ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

جموں ائیر فورس اسٹیشن پر ڈرون حملے کے پیچھے پاکستانی دہشت گرد تنظیم لشکر طیبہ کا ہاتھ : دلباغ سنگھ

Jammu and Kashmir News : ڈی جی پی نے کہا کہ حالیہ مہینوں میں ڈرون کے ذریعہ اسلحہ گرانے کے ایک درجن سے زائد واقعات منظر عام پر آئے ہیں اور ان واقعات کے پیچھے دہشت گرد تنظیم لشکرِ طیبہ اور جیش محمد کا ہاتھ ہونے کا شبہ ظاہر کیا گیا ہے ۔

  • Share this:
جموں ائیر فورس اسٹیشن پر ڈرون حملے کے پیچھے پاکستانی دہشت گرد تنظیم لشکر طیبہ کا ہاتھ : دلباغ سنگھ
جموں ائیر فورس اسٹیشن پر ڈرون حملے کے پیچھے پاکستانی دہشت گرد تنظیم لشکر طیبہ کا ہاتھ : دلباغ سنگھ ۔ (ANI Twitter/27 June 2021)

جموں : جموں و کشمیر پولیس کے ڈائریکٹر جنرل دلباغ سنگھ نے کہا ہے کہ گزشتہ اتوار کے روز جموں کے ائیر فورس اسٹیشن پر ڈرون حملے کے پیچھے پاکستانی دہشت گرد تنظیم لشکر طیبہ کا ہاتھ ہونے کا شبہ ہے ۔ میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے ڈی جی پی نے کہا کہ حالیہ مہینوں میں ڈرون کے ذریعہ اسلحہ گرانے کے ایک درجن سے زائد واقعات منظر عام پر آئے ہیں اور ان واقعات کے پیچھے دہشت گرد تنظیم لشکرِ طیبہ اور جیش محمد کا ہاتھ ہونے کا شبہ ظاہر کیا گیا ہے ۔


انہوں نے کہا کہ ابھی تک تفتیش کار شواہد اکٹھا کر رہے ہیں ، لیکن یہ ضرور ہے کہ لشکرِ طیبہ کا اس حملے کے پیچھے ہاتھ ہے ۔ ڈی جی پی نے کہا کہ شبہ ہے کہ ڈرونز سرحد پار سے آئے تھے ، لیکن اس وقت کچھ پہلوؤں سے انکار نہیں کیا جاسکتا ۔ ہمارا شبہ ہے کہ ڈرونز سرحد پار سے آئے ہیں۔ ڈی جی پی نے مزید کہا کہ ڈرون از خود اپنے آپ میں ایک خطرہ ہے اور اسے قوم دشمن عناصر ملک کو نقصان پہنچانے کے لیے استعمال کررہے ہیں ۔


انہوں نے کہا کہ اس طرح کے حملوں کو روکنے کے لئے اضافی اقدامات اٹھائے گئے ہیں ۔ تمام سیکورٹی ایجنسیوں کے سینئر افسران نے مل کر اور متفق ہوکر اس معاملہ پر تبادلہ خیال کیا ہے اور مستقبل میں اس طرح کے معاملات کو روکنے کے لئے بھی مناسب اقدامات کئے جائیں گے ۔


واضح رہے کہ گزشتہ کئی دنوں سے جموں اور دیگر مقامات پر لگاتار ڈرونز دیکھے جارہے ہیں ، جس کی وجہ سے سیکورٹی فورسیز الرٹ پر ہیں ۔ دہلی سے بھی مختلف ٹیمیں جموں پہنچ کر اس معاملہ کی باریک بینی سے جائزہ لے رہی ہیں ۔

اسی دوران ویسٹرن آرمی کے کمانڈر لیفٹیننٹ جنرل آر پی سنگھ نے اپنے فوجی افسران کی ٹیم کے ہمراہ جموں کے ایئر فورس اسٹیشن کا دورہ کیا ۔ انہوں نے ڈرون حملہ کے معاملہ میں تحقیقات کی پیشرفت جاننے کے لئے این آئی اے کے تفتیش کاروں اور دیگر ماہرین سے بات چیت کی ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Jul 02, 2021 09:35 PM IST