உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    جموں و کشمیر : 'لاش چھیننے' کی افواہوں کے درمیان پولیس نے جاری کیا سید علی شاہ گیلانی کی تدفین کا ویڈیو

    جموں و کشمیر: 'لاش چھیننے' کی افواہوں کے درمیان پولیس نے جاری کیا گیلانی کی تدفین کا ویڈیو ۔ (PTI)

    جموں و کشمیر: 'لاش چھیننے' کی افواہوں کے درمیان پولیس نے جاری کیا گیلانی کی تدفین کا ویڈیو ۔ (PTI)

    Syed Ali Shah Geelani Funeral: ویڈیو میں نظر آرہا ہے کہ ایک گروپ جسد خاکی کو غسل دے رہا ہے اور کفن پہنا رہا ہے ۔ اس کے بعد نماز جنازہ ادا کی گئی اور حیدر پورہ قبرستان میں تدفین کی گئی ۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Share this:
      سری نگر :  جموں و کشمیر میں کشیدگی کے درمیان پولیس نے علاحدگی پسند لیڈر سید علی شاہ گیلانی کی تدفین کا ویڈیو جاری کیا ہے۔ گیلانی کے بیٹوں نے الزام لگایا تھا کہ ان کے والد کی لاش پولیس نے زبردستی چھین لی اور خاندان کے ساتھ غلط طریقہ سے برتاو کیا گیا ۔ ساتھ ہی یہ بھی الزامات لگائے گئے تھے کہ گیلانی کے کنبہ کو 92 سالہ لیڈر کی تدفین کرنے نہیں دی گئی ۔ گیلانی نے جمعرات کو آخری سانس لی تھی ۔

      ویڈیو میں نظر آرہا ہے کہ ایک گروپ جسد خاکی کو غسل دے رہا ہے اور کفن پہنا رہا ہے ۔ اس کے بعد نماز جنازہ ادا کی گئی اور حیدر پورہ قبرستان میں تدفین کی گئی ۔  یہ قبرستان گیلانی کے گھر سے تھوڑی دوری پر واقع ہے ۔ اس سے قبل ایسی افواہیں گردش کررہی تھیں کہ پولیس نے علاحدگی پسند لیڈر کی تدفین غسل اور کفن کے بغیر کردی تھی ۔ اس سے وابستہ کچھ ویڈیوز بھی جاری کئے گئے تھے ۔

      تاہم پولیس نے اپنی کارروائی پر کہا کہ پہلے اہل خانہ نے رات میں ہی لاش کو دفن کرنے پر رضامندی ظاہر کردی تھی ، لیکن بعد میں انہوں نے اپنا ارادہ بدل لیا ، جس کی وجہ سے پولیس کو ایسا کرنے پر مجبور ہونا پڑا ۔ پیر کو کشمیر زون پولیس نے ٹویٹ کیا : "حالانکہ ، تین گھنٹے کے بعد ، شاید پاکستان اور شرپسندوں کے دباؤ میں ، انہوں نے الگ طریقہ سے برتاؤ کرنا شروع کردیا اور جسد خاکی کو پاکستان کے جھنڈے میں لپیٹنے ، پاکستان کے حق میں نعرے لگانے اور پڑوسیوں کو باہر نکلنے کیلئے اکسانے سمیت ملک مخالف سرگرمیاں کرنے لگے ۔





      پولیس نے ٹویٹ کیا تھا کہ منانے کے بعد رشتہ دار جسد خاکی کو لے کر قبرستان پہنچے اور معزز انتظامیہ کمیٹی اور مقامی امام کے ساتھ تدفین کی گئی ۔ ان کے دونوں بیٹوں کا قبرستان آنے سے منع کرنا ان کے اپنے مرحوم والد کیلئے محبت اور احترام کی بجائے پاکستانی ایجنڈے کے ساتھ وفاداری کا اشارہ تھا ۔ اتوار کو پولیس نے لاش کو پاکستانی جھنڈے میں لپیٹنے کو لے کر گیلانی کے کچھ رشتہ داروں کے خلاف یو اے پی اے کے تحت مقدمہ درج کیا تھا ۔

      جموں و کشمیر میں سیاسی بیان بازی

      کچھ لوگوں نے اپنی بات بتاتے ہوئے چار دنوں کے بعد ویڈیو جاری کرنے پر سوالات اٹھائے ۔ وہیں کچھ لوگوں نے تدفین کا ویڈیو بنانے پر بھی تنقید کی ہے ۔ اس سے قبل جموں و کشمیر کی سابق وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی اور حریت لیڈر میر واعظ عمر فاروق نے گیلانی کی لاش کے ساتھ 'غلط سلوک' کا الزام لگایا تھا ۔

      خیال رہے کہ گزشتہ چار دنوں سے کشمیر میں کشیدگی کا دور چل رہا ہے ۔ تاہم اب کشمیر کے بیشتر علاقوں سے پابندیاں ہٹا دی گئی ہیں ۔ ساتھ ہی پولیس نے کہا ہے کہ سرینگر میں موبائل انٹرنیٹ خدمات کل تک بند رہیں گی ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: