உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    جموں و کشمیر : شرپسندوں نے کی تاریخی مندر کی بے حرمتی ، مورتی کو بھی پہنچایا نقصان ، جانچ شروع

    جموں و کشمیر : شرپسندوں نے کی تاریخی مندر کی بے حرمتی ، مورتی کو بھی پہنچایا نقصان ، جانچ شروع

    جموں و کشمیر : شرپسندوں نے کی تاریخی مندر کی بے حرمتی ، مورتی کو بھی پہنچایا نقصان ، جانچ شروع

    Jammu and Kashmir News : پولیس نے اس سلسلے میں معاملہ درج کر کے بڑے پیمانے پر جانچ شروع کر دی ہے۔ ڈی سی اننت ناگ اور ایس ایس پی اننت ناگ نے معاملہ کی مناسبت سے متعلقین کو جلد از جلد تحقیقات مکمل کرنے کا حکم دیا ۔

    • Share this:
    جموں و کشمیر: اننت ناگ کے مٹن علاقے میں واقع ماتا برگ شکھا مندر کی شرپسندوں کے ذریعے بے حرمتی کا ایک شرمناک واقعہ سامنے آیا ہے ۔ شرپسندوں نے ماتا کے مندر کے اندر موجود مورتی کو بھی نقصان پہنچایا ۔ پولیس نے اس ضمن میں معاملہ درج کر کے تحقیقات شروع کر دی ہے۔ مذہبی ہم آہنگی کیلئے مشہور اننت ناگ کے مٹن علاقے واقع تاریخی اور مذہبی اعتبار سے اہم ترین ماتا برگ شکھا کے مندر کی شرپسندوں کے ذریعہ بے حرمتی کے اس شرمناک اور انسانیت سوز واقعہ کے بارے میں تب پتہ چلا جب کچھ عقیدت مند آنے والے نو راترر کے سلسلے میں مندر کی صفائی ستھرائی کی غرض سے سنیچر کی صبح مندر پہنچے ۔ اس دوران انہوں نے مندر میں توڑ پھوڑ کی صورتحال دیکھ کر دیگر لوگوں کو مطلع کیا جبکہ ماتا کی مورتی کو بھی شدید نقصان پہنچایا گیا ہے۔

    تفصیلات کے مطابق شرپسندوں نے مندر کے اندر داخل ہو کر نہ صرف مندر کی دیواروں کو نقصان پہنچانے کی کوشش کی بلکہ وہاں پر موجود ماتا برگ شکھا کی مورتی کو بھی نقصان پہنچایا ۔ مارٹنڈ پروہت سبھا کے صدر اشوک سدھا کا کہنا ہے کہ مندر کی شرپسندوں کے ہاتھوں بے حرمتی سے لوگوں کے جذبات و دل مجروح ہو گئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کل دیوی کا یہ مندر مٹن پہاڑ کی چوٹی پر واقع ہے اور تاریخی لحاظ سے یہ کافی اہمیت کا حامل ہے۔ جبکہ اس طرح کی حرکت یقینی طور پر یہاں کے ہندو مسلم سکھ اتحاد کو توڑنے کی ایک کوشش ہے۔

    انہوں نے کہا کہ مٹن ہمیشہ سے ہندو مسلم سکھ اتحاد کی علامت کے طور پر دنیا بھر میں جانا جاتا رہا ہے اوراس بھائی چارے کو قائم رکھنے کی ہر حال میں ضرورت ہے۔ تاہم اشوک سدھا نے کہا کہ جو لوگ اس سنگین معاملہ میں ملوث ہیں ، ان کو جلد سے جلد کیفر کردار تک پہنچانے کی ضرورت ہے ۔ تاکہ مستقبل میں اس طرح کے واقعات پیش نہ آئیں ۔ انہوں نے انتظامیہ کی جانب سے معاملہ کی سنگینیت کی مناسبت سے فوری نوٹس لینے پر شکریہ ادا کیا اور کہا کہ انتظامیہ نے جلد اس واقعہ کی تحقیقات اور مجرموں کو سزا دینے کا یقین دلایا ہے۔

    ادھر لوگوں کا کہنا ہے کہ اس شرمناک حرکت سے نہ صرف مذہبی جذبات کو ٹھیس پہنچی ہے بلکہ دل بھی مجروح ہوگئے ہیں۔ یہی نہیں ، یہ کشمیر میں صدیوں سے قائم مذہبی بھائی چارے کو بھی ٹھیس پہنچانے کی ایک کوشش ہے ۔ واقع میں ملوث مجرموں کو کیفر کردار تک پہنچانے کا بھی مطالبہ طول پکڑتا جارہا ہے۔

    ادھر پولیس نے اس سلسلے میں معاملہ درج کر کے بڑے پیمانے پر جانچ شروع کر دی ہے۔ ڈی سی اننت ناگ اور ایس ایس پی اننت ناگ نے معاملہ کی مناسبت سے متعلقین کو جلد از جلد تحقیقات مکمل کرنے کا حکم دیا ۔ ڈی آئی جی جنوبی کشمیر ،  ایس ایس پی اننت ناگ سمیت دیگر افسران نے مندر کا جائزہ لیا اور ضروری معلومات حاصل کیں ۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: