உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    بی جے پی کے اقتدار میں جموں و کشمیر کے ریاستی درجے کی بحالی ناممکن: غلام احمد میر

    جموں و کشمیر پردیش کانگریس کمیٹی کے صدر غلام احمد میر

    جموں و کشمیر پردیش کانگریس کمیٹی کے صدر غلام احمد میر

    نامہ نگاروں کی جانب سے وزیر داخلہ امت شاہ کے حالیہ بیان کے بارے میں پوچھے جانے پر کہا: 'امت شاہ نے کہا ہے کہ ریاستی درجہ مناسب وقت پر بحال کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ صبر کرو۔ ان کے کہنے کا مطلب تھا کہ ہم نے اگر دفعہ 370 کو ہٹانے میں 70 سال لگائے تو آپ بھی 27 سال تک انتظار کرو'

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:
      جموں و کشمیر پردیش کانگریس کمیٹی کے صدر غلام احمد میر نے کہا کہ مرکز میں بی جے پی کے اقتدار میں رہتے ہوئے جموں و کشمیر کے ریاستی درجے کی بحالی ناممکن ہے۔انہوں نے جمعرات کو یہاں نامہ نگاروں کی جانب سے وزیر داخلہ امت شاہ کے حالیہ بیان کے بارے میں پوچھے جانے پر کہا: 'امت شاہ نے کہا ہے کہ ریاستی درجہ مناسب وقت پر بحال کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ صبر کرو۔ ان کے کہنے کا مطلب تھا کہ ہم نے اگر دفعہ 370 کو ہٹانے میں 70 سال لگائے تو آپ بھی 27 سال تک انتظار کرو'۔ان کا مزید کہنا تھا: 'میرا ماننا ہے کہ جب تک بھاجپا سرکار دلی میں ہے مجھے نہیں لگتا ہے کہ وہ ریاستی درجہ بحال کریں گے، خصوصی پوزیشن تو دور کی بات ہے۔ ہمیں امید ہے کہ خصوصی پوزیشن کے حوالے سے سپریم کورٹ سے کوئی اچھا فیصلہ سامنے آئے گا'۔

      غلام احمد میر نے جموں و کشمیر میں پراپرٹی ٹیکس کے نفاذ سے متعلق پوچھے جانے پر کہا: 'سوال صرف پراپرٹی ٹیکس کا نہیں ہے۔ مہنگائی آسمان کو چھو رہی ہے۔ بین الاقوامی مارکیٹ میں اس وقت پیٹرول کی قیمت 54 ڈالر فی بیرل ہے اس حساب سے یہاں پر پیٹرول فی لیٹر پچاس روپے میں فروخت ہونے چاہیے۔ لیکن لوگوں کو 95 سے 100 روپے کے درمیان ادا کرنے پڑتے ہیں۔ اسی طرح سے ڈیزل اور گیس کی قیمتیں بھی آسمان پر ہیں۔

      یہ قیمتیں ایک عام انسان کے کچن پر اثرانداز ہوتی ہیں'۔انہوں نے کہا: 'جہاں پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں غیر معمولی اضافہ کیا جا رہا ہے وہیں دوسری طرف پراپرٹی ٹیکس اور ہائوس ٹیکس، بجلی اور پانی کا اضافی فیس صارفین پر تھوپا جا رہا ہے۔ اگر جموں یونین ٹریٹری نہیں ہوتی تو پراپرٹی ٹیکس و ہائوس ٹیکس کی بات ہی نہیں آتی'۔ان کا مزید کہنا تھا: 'ہماری ایک تاریخی ریاست تھی۔ ہم سے ریاستی درجہ کیوں چھینا گیا۔ یو ٹی میں تبدیل کرنے کے بعد ہمارے لوگوں پر مظالم کیوں ڈھائے جا رہے ہیں۔ لگتا ہے کہ بی جے پی جموں و کشمیر کے لوگوں کو اقتصادی طور پر کمزور کرنا چاہتی ہے۔
      Published by:Mirzaghani Baig
      First published: