ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

راجناتھ بھٹ نامی کشمیری پنڈت کے جینے کا ہے نرالا انداز ، اپنی زندگی کو دوسروں کیلئے کر رکھا ہے وقف

بھگوتی نگر میں رہائش اختیار کرنے کے بعد ہجرت کا درد بھول کر راجناتھ بھٹ اور ان کی مرحوم اہلیہ سماجی کاموں کے ساتھ جُر گئے اور انہوں نے اپنی زندگی دوسروں کے لئے وقف کردی ۔ چ

  • Share this:
راجناتھ بھٹ نامی کشمیری پنڈت کے جینے کا ہے نرالا انداز ، اپنی زندگی کو دوسروں کیلئے کر رکھا ہے وقف
کشمیری پنڈت راجناتھ بھٹ کے جینے کا ہے نرالا انداز، زندگی کو دوسروں کیلئے کر رکھا ہے وقف

کسی شاعر نے کیا خوب کہا ہے کہ درد دل کے واسطے پیدا کیا انسان کو ، ورنہ اطاعت کے لئے کچھ کم نہ تھے کر و بیان ، اسی شعر کے مصداق راجناتھ بھٹ نامی ایک کشمیری مہاجر پنڈت نے اپنی زندگی کو دوسروں کے لئے وقف کر رکھا ہے ۔ بھگوتی نگر جموں میں رہنے والے راجناتھ بھٹ نامی اس کشمیری پنڈت کا اصل تعلق اننت ناگ سے ہے ۔ راجناتھ بھٹ کے جینے کا انداز کچھ نرالا ہے ۔ وہ اپنے لئے نہیں بلکہ اوروں کے لئے جیتے ہیں ۔ راجناتھ اپنے آپ کو بھول کر انسانیت کو پروان چڑھا رہے ہیں ۔ ان کے اندر ہمدردی اور انسان دوستی کا جذبہ کوٹ کوٹ کر بھرا ہے ۔


بھگوتی نگر میں رہائش اختیار کرنے کے بعد ہجرت کا درد بھول کر راجناتھ بھٹ اور ان کی مرحوم اہلیہ سماجی کاموں کے ساتھ جُر گئے اور انہوں نے اپنی زندگی دوسروں کے لئے وقف کردی ۔ چھ ماہ قبل جب راجناتھ کی اہلیہ چونی کار چل بسیں ، تو پوری بستی میں غم کا ماحول چھا گیا ۔ ساری کی ساری بستی راجناتھ کے غم میں شریک ہوئی اور سب لوگ اس نیک دل خاتون کی آخری رسومات میں شریک ہوئے ۔ غم کے اس دور سے نکل کر راجناتھ نے اپنا مشن جاری رکھا اور وہ سماجی کاموں کے ساتھ پھر ایک بار وابستہ ہوگئے ۔ اپنے سفر کو جاری رکھتے ہوئے راجناتھ بھٹ نے آج اپنے علاقہ کے لوگوں کو ایک عظیم تحفہ دیا ۔


راجناتھ نے اپنے لوگوں کے لئے ای رکشہ اور ایک آٹو وقف کیا ۔ ای رکشہ اور آٹو پر آنے والے تمام تر اخراجات کو راجناتھ خود برداشت کریں گے ۔ یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ اس علاقہ کے لوگوں کو مین روڈ تک پیدل جانا پڑتا تھا اور علاقہ میں میٹاڈار سروس کی عدم موجودگی میں لوگوں کو سخت مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا تھا ۔ بتا دیں کہ اس علاقہ میں ایک معروف معالج ڈاکٹر سُشیل رازدان لوگوں کا علاج و معالجہ کرتے ہیں اور ایسے میں ٹرانسپورٹ کی عدم دستیابی کی وجہ سے لوگوں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا تھا ۔ اب جب کہ راجناتھ بھٹ نے اس علاقہ میں ای رکشہ اور آٹو سروس کی شروعات کی ہے تو اس سروس سے اب وہ سینکڑوں بیمار اور تیماردار بھی مستفید ہوں گے ، جو اس علاقہ میں علاج و معالجہ کے لئے آتے ہیں ۔


اس موقع پر علاقہ کے کارپوریٹر پرمود کپاٹیہ اور دیگر سرکردہ شہری بھی موجود تھے ۔ ان لوگوں نے راجناتھ بھٹ کی اس پہل کی سراہنا کرتے ہوئے کہا کہ راجناتھ بھٹ ہی اصل میں جینے کا مقصد سمجھ گئے ہیں ۔ پرمود کپاٹیہ کے ساتھ ساتھ پرمیلا کماری ۔ اشوک کمار اور دیگر لوگوں کا کہنا تھا کہ راجناتھ بھٹ نے اس علاقہ میں ای رکشہ اور آٹو سروس شروع کرکے انسانیت کی ایک نئی مثال قائم کی ہے اور علاقہ میں ٹرانسپورٹ کی عدم دستیابی میں لوگوں کو ضرورت کے مطابق ایک بڑے تحفے سے نوازا ہے ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Mar 04, 2021 10:05 PM IST