உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    جموں و کشمیر : پیپلز کانفرنس نے سرکار پر سادھا بڑا نشانہ ، کہی یہ بڑی بات

    جموں و کشمیر : پیپلز کانفرنس نے سرکار پر سادھا بڑا نشانہ ، کہی یہ بڑی بات

    جموں و کشمیر : پیپلز کانفرنس نے سرکار پر سادھا بڑا نشانہ ، کہی یہ بڑی بات

    راجیہ سبھا کے سابق ممبر فیاض احمد میر اور سابق ایم اے ایڈوکیٹ بشیر احمد ڈار نے ایک مشترکہ بیان میں سرکار پر الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ پانچ اگست کے فیصلوں کے بعد جموں و کشمیر میں تعمیر و ترقی کے نام پر صرف بیان بازی ہورہی ہے ۔ جبکہ زمینی سطح پر کچھ بھی نہیں ہورہا ہے ۔

    • Share this:
    سری نگر : ہیپلز کانفرنس کے لیڈران نے آج سرکار پر الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ ایل جی انتظامیہ کی وجہ سے لوگوں کے مشکلات میں ہر گزرتے دن کے ساتھ  اضافہ ہورہا ہے ۔ موسم سرما کے شروع ہوتے ہی پورے کشمیر میں بجلی گل ہوگئی ہے، جس کی وجہ سے عام صارفین کے ساتھ ساتھ تجارتی انجمنوں سے وابستہ لوگ پریشان ہیں ۔ پپلیز کانفرنس کے لیڈران کے مطابق ایل جی انتظامیہ میں تعینات افسران سرکار کو غلط معلومات فراہم کررے ہیں ، جس کی وجہ سے سرکار لوگوں کے مسائل حل کرنے میں ناکام ہورہے ہیں ۔ سرکار لوگوں کے مسائل حل کرنے میں مکمل طور پر ناکام ہوئی ہے ۔

    راجیہ سبھا کے سابق ممبر فیاض احمد میر اور سابق ایم اے ایڈوکیٹ بشیر احمد ڈار نے ایک مشترکہ بیان میں سرکار پر الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ پانچ اگست کے فیصلوں کے بعد جموں و کشمیر میں تعمیر و ترقی کے نام پر صرف بیان بازی ہورہی ہے ۔ جبکہ زمینی سطح پر کچھ بھی نہیں ہورہا ہے ۔ انہوں نے سرکار کو  تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ سرکار کشمیر میں تعمیر و ترقی کے نام غلط بیانی کررہی ہے ۔ جبکہ لوگ اسے ایل جی سرکار سے تنگ آچکے ہیں ۔

    انہوں نے کہا کہ اس وقت کشمیر میں تعمیر ترقی کا سلسلہ بری طرح متاثر ہے۔ جبکہ لوگوں کو بنیادی سہولیات کی عدم دستیابی کا مسئلہ اب روز کا معمول بن چکا ہے ۔ فیاض احمد میر کا کہنا تھا کہ اگر سرکار نے فوری طور پر لوگوں کو بنیادی سہولیات کی فراہمی کیلئے اقدامات نہیں اٹھائیں گے ۔ تو پپلیز کانفرنس کے لیڈران ورکرس سمیت سڑکوں پر آئے گی ، جس کی ساری ذمہ داری سرکار پر عائد ہوگی ۔

    انہوں نے کہا کہ اب کشمیر میں سرکار کے نام پر افسر شاہی نظر آرہی ہے۔ جبکہ کام کم اور تشہیر زیادہ ہورہی ہے ، لکین زمینی سطح سرکار پوری طرح ناکام ہوچکی ہے ۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: