உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Jammu and Kshmir: ماتا ویشنو دیوی مندر میں بھگڈر کی جانچ کیلئے کمیٹی تشکیل، معاوضہ کا بھی اعلان

    Jammu and Kshmir: ماتا ویشنو دیوی مندر میں بھگڈر کی جانچ کیلئے کمیٹی تشکیل، معاوضہ کا بھی اعلان

    Jammu and Kshmir: ماتا ویشنو دیوی مندر میں بھگڈر کی جانچ کیلئے کمیٹی تشکیل، معاوضہ کا بھی اعلان

    J&K News : جموں خطے (Jammu) کے تریکوٹا پہاڑی سلسلے میں واقع ماتا ویشنو دیوی (Vaishnow Devi shrine) کے استھاپن پر دیوی کے درشن کے لئے جمع ہوئی بھیڑ میں بھگدڑ مچ جانے کے سبب بارہ عقیدت مندوں کی موت واقع ہوگئی جبکہ دیگر پندرہ عقیدت مند زخمی ہوگئے۔

    • Share this:
    جموں و کشمیر : جموں خطے (Jammu) کے تریکوٹا پہاڑی سلسلے میں واقع ماتا ویشنو دیوی (Vaishnow Devi shrine) کے استھاپن پر دیوی کے درشن کے لئے جمع ہوئی بھیڑ میں بھگدڑ مچ جانے کے سبب بارہ عقیدت مندوں کی موت واقع ہوگئی جبکہ دیگر پندرہ عقیدت مند زخمی ہوگئے۔ شری ماتا ویشنو دیوی شرائین بورڈ کی جانب سے جاری کئے گئے پریس بیان کے مطابق گزشتہ شب لگ بھگ دو بجکر پندرہ منٹ پر گیٹ نمبر تین پر اچانک بھگدڑ مچ گئی جس کے باعث کئی افراد زخمی ہوگئے۔ انتظامیہ اور پولیس کی طرف سے فوری طور پر بچاو اور راحت رسانی کا کام شروع کیا گیا ۔ تاہم بارہ لوگوں کی موت واقع ہوئی جبکہ دیگر پندرہ زخمی افراد کو کڑا کے نارائینا ہسپتال میں بھرتی کیا گیا۔ جن میں سے چار افراد کو اسپتال سے علاج و معالجے کے بعد رُخصت کیا گیا۔ جاں بحق ہوئے افراد میں سے آٹھ یاتریوں کی شناخت کی جاچکی ہے جبکہ یہ رپورٹ لکھنے تک چار دیگر افراد کی شناخت کی کارروائی جاری تھی۔

    حادثے میں مارے گئے افراد میں سے چار کا تعلق ریاست اُتر پردیش ، دو کا تعلق دہلی، ایک کا تعلق ہریانہ جبکہ ایک اور کا تعلق جموں و کشمیر سے ہے۔ بھگدڑ کی وجوہات کا ابھی تک پتہ نہیں چل سکا ہے ۔ تاہم گیٹ نمبر تین کے آس پاس موجود یاتریوں کے مطابق درشن کا انتظار کررہے لوگوں میں اچانک بھگدڑ مچ گئی جس کی وجہ سے کئی لوگ زخمی ہوگئے۔ ماتا ویشنو دیوی سے واپس لوٹنے والے ایک یاتری نے نیوز 18 اردو کے ساتھ بات چیت کرتے ہوئے کہا : ہم گیٹ نمبر تین کے پاس انتظار کر رہے تھے کہ اچانک یہ افواہ پھیلی کہ پہاڑی سے پتھر گرنے لگے ہیں تو وہاں موجود لوگ ادھر اُدھر بھاگنے لگے جس کے نتیجے میں وہاں کافی بھگدڑ مچ گئی اور کئی لوگ زخمی ہوگئے ۔

    ایک اور یاتری نے کہا کہ ماتا ویشنو دیوی کے بھون کے احاطے میں بھاری تعداد میں لوگ جمع ہوئے تھے جو نئے سال کی آمد پر استھاپن پر حاضری دینےپہنچے تھے ۔ تاہم انتظامیہ اور پولیس کی طرف سے بھیڑ کو کنٹرول کرنے کے لئے کوئی بھی انتظام نہیں تھا اور یہی وجہ ہے کہ بھگدڑ میں کئی لوگ زخمی ہوگئے جن میں سے کچھ بعد میں دم توڑ بیٹھے۔ حادثے کے فورا بعد ایل جی انتظامیہ نے اس حادثے کی اعلی سطح پر تحقیقات کرانے کے لئے ایک کمیٹی تشکیل دینے کا اعلان کیا۔

    ایل جی کے دفتر سے جاری ٹویٹ میں بتایا گیا کہ پرنسپل سیکریٹری ہوم اس کمیٹی کے سربراہ ہوں گے جبکہ ڈویژنل کمشنر جموں اور اے ڈی جی پی جموں اس کمیئٹی کے ممبران ہوں گے۔ انتظامیہ کی طرف سے بتایا گیا کہ یہ کمیٹی حادثے کی ہر زاویے سے جانچ کرے گی تاکہ مستقبل میں ایسے واقعات رونما نہ ہوں۔ اسی دوران ایل جی انتظامیہ نے اس سانحہ میں جاں بحق ہوئے افراد کے لواحقین کے حق میں فی کس دس لاکھ روپے ایکسگریشیا ریلیف واگزار کرنے کا اعلان کیا جبکہ حادثے میں زخمی ہوئے افراد کو فی کس دو لاکھ روپے کی مالی معاونت فراہم کی جائے گی۔

    جموں و کشمیر سرکار کے مطابق زخمی افراد کے علاج پر آنے والا سارا خرچ شری ماتا ویشنو دیوی شرائین بورڑ برداشت کرے گا۔ وزیر اعظم نریندر مودی نے حادثے پر دُکھ کا اظہار کرتے ہوئے جاں بحق ہوئے افراد کے لواحقین کے حق میں فی کس دو لاکھ روپے اور زخمی ہوئے افراد کے حق میں پچاس ہزار روپئے فی کس واگزار کرنے کا اعلان کیا ۔اسی دوران کڑا میں آج مقامی لوگوں نے ایک احتجاجی مظاہرہ کیا۔ مظاہرین نے الزام لگایا کہ یہ حادثہ ماتا ویشنو دیوی شرائین بورڑ کی غفلت کے باعث پیش آیا ہے۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: