உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    jammu and kashmir: غلام نبی آزاد ان ناراض ہونے کی 1نہیں 5 وجوہات ہیں، جانئے اصل کہانی

    آزاد نے جموں و کشمیر کے لیے پارٹی کی طرف سے اعلان کردہ مہم کمیٹی اور سیاسی کمیٹی کے صدر کے عہدے کو چند گھنٹوں کے اندر ہی ٹھکرا دیا تھا۔ پہلی وجہ یہ ہے کہ اپنے تجربے اور قد کاٹھ کو دیکھتے ہوئے آزاد خود کو وزارت اعلیٰ کا امیدوار قرار دینا چاہتے ہیں۔

    • Share this:
      جموں و کشمیر کے سابق وزیر اعلیٰ غلام نبی آزاد Ghulam Nabi Azad,   صحت کی وجہ سے عہدہ چھوڑنے کی وجوہات بتا رہے ہوں لیکن اصل کہانی کچھ اور ہے۔ ان کے قریبی دوستوں سے موصول ہونے والی معلومات کے مطابق انکار کے پیچھے کئی وجوہات ہیں۔ آزاد نے جموں و کشمیر کے لیے پارٹی کی طرف سے اعلان کردہ مہم کمیٹی اور سیاسی کمیٹی کے صدر کے عہدے کو چند گھنٹوں کے اندر ہی ٹھکرا دیا تھا۔ پہلی وجہ یہ ہے کہ اپنے تجربے اور قد کاٹھ کو دیکھتے ہوئے آزاد خود کو وزارت اعلیٰ کا امیدوار قرار دینا چاہتے ہیں۔ جب بھی الیکشن ہو، آزاد خود کو ریاست کے سب سے قد آور لیڈر کے طور پر ڈرائیونگ سیٹ پر رکھنا چاہتے ہیں۔ حامیوں کا موقف ہے کہ یہ ان کا آخری الیکشن ہو سکتا ہے، اس لیے انہیں مکمل عزت دی جانی چاہیے۔

      دوسری وجہ طارق حمید قرہ جیسے متنازعہ لیڈر کے ماتحت کمیٹی میں رکھے جانے نے بھی آزاد کو ناگوار گزرا ہے۔ تیسرا، آزاد کا ماننا ہے کہ جب وہ پہلے ہی کانگریس ورکنگ کمیٹی کے رکن ہیں، جو سونیا گاندھی کو مشورہ دینے والی سیاسی امور کی کمیٹی کا ایک اہم حصہ ہے، تو پھر ایسی کمیٹی کو ریاست میں رکھنے کا کوئی جواز نہیں ہے۔ اس وجہ سے ان کا قد چھوٹا ہوتا ہے۔ چوتھا، یہ کہ کمیٹی کے باقی ارکان کی نامزدگی کے دوران غلام نبی آزاد سے صلاح نہیں لی گئی۔ اس کی وجہ سے ریاستی سطح کے کئی لیڈر بھی ناراض ہیں۔

      شوپیاں میں گرینیڈ حملہ، جوابی کارروائی کے بعد بھاگے دہشت گرد، ہتھیار و گولہ بارود برآمد


      جموں و کشمیر: سدرا میں ایک ہی کنبے کے 6افراد مردہ پائے گئے، موقع پر پہنچی پولیس


      پانچویں وجہ، آزاد کو انتخابی مہم کمیٹی کا صدر بنانے کے اعلان سے پہلے تنظیم کے جنرل سکریٹری وینوگوپال نے سینئر لیڈروں کو مطلع کرنے کی روایت پر دھیان نہیں دیا، ورنہ یہ چیزیں وہیں ہوتیں اور معاملہ باہر نہ آتا۔ پارٹی ذرائع کے مطابق آزاد سے بات کرنے کے بعد معاملہ حل کیا جائے گا، جہاں تک وزیراعلیٰ کا چہرہ دینے کا تعلق ہے تو یہ انتخابی عمل شروع ہونے کے بعد بھی ہوسکتا ہے، آزاد سب سے سینئر ترین لیڈر ہونے کی وجہ سے اس عہدے کے لیے پوری طرح اہل ہیں۔ ہاں پارٹی بھی ایسا مانتی ہے۔ اور فیصلہ وقت پر ہو گا۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: