உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    جموں وکشمیر پیپلز جسٹس فرنٹ کی جانب سے انسداد منشیات کے موضوع پر سیمینار کا انعقاد

    جموں وکشمیر کے پلوامہ میں انسداد منشیات سے متعلق ایک روزہ سمینار کا انعقاد کیا گیا۔ مختلف ماہرین نے منشیات سے ہورہی تباہی سے آگاہ کیا۔ یہ سیمینار جموں وکشمیر پیپلز جسٹس فرنٹ کی جانب سے منعقد کیا گیا تھا۔

    جموں وکشمیر کے پلوامہ میں انسداد منشیات سے متعلق ایک روزہ سمینار کا انعقاد کیا گیا۔ مختلف ماہرین نے منشیات سے ہورہی تباہی سے آگاہ کیا۔ یہ سیمینار جموں وکشمیر پیپلز جسٹس فرنٹ کی جانب سے منعقد کیا گیا تھا۔

    جموں وکشمیر کے پلوامہ میں انسداد منشیات سے متعلق ایک روزہ سمینار کا انعقاد کیا گیا۔ مختلف ماہرین نے منشیات سے ہورہی تباہی سے آگاہ کیا۔ یہ سیمینار جموں وکشمیر پیپلز جسٹس فرنٹ کی جانب سے منعقد کیا گیا تھا۔

    • Share this:
    کشمیر: جموں وکشمیر پیپلز جسٹس فرنٹ (جے کے پی جے ایف) کی جانب سے ایک روزہ انسداد منشیات سے متعلق آگاہی پروگرام شمالی کشمیر کے ضلع بارہمولہ کے ہائیگام میں قائم گورنمنٹ سیکنڈری اسکول میں منعقد کیا گیا، جس میں طلباء، مقامی لوگوں اور والدین کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔ نوجوانوں میں کافی تیزی سے منشیات کی لعنت پھیل رہی ہے، جس نے ابھرتے ہوئے نوجوانوں کی ایک بڑی تعداد کو اپنی لپیٹ میں لے لیا ہے۔ ایسے حالات کو دیکھتے ہوئے کشمیر میں اس ناسور پر قابو پانا بھی ناگزیر ہو چکا ہے۔

    اس پروگرام کا مقصد نوجوانوں میں بیداری پیدا کرنا تھا۔ تاکہ معاشرے کو اس لعنت سے بچایا جاسکتا ہے۔ پروگرام میں کئی اہم شخصیات بھی شامل تھے۔ ایس ایس پی سو پور، ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر اور ڈرگ ڈی ایڈکشن اسپیشلسٹ ڈاکٹر فیاض احمد اور چیئرمین JKPJF آغا سید عباس رضوی، ماسٹرسید شمس الدین، مولانا عبدالکریم، سید آغا مجاہد،سماجی کارکن محمد ابراہیم، ڈاکٹر کامران اور دیگر موجود تھے۔

    انسداد منشیات سے متعلق آگاہی پروگرام میں طلباء، مقامی لوگوں اور والدین کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔
    انسداد منشیات سے متعلق آگاہی پروگرام میں طلباء، مقامی لوگوں اور والدین کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔


    اس موقع پر مقررین نے منشیات کی لت اور اس کے نتائج پر بات کی۔ ایس ایس پی سوپور نے اس موقع پر اظہار خیال کرتے ہوئےلوگوں اور والدین سے اپیل کی کہ وہ منشیات کے خاتمے کے لئے آگے آئیں، تب معاشرے سے اس لت کو ختم کیا جا سکتا ہے۔ انہوں نے کہا،"جموں وکشمیر پولیس منشیات پر قابو پانے اور اس کے خاتمے کے لئے انتھک محنت کر رہی ہے۔ یہ منشیات معاشرے کے لئےسب زیادہ خطرہ ناک ہے، لیکن پولیس اکیلے کچھ نہیں کر سکتی، بلکہ معاشرے کو آگے آنا ہوگا اور اس معاملے میں تعاون کرنا ہوگا، تبھی اس لعنت پر قابو پانا ممکن ہے۔"

    ایس ایس پی سوپور نے اظہار خیال کرتے ہوئے لوگوں اور والدین سے اپیل کی کہ وہ منشیات کے خاتمے کے لئے آگے آئیں۔
    ایس ایس پی سوپور نے اظہار خیال کرتے ہوئے لوگوں اور والدین سے اپیل کی کہ وہ منشیات کے خاتمے کے لئے آگے آئیں۔


    اے ڈی سی بارہمولہ ظہور احمد رینا نے اس موقع پرخطاب کرتے ہوئے کہا کہ منشیات کی لعنت نے تباہی مچادی ہے۔ ہمارے معاشرے میں اس لعنت پر قابو پانے کی ضرورت ہے ایسا نہ ہو کہ یہ ہمارے معاشرے کو مکمل طور پر متاثر اور تباہ کردے۔ ہمیں اپنے نوجوانوں کی صحیح رہنمائی کرنے کی ضرورت ہے اور والدین کو ان پرنظر رکھنے کے لئے بہت محتاط رہنا چاہئے۔ اس موقع پر سماجی کارکن غلام حسین مجروح نے بھی خطاب کیا اور منشیات کی لت اور اس سے متعلقہ برائیوں کے خلاف جنگ کے لئے آگے آنے پر زور دیا۔ جموں وکشمیر پیپلز جسٹس فرنٹ کے چیئرمین آغا سید عباس رضوی نے اپنے خطاب میں کہا کہ جموں و کشمیر میں منشیات  نئی شکل اختیار کر رہی ہے۔

    انہوں نے کہا کہ ایک طرف منشیات سے ہمارے نوجوانوں کی زندگیاں تباہ ہو رہی ہے تو دوسری طرف یہ نوجوان منشیات کا عادی بنا کر معاشرے کو بھی متاثر بنا رہے ہیں۔ اس ناسور سے یہ نوجوان چوری اور دوسرے جرائم میں ملوث پائے جا رہے ہیں۔ عباس رضوی نے منشیات سے دور رہنے کی تلقین کرتے ہوئے کہا کہ اگرکوئی بھی اس سے متاثر ہو تو اپنی زندگی کو بچانے کے لئے منشیات مخالف مراکز سے رجوع کریں۔ دیگر شخصیات نے بھی اس تباہ کن صورتحال کے خلاف ایک جھٹ ہر کر لڑنے کی اپیل کی۔
    Published by:Nisar Ahmad
    First published: