உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    کشمیر میں غیرملکی دہشت گردوں کو دھکیلنا پاکستان اور ISI کا بڑا گیم پلان، جانئے کیا کہتے ہیں ماہرین

    کشمیر میں غیرملکی دہشت گردوں کو دھکیلنا پاکستان اور ISI کا بڑا گیم پلان، جانئے کیا کہتے ہیں ماہرین

    کشمیر میں غیرملکی دہشت گردوں کو دھکیلنا پاکستان اور ISI کا بڑا گیم پلان، جانئے کیا کہتے ہیں ماہرین

    Jammu and Kashmir News : حفاظتی عملے کے دہشت گردوں کے خلاف کامیاب آپریشنز کے بارے میں سلامتی امور سے متعلق ماہرین کہتے ہیں کہ یہ جموں و کشمیر بالخصوص وادی میں خُفیہ ایجنسیوں کی بروقت اطلاعات اور پولیس و دیگر حفاظتی ایجنسیوں کی چوکسی کا ہی نتیجہ ہے۔

    • Share this:
    J&K News : جموں و کشمیر (Jammu and kashmir) میں دہشت گردوں کے خلاف حفاظتی عملے کی موثر کارروائی جاری ہے اور حالیہ دنوں میں کئی دہشت گرد کمانڈروں سمیت کافی تعداد میں ملی ٹینٹس (Militants) حفاظتی عملے کے ساتھ جھڑپوں میں ہلاک کر دئے گئے ہیں ۔ گزشتہ چھ روز کے دوران حفاظتی عملے نے دو دراندازوں سمیت چودہ دہشت گردوں (14 Terrorists killed in last 6 dasy) کو ہلاک کر دیا۔ بارہ دہشت گرد وادی میں مختلف جھڑپوں کے دوران ہلاک کئے گئے جبکہ کپواڑہ ضلع (Kupwara) کے مُجھ گُنڈ علاقے میں ایک اور جموں کے ارنیا سیکٹر (Arnia Sector) میں ایک پاکستانی درانداز کو ہلاک کر دیا گیا ۔ گزشتہ چھ روز کے دوران جنوبی کشمیر کے پلوامہ (Pulwama) ، کولگام  (Kulgam) اور اننت ناگ (Anantnag) اضلاع میں دس جبکہ سرینگر (Srinagar) ضلع میں دو دہشت گردوں کو ڈھیر کردیا گیا۔ ہلاک کئے گئے ان دہشت گردوں میں دو غیر ملکی دہشت گرد بھی شامل ہیں ۔

    حفاظتی عملے کے دہشت گردوں کے خلاف کامیاب آپریشنز کے بارے میں سلامتی امور سے متعلق ماہرین کہتے ہیں کہ یہ جموں و کشمیر بالخصوص وادی میں خُفیہ ایجنسیوں کی بروقت اطلاعات اور پولیس و دیگر حفاظتی ایجنسیوں کی چوکسی کا ہی نتیجہ ہے۔ جموں و کشمیر کے سابق ڈائریکٹر جنرل پولیس ڈاکٹر ایس پی وید کا کہنا ہے کہ  ماضی میں بھی یہ دیکھا گیا ہے کہ موسم سرما کے دوران میدانی علاقوں میں ملی ٹینٹوں کی موجودگی بڑھ جاتی ہے ۔ نیوز18 اردو کے ساتھ بات کرتے ہوئے ایس پی وید نے کہا کہ چونکہ موسم سرما کے دوران پہاڑی علاقوں میں برفباری ہوجاتی ہے جس کی وجہ سے دہشت گرد میدانی علاقوں کی طرف آنے پر مجبور ہوجاتے ہیں۔ قصبوں اور دیہات میں ان کی موجودگی سے متعلق اطلاعات عام لوگوں اور خُفیہ ایجنسیوں کی مدد سے  حفاظتی عملے تک بروقت پہنچ جاتی ہیں اور حفاظتی عملے کی کارروائی میں دہشت گرد مارے جاتے ہیں ۔

    انہوں نے کہا کہ وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ جموں و کشمیر پولیس کی خُفیہ ایجنسی کے طریقہ کار میں کافی بہتری واقع ہوئی ہے اور حفاظتی عملے بھی پہلے سے زیادہ مواثر کارروائیاں عمل میں لارہے ہیں جس کی وجہ سے  کافی تعداد میں دہشت گرد مارے جارہے ہیں ۔ غیر ملکی دہشت گردوں کی وادی میں موجودگی کا ذکر کرتے ہوئے ایس پی وید نے کہا کہ ایسا لگتا ہے کہ ماضی قریب میں کچھ دہشت گرد جموں و کشمیر میں داخل ہونے میں کامیاب ہوچکے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ حالانکہ فوج اور حفاظتی عملے کی بروقت کارروائی سے سرحد اور کنٹرول لائن پر دراندازی کی زیادہ کوششیں ناکام بنادی جاتی ہیں تاہم کچھ درانداز کنٹرول لائین اور سرحد کے اسپار داخل ہونے میں کامیاب ہوجاتے ہیں ۔

    ایس پی وید نے کہا کہ پاکستان کی یہ کوشش ہے کہ زیادہ سے زیادہ غیر ملکی دہشت گردوں کو سرحد کے اس پار داخل کرایا جاسکے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان مقامی دہشت گردوں پر بھروسہ نہیں کرتا لہذا وہ غیر ملکی دہشت گردوں کو جموں و کشمیر میں داخل کرانا چاہتا ہے تاکہ وہ مقامی دہشت گردوں پر کنٹرول کرسکیں اور وہ پاکستان کے اپنے آقاوں کے مطابق ان سے کارروائیاں انجام دلا سکیں۔ انہوں نے کہا کہ یہ دہشت گرد مقامی ملی ٹینٹوں سے کاروائیاں انجام دلاتے ہیں تاکہ پاکستان عالمی سطح پر یہ باور کرانے کی کوشش کرے کہ وہ جموں و کشمیر میں دہشت گردی کی پُشت پناہی میں ملوث نہیں ہے۔ تاہم عالمی برادری اس بات سے واقف ہے کہ پاکستان اپنی خُفیہ ایجنسی آئی ایس آئی اور فوج کی مدد سے جموں و کشمیر میں دہشت گردی کو ہوا دے رہا ہے۔

    واضح رہے کہ حفاظتی عملے نے سال 2021 کے دوران کشمیر وادی میں مختلف جھڑپوں کے دوران 19 غیر ملکی دہشت گردوں کو ہلاک کیا۔

     
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: