ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

جموں و کشمیر : امرناتھ یاترا کو رد کئے جانے کا کچھ لوگوں نے کیا خیرمقدم تو کچھ نے بتایا جلد بازی میں لیا گیا فیصلہ

Jammu and Kashmir News : کووڈ 19 وبائی امراض کے تناظر میں جموں و کشمیر حکومت نے فیصلہ کیا ہے کہ شری امرناتھ جی یاترا صرف علامتی ہوگی ۔ تاہم تمام روایتی مذہبی رسومات گزشتہ طرز عمل کے مطابق Holy Cave Shrine میں ادا کی جائیں گی۔

  • Share this:
جموں و کشمیر : امرناتھ یاترا کو رد کئے جانے کا کچھ لوگوں نے کیا خیرمقدم تو کچھ نے بتایا جلد بازی میں لیا گیا فیصلہ
جموں و کشمیر : امرناتھ یاترا کو رد کئے جانے کا کچھ لوگوں نے کیا خیرمقدم تو کچھ نے بتایا جلد بازی میں لیا گیا فیصلہ

جموں : کووڈ 19 وبائی امراض کے تناظر میں جموں و کشمیر حکومت نے فیصلہ کیا ہے کہ شری امرناتھ جی یاترا صرف علامتی ہوگی ۔ تاہم تمام روایتی مذہبی رسومات گزشتہ طرز عمل کے مطابق Holy Cave Shrine میں ادا کی جائیں گی۔ کووڈ 19 وبائی بیماری کے چلتے یہ فیصلہ لیا گیا ۔ اس فیصلے کو لینے سے پہلے شری امرناتھ شرائن بورڈ کے ممبران سے میٹنگ کرنے کے بعد کیا گیا۔  لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا ، جو شری امرناتھ شرائن بورڈ کے چیئرمین بھی ہیں، انہوں نے چیف سکریٹری ڈاکٹر ارون کمار مہتا ، ڈی جی پی دلباغ سنگھ ، پرنسپل سکریٹری ہوم شائین کبرا ، اور لیفٹیننٹ گورنر کے پرنسپل سکریٹری نتیشور کمار جو کہ شرائن بورڈ کے سی ای او بھی ہیں ، ان سے تفصیلی تبادلہ خیال کیا ۔ لیفٹیننٹ گورنر نے ہدایت دی کہ صبح اور شام کی آرتی آن لائن موڈ پر کی جائے ۔ تاکہ عقیدت مند اپنے گھروں سے ہی آرتی میں شرکت کرسکیں ۔ اس میٹنگ میں بتایا گیا کہ شرائن بورڈ نے عقیدت مندوں کو  Holy Cave سے لائیوآرتی دکھانے کا پورا انتظام کیا ہے ۔


امرناتھ جی شرائن بورڈ کے سی ای او نتیشور کمار نے کہا کہ 22 اگست کو جب یاترا کا اختتام ہونا ہے ، تو شرائن بورڈ نے بھگوان شیو چھڑی مبارک  کے لئے  Holy Cave لے جانے کا انتظام کیا ہے۔ شری امرناتھ جی شرائن بورڈ مرکزی ریاست اور ملک میں کووڈ صورتحال کا جائزہ لے رہے ہیں ۔ ہماری توجہ وبائی مرض پر مرکوز ہے اور صحت کے بنیادی ڈھانچے کو مضبوط بنانے پر ہے۔  سی ای او نتیشور کمار نے بتایا کہ آرتی کا صبح کا ٹیلی کاسٹ صبح کے 6 بجے ہوگا اور شام کی آرتی کا  شام 5 بجے ہوگا۔ یہ دونوں ٹیلی کاسٹ 30 منٹ کے لئے ہوں گے۔ عقیدت مند اس آرتی کا لائیو اسٹریم شری امر ناتھ جی شرائن بورڈ کی  آفیشیل ویب سائٹ پر ہوگا۔


ادھر جہاں کچھ لوگ انتظامیہ کے اس فیصلہ سے خوش نظر آرہے ہیں وہیں دوسری طرف کئی لوگ اس فیصلے سے مطمئن نہیں ہیں ۔ اندرجیت کھجوریا نے کہا کہ شرائن بورڈ نے یہ فیصلہ جلد بازی میں لیا ہے ۔ کیونکہ کووڈ کے حالات اب سدھرتے نظر آرہے ہیں اور تمام مندروں کو بھی کھولا گیا ہے ، اس صورت میں امرناتھ یاترا ہونی چاہئے تھی ۔ لگاتار دو سالوں سے اس یاترا کو معطل کیا گیا ہے جوکہ ایک اچھا اشارہ نہیں ہے ۔ کاروبار کرنے والوں کو اس فیصلے سے کافی نقصان اٹھانا پڑے گا۔


ہوٹیلیئر ایسوسی ایشن کے صدر روی مہاجن نے کہا سرکار نے یہ جو فیصلہ لیا ہے وہ جلد بازی میں لیا ہے کیونکہ شروعات سے ہی لگ رہا تھا کہ یہ یاترا اس بار بھی معطل کی جائے گی ۔ انہوں نے مزید کہا کہ اس فیصلے سے کاروباری طبقہ کو بہت نقصان پہنچے گا ، کیونکہ پہلے ہی کووڈ کے چلتے کاروباری طبقہ کو نقصان اٹھانا پڑا ہے۔ ٹیکسی یونین کے پردھان اندرجیت کھجوریا نے کہا کہ کووڈ معاملات میں لگاتار کمی آرہی تھی ، تو ایسے میں یاترا کرنی چاہئے تھی۔ اس فیصلے سے ٹیکسی آپریٹرز کو کافی نقصان اٹھانا پڑے گا۔

وشو ہندو پریشد کے ورکنگ پریسیڈینٹ راجیش گپتا نے کہا کہ ہم اس فیصلے کا خیرمقدم کرتے ہیں کیونکہ حالات ایسے نہیں ہیں کہ یاترا کو کیا جائے ۔ کیونکہ اس یاترا میں بہت سارے لوگ شامل ہوتے ہیں ، جس سے کووڈ کے پھیلنے کا خطرہ بڑھ سکتا ہے ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Jun 21, 2021 09:33 PM IST