ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

جموں کے دیہی علاقوں میں رضاکار کورونا وبا سے لڑنے میں سرگرم عمل ، ہر کوئی کررہا تعریف

Jammu and Kashmir News : گزشتہ ایک ماہ سے ہر صبح منڈ لوٹ گاؤں کے ہر گھر پر اوشا دیوی دستک دیکر تھرمل اسکینر کے ذریعہ گھر میں موجود تمام افراد کے بدن کی حرارت چیک کرتی ہیں۔

  • Share this:
جموں کے دیہی علاقوں میں رضاکار کورونا وبا سے لڑنے میں سرگرم عمل ، ہر کوئی کررہا تعریف
جموں کے دیہی علاقوں میں رضاکار کورونا وبا سے لڑنے میں سرگرم عمل ، ہر کوئی کررہا تعریف

جموں و کشمیر: کورونا وبا کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے کئی رضاکار تنظیمیں اور افراد سرکار کے ساتھ شانہ بشانہ کام کر رہے ہیں ۔ اسی طرح کی ایک کوشش کے طور پر جموں کے ادھمپور ضلع سے تعلق رکھنے والی ایک ڈی ڈی سی ممبر سرگرم عمل ہے ۔ اوشا دیوی نامی ڈی ڈی سی ممبر اپنے آبائی گاؤں منڈ لوٹ کو کورونا وبا سے بچانے اور اس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے میدان میں اتری ہیں۔ گزشتہ ایک ماہ سے ہر صبح منڈ لوٹ گاؤں کے ہر گھر پر اوشا دیوی دستک دیکر تھرمل اسکینر کے ذریعہ گھر میں موجود تمام افراد کے بدن کی حرارت جانچتی ہیں۔


اتنا ہی نہیں بلکہ وہ گاؤں کے لوگوں کو کورونا وبا کی روک تھام کی ضرورت کو اجاگر کرتے ہوئے تمام احتیاطی تدابیر کے بارے میں جانکاری فراہم کرتی ہیں ۔ اوشا دیوی کا کہنا ہے کہ وہ اپنے گاؤں کے لوگوں کو بار بار یہ تاکید کرتی ہیں کہ وہ بہر صورت ماسک کا استعمال کرے اور  بھاری رش والے علاقوں سے دور رہے ۔ وہ کہتی ہیں کہ انہیں اس بات پر فخر ہے کہ گاؤں کے لوگ ان کی گزارشات پر عمل کر کے کورونا وبا کی روک تھام کے لیے اپنا تعاون فراہم کر رہے ہیں ۔


اوشا دیوی نے کہا کہ میں گاؤں کے لوگوں کو ویکسین لگوانے کیلئے بار بار اپیل کرتی ہوں اور لوگوں سے مثبت ردعمل مل رہا ہے ۔ رمضان کے مہینے میں اگرچہ مسلم طبقہ سے وابستہ لوگ کم تعداد میں ویکسین لگوانے کے لئے سامنے آتے تھے ، تاہم عید کے بعد ویکسین لگوانے والے افراد کی تعداد میں کافی اضافہ دیکھنے کو مل رہا ہے۔ اوشا دیوی نے کہا کہ یہ لوگوں کے تعاون کا ہی نتیجہ ہے کہ ان کا گاؤں منڈ لوٹ ابھی تک کورونا وبا سے پاک ہے ۔


وہیں جموں صوبے میں سرحد سے متصل تریوا گاؤں کی سرپنچ بلبیر کور بھی اپنے علاقہ میں کورونا وبا سے نمٹنے کے لیے اقدامات کرنے میں مصروف عمل ہیں ۔ بلبیر کور نے پہل کر کے مقامی انتظامیہ کے اشتراک سے علاقے میں موجود رادھا سوامی ستسنگ بیاس میں 25 بیڈ والا ایک کووڈ آسیولیشن سینٹر قائم کیا ہے ۔ ان کا کہنا ہے کہ اس وقت جموں کے اسپتالوں اور آئسولیشن مراکز پر کورونا سے متاثرہ افراد کے بھاری رش کا دباؤ ہے ، جس کے پیش نظر ان کے ذہن میں یہ مرکز قائم کرنے کا خیال آیا ۔

بلبیر کور نے کہا کہ جموں ضلع میں کورونا مریضوں کی تعداد روز بروز بڑھ ہے جس کی وجہ سے ضلع کے اسپتال میں مریضوں کا کافی رش ہے، میں نے سوچا کہ علاقے میں ایک آیسولیشن مرکز قائم کیا جائے تاکہ ضرورت پڑنے پر اس کا استعمال کیا جا سکے ۔ انہوں نے کہا کہ ان کی اس پہل کو انتظامیہ اور پولیس محکمے کا مکمل اعتماد اور اشتراک حاصل ہے ۔ بلبیر کور کا کہنا ہے کہ ضلع انتظامیہ جموں نے انہیں اس بات کی یقین دہانی کرائی ہے کہ ضرورت پڑنے پر اس آیسولیشن سینٹر میں آکسیجن کی سپلائی اور دیگر لازمی سہولیات بھی مہیا کرائی جائیں گی ۔

اوشا دیوی اور بلبیر کور کی طرح کی اور رضاکار تنظیمیں کووڈ وبا کے دوران متاثرہ افراد کی مدد کے لیے سامنے آئی ہیں ۔ سماجی کارکنان کا ماننا ہے کہ لوگوں کے اس جذبے سے عیاں ہے کہ ملک کا ہر شہری کورونا وبا سے لڑنے میں اپنا کردار نبھانے کو فرض اولین سمجھتا ہے اور یہی جذبہ اس وبائی بیماری کو ملک سے ختم کرنے میں مددگار ثابت ہو سکتا ہے ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: May 17, 2021 05:41 PM IST