உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    سرینگر میں سیلزمین کے قتل کا معاملہ حل ، پولیس نے کیا قتل میں ملوث تین دہشت گردوں کو گرفتار 

    سرینگر میں سیلزمین کے قتل کا معاملہ حل ، پولیس نے کیا قتل میں ملوث تین دہشت گردوں کو گرفتار 

    سرینگر میں سیلزمین کے قتل کا معاملہ حل ، پولیس نے کیا قتل میں ملوث تین دہشت گردوں کو گرفتار 

    Jammu and Kashmir News : کشمیر میں پولیس نے بہوری کدل سرینگر میں 9 نومبر کو ایک سیلزمین ابراہیم کے قتل میں ملوث تین افراد کو گرفتار کرکے قتل کا یہ معاملہ حل کرنے کا دعوٰی کیا ہے۔

    • Share this:
    سرینگر : کشمیر میں پولیس نے بہوری کدل سرینگر میں 9 نومبر کو ایک سیلزمین ابراہیم کے قتل میں ملوث تین افراد کو گرفتار کرکے قتل کا یہ معاملہ حل کرنے کا دعوٰی کیا ہے۔ ڈاون ٹاون سرینگر میں 9 نومبر 2021 کو ابراہیم احمد نامی ایک سیلز مین کو دُکان کے باہر گولی مار کر ہلاک کیا گیا تھا ۔ پولیس پریس ریلیز کے مطابق اس قتل کے بعد پولیس نے مہاراج گنج پولیس تھانے میں کیس درج کرکے معاملہ کی تحقیقات کے لئے ایک خصوصی ٹیم قائم کی ۔

    تحقیقات کے دوران پولیس نے اس معاملہ میں تین افراد کو گرفتار کیا اور پولیس کے مطابق پوچھ تاچھ کے دوران ملزمین نے اپنا جُرم قبول کیا۔ ملزمین کی پہچان لیل ہار پلوامہ کے اعجاز احمد،  نصیر احمد اور شوکت احمد کے طور کی گئی ہے۔ پولیس کے مطابق گرفتار ملزمین سے ایک پستول اور گولیوں کے علاوہ ایک گرنیڈ بھی برآمد کیا گیا ہے۔

    معاملہ کی تفصیلات کے مطابق ملزمین کا تعلق دہشت گرد تنظیم ٹی آر ایف سے ہے اور انھوں نے یہ قتل سرحد پار ایک دہشت گرد ہینڈلر کے کہنے پر کیا ہے۔ پولیس کے مطابق یہ تینوں پچھلے چار مہینے سے سرحد پار مقیم دہشت ہینڈلر کے رابطے میں تھے۔ پولیس نے اس جرم کے وقت جائے واردات سے بھاگنے کے لئے استعمال کی گئی ایک کار بھی قبضہ میں لی ہے۔ معاملہ کی مزید تحقیقات جاری ہے۔

    واضح رہے کہ مقتول ابراہیم احمد عیدگاہ میں رہتا تھا اور سندیپ ناوا نام کے ایک کشمیری پنڈت کی دُکان پر کام کرتا تھا ۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: