உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    جموں وکشمیر دہشت گردانہ حملہ: دہشت گردوں نے’شفٹ‘ بدلنے کے وقت چوکی پرCISF جوانوں کو بنایا نشانہ

    دہشت گردوں نے ’شفٹ‘ بدلنے کے وقت چوکی پر CISF جوانوں کو بنایا نشانہ

    دہشت گردوں نے ’شفٹ‘ بدلنے کے وقت چوکی پر CISF جوانوں کو بنایا نشانہ

    جموں (Jammu) میں جمعہ کی صبح ہوئے دہشت گردانہ حملے (Terrorist Attack) میں سی آئی ایس ایف (CISF) کے ایک سب انسپکٹر شہید ہوگئے ہیں۔ حالانکہ اس حملے کا جواب دیتے ہوئے جوانوں نے دونوں حملہ آوروں کو ہلاک کردیا ہے۔

    • Share this:
      نئی دہلی: جموں میں جمعہ کی صبح ہوئے خودکش دہشت گردانہ حملے (Terrorist Attack) میں سی آئی ایس ایف (CISF) کے ایک سب انسپکٹر شہید ہوگئے ہیں۔ وہ مدھیہ پردیش کے ستنا ضلع کے رہنے والے تھے۔ اس حملے میں 6 جوان اور کچھ دیگر زخمی ہوئے ہیں۔ حالانکہ اس حملے کا جواب دیتے ہوئے جوانوں نے دونوں حملہ آوروں کو ہلاک کردیا ہے۔ دراصل، جموں میں سیکورٹی اہلکاروں کے ساتھ تصادم میں مارے گئے دو دہشت گردوں نے جمعہ کو صبح مرکزی صنعتی سیکورٹی اہلکار (سی آئی ایس ایف) کے جوانوں پر اس وقت حملہ کیا، جب ایک چوکی پر پالی بدل رہی تھی۔ افسران نے یہ جانکاری دی۔ انہوں نے بتایا کہ خود کش حملہ آوروں نے ضلع کے سجواں علاقے میں چڈھا کیمپ کے پاس چوکی پر تعینات ملازمین پر اپنے جدید ہتھیاروں سے گولہ باری کی اور ہتھگولے پھینکے۔

      سی آئی ایس ایف کے ڈپٹی انسپکٹر جنرل (ڈی آئی جی) اور چیف ترجمان انل پانڈے نے پی ٹی آئی- بھاشا کو بتایا، ’موقع پر موجود سی آئی ایس ایف کے جوانوں نے فوری نیلامی کی اور حملے کا جواب دیا، جس کے سبب دہشت گردانہ علاقے میں موجودہ سیکورٹی اہلکاروں کے اہم گھیرے تک نہیں پہنچ سکے‘۔ انہوں نے کہا، ’اگر وہ کامیاب ہوجاتے اور انہیں پاس کے رہائشی علاقے میں پناہ لینے کے لئے مجبور نہیں کیا جاتا، تو سیکورٹی اہلکاروں کو زیادہ نقصان ہوسکتا تھا‘۔ اس کے بعد سیکورٹی اہلکاروں کے ساتھ ہوئی تصادم میں دو دہشت گردی مارے گئے۔

      یہ بھی پڑھیں۔

      ہم ساری امید کھو بیٹھے تھے، لیکن فوج کی وجہ سے آج زندہ ہیں، ’جموں تصادم میں پھنسی فیملی کی آپ بیتی‘ 

      ایک دیگر افسر نے کہا کہ ایک پرائیویٹ بس میں سوار 15 سی آئی ایس ایف جوانوں کا ایک ٹیم ان لوگوں سے کام کاج سنبھالنے ہی والا تھا، جو اپنی رات کی ڈیوٹی ختم کر رہے تھے۔ یہ حملہ صبح تقریباً 4:25 بجے ہوا۔ انہوں نے کہا کہ دہشت گردوں کے ذریعہ بھاری گولی باری اور ہتھگولے پھینکے جانے کے بعد بس ڈرائیور بھاگ گیا، لیکن سیکورٹی اہلکاروں نے فوراً محاذ سنبھالتے ہوئے جوابی کارروائی کی۔

      حملے میں سی آئی ایس ایف کے اسسٹنٹ سب انسپکٹر ایس پی پٹیل (58) شہید ہوگئے جبکہ نیم فوجی دستہ کے چھ جوانوں اور کچھ دیگر لوگ زخمی ہوگئے۔ ایس پی پٹیل ریاست کے ستنا ضلع کے رہنے والے تھے۔ ایک دیگر افسر نے کہا کہ سی آئی ایس ایف نے جموں وکشمیر میں اندرونی سیکورٹی ڈیوٹی پر 13 کمپنیاں یا تقریباً 1,200 اہلکاروں کو تعینات کیا ہے اور حملے کی چپیٹ میں آئے ملازم چھتیس گڑھ کے بھلائی واقع کمپنی نمبر 757 سے ہیں۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: