உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    مرکزکے اس فیصلہ کا محبوبہ مفتی نے کیا خیرمقدم ، کہا : اس سے سرحد پار سے تعلقات ہوں گے بہتر

    مرکزکے اس فیصلہ کا محبوبہ مفتی نے کیا خیرمقدم ، کہا : اس سے سرحد پار سے تعلقات ہوں گے بہتر

    مرکزکے اس فیصلہ کا محبوبہ مفتی نے کیا خیرمقدم ، کہا : اس سے سرحد پار سے تعلقات ہوں گے بہتر

    محبوبہ مفتی نے ٹویٹ کیا کہ سچیت گڑھ میں بیٹ دی ریٹریٹ پروگرام منعقد کرنے کے ہندوستانی حکومت کے فیصلہ کا خیرمقدم ہے ۔ اس سے یقینی طور پر ہی سیاحت کو فروغ ملے گا اور امید کرتی ہوں کہ یہ سچیت گڑھ اور سیالکوٹ کے درمیان کاروبار اور سفری راستہ کے طور پر ڈیولپ ہوگا ۔

    • Share this:
      سری نگر : پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی کی صدر اور جموں و کشمیر کی سابق وزیر اعلی محبوبہ مفتی نے ہندوستان ۔ پاکستان سرحد پر واقع سچیت گڑھ میں بیٹ دی ریٹریٹ تقریب منعقد کرنے کے مرکزی حکومت کے فیصلہ کا اتوار کو خیر مقدم کرتے ہوئے کہا کہ اس سے سیاحت کو فروغ ملے گا اور سرحد پار سے بھی تعلقات بہتر ہوں گے ۔

      جموں و کشمیر کے لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا نے ہفتہ کو بین الاقوامی سرحد پر واقع سچیت گڑھ کے اوکٹرائی پوسٹ پر ریٹریٹ پروگرام کا افتتاح کیا ۔ محبوبہ مفتی نے ٹویٹ کیا کہ سچیت گڑھ میں بیٹ دی ریٹریٹ پروگرام منعقد کرنے کے ہندوستانی حکومت کے فیصلہ کا خیرمقدم ہے ۔ اس سے یقینی طور پر ہی سیاحت کو فروغ ملے گا اور امید کرتی ہوں کہ یہ سچیت گڑھ اور سیالکوٹ کے درمیان کاروبار اور سفری راستہ کے طور پر ڈیولپ ہوگا ۔

      ایل جی نے کہی یہ بات

      ایل جی منوج سنہا نے کہا کہ پاکستان سوچی سمجھی سازش کے تحت ہندوستان کے نوجوانوں کو نشہ میں دھکیل رہا ہے ۔ ملک کے نوجوان نشہ سے دور رہیں ۔ انتظامیہ نشے کے خلاف قانون کے تحت کارروائی کررہی ہے ۔ لوگوں کو بھی اس غیر سماجی برائی کو دور کرنے کیلئے اہم کردار ادا کرنا چاہئے ۔

      انہوں نے کہا کہ اس سال جموں و کشمیر میں جولائی میں ساڑھے دس لاکھ ، اگست میں ساڑھے گیارہ لاکھ اور ستمبر میں بارہ لاکھ پچاس ہزار سیاح آئے ۔ انہوں نے کہا کہ کورونا وبا ابھی ختم نہیں ہوئی ، لیکن یہاں اب پہلے سے بہتر حالات بننے سے کاروبار بھی بہتر ہوا ہے ۔

      انہوں نے کہا کہ ہماری فوج ، نیم فوجی دستہ اور ریاستی پولیس کے تعاون سے یہاں امن کا نیا دور آیا ہے ۔ اس کی وجہ سے ملک کے 130 کروڑ لوگ اپنے گھروں میں محفوظ ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ سال اکتوبر میں بانڈی پورہ ، بارہمولہ ، تنگ دھر ، کپواڑہ میں سرحدی سیکورٹی فورسیز کے ذریعہ کی گئی بھرتی میں نوجوانوں نے بڑھ چڑھ کر حصہ لیا ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: