உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    J&K News: پاکستان میں اقتدار کی منتقلی پڑوسی ملک کا اندرونی معاملہ، جی او سی سولہ کور کا راجوری ڈے کے موقع پر بیان

    J&K News: پاکستان میں اقتدار کی منتقلی پڑوسی ملک کا اندرونی معاملہ، جی او سی سولہ کور کا راجوری ڈے کے موقع پر بیان

    J&K News: پاکستان میں اقتدار کی منتقلی پڑوسی ملک کا اندرونی معاملہ، جی او سی سولہ کور کا راجوری ڈے کے موقع پر بیان

    Jammu and Kashmir : ہندوستانی فوج کے بہادر افسران اور سپاہیوں کو خراج عقیدت پیش کرنے کے لئے ہر سال کی طرح رواں برس بھی راجوری ڈے کے موقع پر کئی تقریبات کا انعقاد کیا گیا۔ اس موقع پر آج فوج کے ان شہداء کو گلہائے عقیدت نذر کئے گئے ، جنہوں نے 1948 میں آج ہی کے دن پاکستان کے قبائلی حملہ آوروں اور پاکستانی فوج کو کھدیڑ کر راجوری کو دشمن کے قبضے سے آزاد کرایا تھا۔

    • Share this:
    جموں و کشمیر : ہندوستانی فوج کے بہادر افسران اور سپاہیوں کو خراج عقیدت پیش کرنے کے لئے ہر سال کی طرح رواں برس بھی راجوری ڈے کے موقع پر کئی تقریبات کا انعقاد کیا گیا۔ اس موقع پر آج فوج کے ان شہداء کو گلہائے عقیدت نذر کئے گئے ، جنہوں نے 1948 میں آج ہی کے دن پاکستان کے قبائلی حملہ آوروں اور پاکستانی فوج کو کھدیڑ کر راجوری کو دشمن کے قبضے سے آزاد کرایا تھا۔ راجوری میں منعقدہ ایک تقریب میں جنرل افسر کمانڈنگ سولہ کور لیفٹیننٹ جنرل منجندر سنگھ، فوج کے دیگر اعلیٰ عہدیداروں ،جوانوں اور پولیس اور سیول انتظامیہ کے افسران نے شہیدوں کی یادگار پر عقیدت کے پھول نچھاور کرتے ہوئے ان کی خدمات کو یاد کیا۔

    ذرائع ابلاغ کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے لیفٹیننٹ جنرل منجندر سنگھ نے کہا کہ فوج اس دن کو قومی سطح پر منائی جانے والی تقریبات کی فہرست میں شامل کرنے کی کوشش کرے گی۔ انہوں نے کہاکہ پاکستان ہمیشہ جموں وکشمیر میں حالات کو بگاڑنے کی کوشش کرتا رہا ہے اور اس کی یہ کوششیں اب بھی جاری ہیں۔ تاہم ہندوستانی فوج اور دیگر حفاظتی عملہ پاکستان کے ایسے ناپاک عزائم کو کبھی بھی کامیاب نہیں ہونے دیں گے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان ابھی بھی کوشش کررہا ہے کہ جموں وکشمیر کے امن میں خلل پیدا کیا جائے۔ وہ اپنی طرف سے کوششیں جاری رکھے ہوئے ہیں تاہم فوج اس کی ہر کوشش کو ناکام بنانے کے لئے ہمیشہ چوکس رہتی ہے ۔

     

    یہ بھی پڑھئے :  مہنت بجرنگ منی کو پولیس نے کیا گرفتار، مسلم خواتین کو دی تھی آبروریزی کی دھمکی


    کنٹرول لائن کے اس پار لانچنگ پیڈس پر موجود دہشت گردوں کی تعداد سے متعلق پوچھے گئے ایک سوال کے جواب میں جی او سی نے کہا کہ دہشت گردوں کی اصل تعداد کے بارے میں وثوق سے کچھ بھی نہیں کہا جاسکتا کیونکہ اس  تعداد میں کبھی کبھار اضافہ یا کمی ہوتی رہتی ہے ۔ تاہم انہوں نے کہاکہ موجودہ وقت میں ان لانچ پیڈس پر دہشت گردوں کی تعداد میں زیادہ اضافہ ہونے کے بارے میں کوئی اطلاع موصول نہیں ہوئی ہے۔ لیفٹیننٹ جنرل منجندر سنگھ نے کہا کہ ڈرون کے ذریعہ جموں و کشمیر میں ہتھیار اور منشیات کی اسمگلنگ حفاظتی عملے کے لیے ضرور ایک چیلینج ہے۔ پاکستان کی طرف سے ہتھیاروں کی اسمگلنگ کے لئے ڈرون کا استعمال حفاظتی عملے کے لئے ایک چیلینج ہے تاہم پاکستان ہتھیار اور منشیات گرانے کے لیے ڈرون کا استعمال زیادہ تر بین الاقوامی سرحد کے علاقوں میں کرتا ہے جہاں بی ایس ایف اور دیگر حفاظتی ایجنسیاں اس کی کارستانیوں کو ناکام کررہی ہیں۔ کنٹرول لائن کے علاقوں میں پاکستان کی جانب سے ڈرون استعمال کرنے کا زیادہ خطرہ نہیں ہے کیونکہ ابھی تک ان علاقوں میں ہتھیار گرانے کے زیادہ واقعات سامنے نہیں آئے ہیں۔

     

    یہ بھی پڑھئے : اکبر الدین اویسی کو بڑی راحت، عدالت نے دو معاملات میں کیا بری


    پاکستان میں اقتدار کی منتقلی اور اس سے کنٹرول لائن نیز جموں وکشمیر کے حالات پر پڑنے والے اثرات سے متعلق پوچھے گئے ایک سوال کے جواب میں لیفٹیننٹ جنرل منجندر سنگھ نے کہا کہ پاکستان کے داخلی حالات اور کنٹرول لائن کی صورتحال میں کوئی  مماثلت نہیں ہے۔ میں پاکستان میں اقتدار کی منتقلی کے بارے کوئی تبصرہ نہیں کرنا چاہتا کیونکہ وہ اس ملک کا داخلی معاملہ ہے ۔ جہاں تک کنٹرول لائن کا تعلق ہے فوج کا یہ فرض اولین ہے کہ ہم اس کی حفاظت کریں۔ کنٹرول لائن پر حالات مکمل طور پر قابو میں ہیں اور پاکستان کی جانب سے دراندازی کی کسی بھی کوشش کو ناکام بنادیا جائے گا ۔

    "گرو کا پرو" عوان کے تحت سات اپریل سے جاری راجوری ڈے کے سلسلے میں کئی پروگرام منعقد کئے گئے۔ چونکہ پاکستانی حملہ آوروں کو کھدیڑنے میں مقامی لوگوں نے اپنا بھر پور تعاون دیا تھا ، لہذا ان پروگراموں میں عوامی شمولیت کو یقینی بنانے کے لیے بھی کئی پروگراموں کا انعقاد کیا گیا۔ ان پروگراموں میں ہندو مسلم سکھ اور عیسائی مذاہب سے تعلق رکھنے والے افراد کے لیے ایک خصوصی پروگرام کا اہتمام ہوا ۔ تاکہ ہندوستان کی صدیوں پرانی بھائی چارے کی روایت کے پیغام کو عام کیا جاسکے۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: