உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    جموں و کشمیر : سبزیوں کے کلسٹر نے بدلی کسانوں کی زندگی، زرعی شعبے میں انقلابی اقدام

    جموں و کشمیر : سبزیوں کے کلسٹر نے بدلی کسانوں کی زندگی، زرعی شعبے میں انقلابی اقدام

    Jammu and Kashmir News : وانی گنڈ کولگام محکمہ زراعت زون کیموہ کا وہ علاقہ ہے ، جہاں سے ریکارڈ توڑ تازہ سبزیوں کی پیداواری ہو رہی ہے اور اس سے حاصل ہونے والی آمدنی سے کئی گھروں کے چولہے جل رہے ہیں ۔

    • Share this:
    وانی گنڈ کولگام : "ہمت مرداں مدد دے خدا" یہ جملہ ایسے ہی نہیں کہا گیا ہے،  وانی گنڈ کولگام کے بیشتر کنبوں نے محنت کر کے اسے سچ کر دکھایا ہے ۔ تازہ سبزیوں کی پیدوار اور اس سے حاصل ہو رہی آمدنی سے کئی کنبے خوشحالی کی راہ پر گامزن ہیں۔

    لطیف احمد اور فاروق احمد سمیت 200 افراد تقریبا 32 ہیکٹر اراضی پر تازہ اور مختلف سبزیاں پیدا کر رہے ہیں۔ وانی گنڈ کولگام محکمہ زراعت زون کیموہ کا وہ علاقہ ہے ، جہاں سے ریکارڈ توڑ تازہ سبزیوں کی پیداواری ہو رہی ہے اور اس سے حاصل ہونے والی آمدنی سے کئی گھروں کے چولہے جل رہے ہیں ۔ سبزیوں سے ہونے والی آمدنی سے ان گھروں کی مالی حالت میں کافی بہتری آگئی ہے ۔ وانی گنڈ کولگام ویجٹیبل کلسٹر محکمہ زراعت کے زیر نگرانی اپنا کام بخوبی انجام دے رہا ہے اور یہاں 13 ہزار میٹرک ٹن سبزیاں پیدا ہوتی ہیں ، جو کہ وادی اور اس سے باہر بھی فروخت کی جا رہی ہیں ۔ کلسٹر کا حصہ بنے افراد نے محکمہ زراعت کی کوششوں کی سراہنا کرتے ہوئے اسے اہم قرار دیا ۔

    نامیاتی سبزیوں کی بڑے پیمانے پر پیداوار سے عام لوگوں کو فائدہ ہو رہا ہے اور محکمہ زراعت کے مطابق ضلع کولگام میں اس طرح کے کلسٹر مزید قائم کئے جا رہے ہیں ۔ تاکہ لوگ زیادہ سے زیادہ استفادہ حاصل کر سکیں ۔ محکمہ ایسے افراد کو ہر ممکن تعاون فراہم کر رہا ہے ۔

    ڈسٹرکٹ ایگریکلچر افسر کولگام فاروق احمد کا کہنا ہے کہ محکمہ مزید کلسٹر قائم کرنے کا منصوبہ بنا رہا ہے ۔ تاکہ نامیاتی سبزیوں کی پیداوار بڑھے اور روزگار کے مزید مواقع پیدا ہوں ۔ ان کا کہنا ہے کہ محکمہ کسانوں کو بیچ اور دیگر سہولیات بہم پہنچا رہا ہے ۔

    وانی گنًڈ کولگام کا ویجیٹیبل کلسٹر دیگر سبزیاں اور پھل پھول پیدا کرنے والوں کے لیے کسی تحریک سے کم نہیں ہے ۔ تاہم ضرورت اس بات کی ہے کہ سرکار اور متعلقہ محکمہ ایسے افراد کی حوصلہ افزائی اور مالی معاونت کے لیے مزید اقدامات کرے ۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: