உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    J&K News : جموں میں دو سال کے بعد دوبارہ جوش و خروش کے ساتھ کھلے اسکول

    J&K News : جموں میں دو سال کے بعد دوبارہ جوش و خروش کے ساتھ کھلے اسکول

    J&K News : جموں میں دو سال کے بعد دوبارہ جوش و خروش کے ساتھ کھلے اسکول

    Jammu and Kashmir News : جموں میں نویں جماعت سے اوپر کے اسکول کھل گئے ہیں ، لیکن طلبہ کی تعداد تھوڑی کم نظر آرہی ہے ۔ اس کی وجہ یہ ہے کہ صرف مکمل ویکسین شدہ طالب علموں کو ہی اسکول آنے کی اجازت ہے۔ دوسری طرف تمام تعلیمی اداروں کی انتظامیہ اس بات کو یقینی بنانے کے لیے تمام ضروری اقدامات کر رہی ہے کہ طلبہ کووڈ سے متعلق تمام پیروی کریں۔

    • Share this:
    Jammu and Kashmir News : جموں و کشمیر میں تیسری لہر کی رفتار کم ہو رہی ہے، اس لئے حکومت نے حال ہی میں پورے یو ٹی میں یونیورسٹیاں، کالج اور اسکول کھولنے کا اعلان کیا تھا ۔  جموں میں بھی نویں جماعت سے اوپر کے اسکول کھل گئے ہیں ، لیکن طلبہ کی تعداد تھوڑی کم نظر آرہی ہے ۔ اس کی وجہ یہ ہے کہ صرف مکمل ویکسین شدہ طالب علموں کو ہی اسکول آنے کی اجازت ہے۔  دوسری طرف تمام تعلیمی اداروں کی انتظامیہ اس بات کو یقینی بنانے کے لیے تمام ضروری اقدامات کر رہی ہے کہ طلبہ کووڈ سے متعلق تمام پیروی کریں۔

    دسویں جماعت کی طالبہ سیما خوش ہیں کیونکہ کافی عرصے بعد اس کو اب اسکول آنے کا موقع ملا ہے۔  گورنمنٹ گرل ہائی اسکول، گاندھی نگر جموں کی طالبہ سیما ہزاروں دیگر ساتھی طالبات کی طرح خوش ہیں کہ اب وہ کلاس روم میں اپنے اساتذہ سے آف لائن تعلیم حاصل کررہی ہیں ۔  اب تک سیما اور بہت سے دوسرے طلبہ مکمل طور پر آن لائن تعلیم پر منحصر تھے ، جس میں ان کو کئی طرح کی پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑ رہا تھا ۔  سیما کا کہنا ہے کہ اس کے بورڈ کے امتحانات اب بالکل قریب ہیں اور اب وہ روبرو بات چیت کے ذریعہ اساتذہ سے مختلف موضوعات کے بارے میں اپنے تمام شکوک و شبہات کو دور کرنے کی کوشش کر رہی ہیں۔  دیگر سبھی طلبہ کا یہ بھی کہنا ہے کہ وہ کلاس روم میں بیٹھ کر پڑھائی کے دوران سماجی فاصلے اور تمام ایس او پیز پر عمل کر رہے ہیں۔

    دسویں جماعت کی طالبہ سیما نے کہا کہ ہم سب کو خوشی ہے کہ اسکول آف لائن سرگرمیوں کے لئے دوبارہ کھولے گئے ہیں، جب کہ اسکول آن لائن کلاسز فراہم کر رہا تھا، ہم اس سے مطمئن نہیں تھے ، کیونکہ سبجیکٹس کے مطابق تمام معلومات حاصل کرنا مشکل ہورہا تھا۔  اس کے اسکول کے احاطے میں داخل ہوتے ہوئے سوالات حل ہو گئے۔ وہیں نویں جماعت کے طالب علم گورو گپتا نے کہا کہ وہ اسکول کے احاطے میں واپس آ کر خوش ہیں ۔  اسی طرح کے جذبات دوسرے طلبہ کے بھی تھے، جو اسکولوں کے دوبارہ کھلنے پر پرجوش نظر آئے۔

    دوسری طرف سینئر اسکولوں کے اساتذہ اور انتظامیہ نے اس بات کو یقینی بنانے کے لئے کئی اقدامات کئے ہیں کہ طلبہ اس آف لائن موڈ کی تعلیم کو آسانی اور حفاظت کے ساتھ انجام دیں۔ اسکول انتظامیہ کا کہنا ہے کہ صرف ان طلبہ کو اسکول کے احاطے میں داخل ہونے کی اجازت ہے ، جو ویکسین کی دونوں ڈوز کی سرٹیفکیٹ پیش کرتے ہیں۔ انہوں نے اسکول میں صبح کے اوقات میں آنے والے طلبہ کے لئے خصوصی یوگا سیشن بھی شروع کئے ہیں ۔ تاکہ طلبہ کو ضروری قوت مدافعت حاصل ہوسکے اور وہ کورونا سے متعلق کشیدگی سے نجات حاصل کرسکیں ۔

    ایک اسکول کے پرنسپل نے کہا کہ ’’یہ ہم سب کے لئے خوشی کا لمحہ ہے کہ طلبہ کلاس رومز میں واپس آگئے ہیں۔‘‘ انہوں نے مزید کہا کہ تمام ضروری انتظامات بشمول کلاسز کے سینیٹائزیشن، مین گیٹ پر طلبہ کی اسکریننگ اور ہینڈ سینیٹائزرز کی مناسب دستیابی وغیرہ کئے گئے ہیں ۔ انہوں نے مزید کہا کہ "ہم طلبہ تک بھی پہنچ رہے ہیں ، جس کے لئے گھر گھر مہم چلائی جا رہی ہے ۔ تاکہ والدین کو اپنے وارڈز کو سکول بھیجنے کی ترغیب دی جا سکے ۔"

    این آئی ٹی ایل کے پرنسپل اور پرائیویٹ اسکولز ایسوسی ایشن کے جنرل سکریٹری اجے گپتا کے مطابق پرائیویٹ اسکولوں میں حاضری بھی کم رہی جبکہ کچھ اسکول کلاس رومز کی صفائی جیسے ضروری انتظامات کرنے کے لئے آج بند رہے۔ تعلیمی ادارے کھولنے کے انتظامیہ کے فیصلہ کا خیرمقدم کرتے ہوئے پرنسپل رامیشور مینگی نے کہا کہ اس طرح کا فیصلہ بہت پہلے آجانا چاہئے تھا۔  آن لائن تعلیم کا طریقہ روایتی اسکولنگ کا کوئی متبادل نہیں ہے ۔

    خیال رہے کہ حکومتی حکم کے مطابق سمر زون کے اسکولوں میں بقیہ جونیئر کلاسوں کے لئے آف لائن تدریس کا طریقہ 21 فروری سے شروع ہوگا ۔ جب کہ سرمائی زون کے تمام اسکولوں میں آف لائن تدریس 28 فروری کے بعد شروع ہوگی ۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: