک ڈاون کی وجہ سے بند ہے ۔ یہاں کے بلند دروازوں پر تالے لگے ہوئے ہیں اور دور دور تک کوئی نظر نہیں آرہا ۔ حالانکہ لوگ ازخود بھی احتیاط  سے کام لے رہے ہیں ۔


سرینگر کی جامع مسجد کے صحن میں لوگ صبح سے ہی جمع ہونا شروع ہوجاتے تھے ۔ تاکہ ممبر کے سامنے نماز ادا کرسکیں  اور یہاں پر  اللّہ کی رضا اور خشنودی حاصل کرنے کے لئے عبادات میں محو رہتے تھے ۔ ماضی میں نہ صرف مسجد کے اندر اور صحن میں بلکہ مسجد کے باہر سڑکوں پر بھی نماز ادا کی جاتی تھی  ۔ جامع مسجد کے آس پاس کے علاقوں میں مقیم لوگوں کی اس کے ساتھ گہری وابستگی رہی ہے ، جس کی وجہ سے اس علاقہ کے ہی نہیں بلکہ سرینگر کے پرانے شہر سے تعلق رکھنے والے لوگوں میں بھی اس جگہ سے خاصی لگاورہا ہے ۔


تاہم اس مرتبہ یہاں نماز نہ ادا  نہ ہونے کی وجہ سے ان میں کافی مایوسی ہے ۔ سرینگر کے پرانے شہر میں رہنے والے اکثر لوگوں کے لئے یہ جگہ  نماز کے ساتھ ہی جامع مسجد مارکیٹ میں خریداری کے لئے بھی اہم ہے اور یہاں کے لوگ اس بازار سے خریداری کرنے کو ترجیح دیتے رہےہیں ۔

First published: May 22, 2020 09:43 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading