ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

منشیات کے خلاف جموں وکشمیر پولیس کی کارروائی جاری، دو اسمگلروں سمیت بھاری مقدار میں چرس برآمد

ماہرین کا ماننا ہے کہ وادی کشمیر میں نوجوان نسل کا رجحان منیشات کی جانب تیزی سے بڑھ جانا خطرناک ثابت ہوسکتا ہے۔

  • Share this:
منشیات کے خلاف جموں وکشمیر پولیس کی کارروائی جاری، دو  اسمگلروں سمیت بھاری مقدار میں چرس برآمد
منشیات کے خلاف جموں وکشمیر پولیس کی کارروائی

منشیات کے خلاف جموں وکشمیر پولیس کی مہم جاری ہے وادی میں آئے روز منشیات کی جانب نوجوانوں کا رجحان کافی تیزی سے بڑھ رہا ہے۔ آج عید کے مقدس روز بھی پولیس نے اپنے فرائض انجام دیئے۔شمالی کشمیر کے ضلع بارہمولہ کے پٹن پولیس نے اوسن کھوئی میں ایک ناکے کے دوران کالاروس کپواڑہ سے تعلق رکھنے والے دو چرس اسمگلروں کو آدھا کلو چرس سمیت دبوچ لیا۔ واضح رہے کہ پٹن پولیس نے اوسن کھوئی میں روزانہ بنیادوں پرلگے ہوئے ناکے دوران یہ کاروائی انجام دی۔پولیس کے مطابق ایک سومو گاڑی پلہالن پٹن سے اوسن گوشہ بگ کی جانب آرہی تھی ناکہ پر پہنچتے ہی پولیس نے اسے روکنے کوکہا کہ گاڑی میں سوار افراد کو جب پولیس نے نیچے اترنے کو کہا اور گاڑی کی تلاشی لینے کی بات کہی، تو سواریوں نے انکار کرکے پولیس کے ساتھ تلخ کلامی کی ۔اور موقع سے فرار ہونے کی کوشش کی۔


تاہم پولیس نے گاڑی کا گھیراؤ کرکے گاڑی کوروک لیا اور اس کی تلاشی لی جس میں گاڑی سے آدھا کلو چرس برآمد ہوا۔پولیس نے موقع پر ہی ملوث دو افراد کو دبوچ لیا اور انہیں پٹن پولیس اسٹیشن میں سلاخوں کے پیچھے دھکیل دیا پولیس نے سومو گاڑی کو بھی ضبط کیا۔ملوث چرس اسمگلروں کے خلاف کیس درج کیا گیا اور مزید تحقیقات شروع کر دی گئی۔گرفتار افراد کی شناخت کالا روس کپوارہ سے تعلق رکھنے والے رفیق احمد لون اور گفتار احمد لون کے طور پر ہوئی۔ یہ بات قابل ذکر ہے کہ اپریل کے تیس دنوں میں بارہمولہ پولیس نے بتیس منشیات میں ملوث افراداور اسمگلروں کو گرفتار کیا۔جو منشیات اسمگلروں کے خلاف بڑی کارروائی اور کامیابی مانی جاتی ہے۔


بارہمولہ پولیس کاکہناہےکہ منشیات کے خلاف تب تک کاروائی جاری رہے گی جب تک نہ وادی سے اس خطرناک لت کو جڑ سے ختم کیاجائے۔ماہرین کے مطابق وادی کشمیر میں نوجوان نسل کا رجحان منیشات کی جانب دیکھنے کو مل رہا ہے۔جو وادی کشمیر کے خطرناک ثابت ہوسکتا ہے۔ماہر تعلیم پروفیسر عبد الجبار نے نیوز18اردو کو بتایا کہ نوجوانوں کے منشیات کی طرف رجحان سے آس پاس کے رہن سہن میں جینا دشوار ہوگیا۔انہوں نے زور دیا کہ اس لعنت کے روک تھام کےلئے ہر ایک کو آگے آنا چاہے۔سرکار کو بھی چاہے کہ اس کے خلاف سخت اقدامات اٹھائیں۔

Published by: Sana Naeem
First published: May 14, 2021 10:16 AM IST