ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

جموں و کشمیر میں سیکورٹی فورسیز کو ملی بڑی کامیابی ، پلوامہ حملے کا ماسٹر مائنڈ پاکستانی دہشت گرد یاسر ڈھیر

کہا جاتا ہے کہ یہ خطرناک دہشت گرد آئی ای ڈی دھماکوں کا ایکسپرٹ تھا ۔ انکاونٹر میں جو دو دیگر دہشت گردوں کو مار گرایا گیا ہے ، ان کی شناخت بھی ہوگئی ہے ۔

  • Share this:
جموں و کشمیر میں سیکورٹی فورسیز کو ملی بڑی کامیابی ، پلوامہ حملے کا ماسٹر مائنڈ پاکستانی دہشت گرد یاسر ڈھیر
علامتی تصویر

جموں و کشمیر میں سیکورٹی فورسیز کو بڑی کامیابی ہاتھ لگی ہے ۔ سیکورٹی فورسیز نے انکاونٹر میں پلوامہ حملے کے ماسٹر مائنڈ اور پاکستانی دہشت گرد قاری یاسین کو ڈھیر کردیا ہے ۔ یاسر کشمیر میں دہشت گر تنظیم جیش محمد کا سرغنہ تھا ۔ اس انکاونٹر میں سیکورٹی فورسیز نے اس کے دو ساتھیوں کو بھی مار گرایا ہے ۔ یہ مڈبھیر ہفتہ کو اونتی پورہ میں ہوئی ۔ بتادیں کہ گزشتہ سال پلوامہ حملے میں سی آر پی ایف کے 40 جوان شہید ہوگئے تھے ۔


کشمیر کے آئی جی وجے کمار کے مطابق یاسر پلوامہ حملے کا ماسٹر مائنڈ تھا ۔ کہا جاتا ہے کہ یہ خطرناک دہشت گرد آئی ای ڈی دھماکوں کا ایکسپرٹ تھا ۔ انکاونٹر میں جو دو دیگر دہشت گردوں کو مار گرایا گیا ہے ، ان کی شناخت بھی ہوگئی ہے ۔ ایک کی شناخت موسی عرف ابو عثمان کے طور پر ہوئی ہے جبکہ دوسرا ترال کا رہنے والا برہان الدین شیخ ہے ۔ سیکورٹی ایجسنیوں کو جانکاری ملی تھی یہ سبھی دہشت گرد 26 جنوری کے دن بڑے حملے کی سازش رچ رہے ہیں ۔


سری نگر میں واقع چنار کور کے جنرل آفیسر کمانڈنگ لیفٹیننٹ جنرل کے جے ایس ڈھلو اور انسپکٹر جنرل آف پولیس وجے کمار نے بتایا کہ ترال انکاونٹر میں ہم نے تین دہشت گردوں کو مار گرایا ہے ، جس میں جیش محمد کے کشمیر علاقہ کا سرغنہ یاسر بھی شامل ہے ۔ وہ گزشتہ سال فروری دھماکہ اورلیتھ پورا دھماکہ میں شامل تھا ۔ وہ دہشت گردوں کی بھرتی کے ساتھ ساتھ انہیں پاکستان سے لانے اورلے جانے میں بھی شامل تھا ۔


انکاونٹر کے دوران گولہ باری یں فوج کے تین جوان بھی زخمی ہوئے ہیں اور انہیں اسپتال میں بھرتی کرایا گیا ہے ۔ وجے کمار نے کہا کہ پولیس کو سری نگر یا اس کے آس پاس آئی ای ڈی حملے کے بارے میں مسلسل معلومات مل رہی تھیں ۔ انہوں نے کہا کہ ہم برہان اور یاسر کے نام جانتے تھے ، ان کا ایک دوست اور یاسر کا دوسرا کمانڈر موسی بھی اس کے ساتھ تھا ۔
First published: Jan 26, 2020 09:19 AM IST