ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

محبوبہ مفتی بولیں، ای ڈی کی جانب سے جاری کردہ سمن سے خوفزدہ نہیں ہوں اور نہ ہی چھپ رہی ہوں

محبوبہ مفتی نے کہا کہ اینفورسمنٹ ڈایریکٹوریٹ کی طرف سے جاری سمن معاملہ فی الحال زیر عدالت ہے۔ تاہم انہوں نے کہا کہ وہ کسی سے ڈرتی نہیں اور نا ہی خوفزدہ ہیں اور وہ چھپنے کی طاق میں بھی نہیں ہیں۔

  • Share this:
محبوبہ مفتی بولیں، ای ڈی کی جانب سے جاری کردہ سمن سے خوفزدہ نہیں ہوں اور نہ ہی چھپ رہی ہوں
محبوبہ مفتی نے کہا کہ اینفورسمنٹ ڈایریکٹوریٹ کی طرف سے جاری سمن معاملہ فی الحال زیر عدالت ہے۔ تاہم انہوں نے کہا کہ وہ کسی سے ڈرتی نہیں اور نا ہی خوفزدہ ہیں اور وہ چھپنے کی طاق میں بھی نہیں ہیں۔

پی ڈی پی صدر محبوبہ مفتی نے کہا ہے کہ ہند پاک کے درمیان بات چیت کی شروعات ایک خوش آئندہ قدم ہے تاہم اسے واگہ سرحد یا دیگر کاروباری سرگرمیوں اور معاملات تک ہی محدود نہیں رکھنا چاہیے کیونکہ اگر خطے میں امن تلاش کرنا ہے تو اس کا راستہ کشمیر سے ہی ہو کر گزرتا ہے اور مسلہ کشمیر کو حل کرنے کی ضرورت ہے۔ محبوبہ مفتی آج چولگام کولگام میں پارٹی ورکروں کے ایک جلسہ سے خطاب کر رہی تھیِ۔ اس دوران  میڈیا نمائندوں سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اینفورسمنٹ ڈایریکٹوریٹ کی طرف سے جاری سمن معاملہ فی الحال زیر عدالت ہے۔ تاہم انہوں نے کہا کہ وہ کسی سے ڈرتی نہیں اور نا ہی خوفزدہ ہیں اور وہ چھپنے کی طاق میں بھی نہیں ہیں۔ پارٹی جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے  انہوں نے نوجوانوں سے بندوق ترک کرنے کا مشورہ دیا اور کہا نوجوان امن کی راہ تلاش کریں جبکہ خون خرابہ سے کوئی مسئلہ حل نہیں ہوتا۔


انہوں نے کہا کہ اگر تشدد میں کوئی بھی مارا جاتا ہے تو وہ انسانیت کا خاتمہ ہوتا ہے۔ محبوبہ مفتی نے کہا کہ کشمیری قوم کو اپنے حق کے لیے آواز بلند کرنی ہے کیونکہ انہوں نے سیکولر ہندوستان پر اپنے اعتماد کا اظہار کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی نے ان کی امیدوں اور خواہشات کا احترام نہیں کیا۔ مقررین میں پارٹی کے سینر لیڈران ڈاکٹر محبوب بیگ،  صوفی عبدالغفار، شیخ۔ غلام محی الدین،  ڈی ڈی سی ممبران اور دیگر موجود تھے جنہوں نے پی ڈی پی کو مضبوط بنانے کی بات کہی۔



محبوبہ مفتی کا کہنا ہے کہ ہندوستان اور پاکستان کے لئے اچھا موقع ہےکہ وہ رنجشوں کو یکطرف کر کے کشمیر مسئلے کا دیرپا حل تلاش کریں۔ انہوں نے کہا کہ دونوں ممالک کو اپنے وسائل ایک دوسرے پر سبقت لے جانے کے بجائے عوام کی فلاح و بہبودی پر صرف کرنے چاہئے۔  موصوفہ ان باتوں کا اظہار جمعے کو اپنے ایک ٹوئٹ میں کیا۔ انہوں نے یہ ٹویٹ پاکستان کے فوجی سربراہ جنرل قمر جاوید باجوہ کے بیان کہ ہندوستان اور پاکستان کے لئے وقت آیا ہے کہ وہ ماضی کو دفنا کر آگے بڑھیں، کے رد عمل میں کیا۔

محبوبہ مفتی نے اپنے ٹویٹ میں کہا: 'ہندوستان اور پاکستان کے لئے اچھا موقع ہے کہ وہ رنجشوں کو یکطرف کر کے کشمیر کا دیرپا حل تلاش کریں۔ دونوں ممالک کو ایک دوسرے پر سبقت لینے کے لئے بہت بڑا فوجی بجٹ ہے جبکہ ان ہی وسائل کو مشترکہ چیلنجز جیسے غربت، تعلیم اور صحت عامہ پر صرف کیا جا سکتا ہے'۔
Published by: Sana Naeem
First published: Mar 20, 2021 07:30 PM IST