ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

پلوامہ طرز پر ایک اور حملہ کرنے کی سازش ناکام، جموں کشمیر پولیس کا دہشت گردگروہوں کے منصوبے ناکام بنانے کا دعویٰ

دہشت گرد گروپوں نےکشمیر میں پلوامہ جیسا ایک اور کاربم حملہ کروانے کی سازش رچی تھی اور اس کے لئےکار بھی خریدی گئی تھی۔ یہ کہنا ہے انسپکٹر جنرل پولیس کشمیر وجے کمار کا۔ سری نگر میں اس کی تفصیلات دیتے ہوئے آئی جی پی نے کہا کہ دہشت گرد تنظیم جیش محمد نے یہ منصوبہ بنایا تھا، جسے اونتی پور پولیس نے ناکام بنایا۔

  • Share this:
پلوامہ طرز پر ایک اور حملہ کرنے کی سازش ناکام، جموں کشمیر پولیس کا دہشت گردگروہوں کے منصوبے ناکام بنانے کا دعویٰ
جموں کشمیر پولیس کا دہشت گرد گروہوں کے منصوبے ناکام بنانے کا دعوٰی

پلوامہ: دہشت گرد گروپوں نےکشمیر میں پلوامہ جیسا ایک اور کاربم حملہ کروانے کی سازش رچی تھی اور اس کے لئےکار بھی خریدی گئی تھی۔ یہ کہنا ہے انسپکٹر جنرل پولیس کشمیر وجے کمار کا۔ سری نگر میں اس کی تفصیلات دیتے ہوئے آئی جی پی نے کہا کہ دہشت گرد تنظیم جیش محمد نے یہ منصوبہ بنایا تھا، جسے اونتی پور پولیس نے ناکام بنایا۔ اس حملہ کو انجام دینے کے لئے بی اے فرسٹ ائر میں زیر تعلیم پانپور کشمیر کے ایک نوجوان ساحل نذیر کو سوشل میڈیا کے ذریعے رابطہ کرکے تیار کیا اور اُس نے حملہ میں استعمال ہونے والی کار بھی خریدی تھی۔


اونتی پور پولیس نے بروقت کاروائی کرکے ملزم اور اُس کے تین ساتھیوں کو گرفتار کرلیا اور ایک بڑا حملہ ناکام بنادیا۔ آئی جی پولیس کے مطابق ساحل نذیر نے اپنا جُرم قبول کرلیا ہے۔ پولیس کے مطابق بارودی مواد شمالی کشمیر سے ان کا ایک اور ساتھی لانے والا تھا، جس کی تلاش جاری ہے۔ ایسے ہی ایک اورگروہ کا پولیس نے پردہ فاش کیا ہے، جو پولیس کے مطابق پانپور میونسپل کارپوریشن کے دفتر پر فدائین حملہ کرنے کا منصونہ بنا چکے تھے۔


آئی جی پی کشمیر وجے کمار کے مطابق لشکر طیبہ سے تعلق رکھنے والےدہشت گرد عمر خالد کے اشارے پر ایک فدائین حملہ کرنے کی سازش رچی گئی تھی، جسے پولیس نے ناکام بنادیا۔ اس معاملہ میں تین او جی ڈبلیو گرفتار کئے گئے ہیں اور 25  کلو بارودی مواد بر آمد کیا۔ آئی جی پولیس نے بتایا کہ اس معاملہ میں مصعب احمد گوجری نامی کلیدی ملزم اور اُس کے دو ساتھیوں کو اونتی پوری پولیس نے پکڑ لیا اور اس طرح اس سازش کو بھی ناکام بنا دیا۔ آئی جی پولیس نے اونتی پورہ پولیس کے کام کو سراہا اورکہا کہ پولیس اس کوشش میں لگی ہے۔

Published by: Mirzaghani Baig
First published: Mar 10, 2021 02:48 PM IST