ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

جموں و کشمیر : حزب المجاہدین سرغنہ کے دو بیٹوں سمیت 11 سرکاری ملازمین برطرف ، یہ ہے بڑی وجہ

Jammu Kashmir Latest News: جن 11 کشمیری ملازمین کو سرکاری ملازمت سے فارغ کیا گیا ہے ان میں حزب المجاہدین کے سرغنہ سید صلاح الدین کے دو بیٹے بھی شامل ہیں ۔

  • Share this:
جموں و کشمیر : حزب المجاہدین سرغنہ کے دو بیٹوں سمیت 11 سرکاری ملازمین برطرف ، یہ ہے بڑی وجہ
جموں و کشمیر: حزب المجاہدین سرغنہ کے دو بیٹوں سمیت 11 سرکاری ملازمین برطرف ، یہ ہے بڑی وجہ

سری نگر : لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا نے مزید 11 سرکاری ملازمین کو 'ملک کی سلامتی کے مفاد میں' ملازمت سے فارغ کرنے کے احکامات جاری کر دئے ہیں۔ بتایا رہا ہے جن 11 کشمیری ملازمین کو سرکاری ملازمت سے فارغ کیا گیا ہے ان میں  حزب المجاہدین کے سرغنہ سید صلاح الدین کے دو بیٹے بھی شامل ہیں ۔ قبل ازیں لیفٹیننٹ گورنر نے گزشتہ ماہ تقریبا پانچ کشمیری سرکاری ملازمین بشمول ایک اسسٹنٹ پروفیسر، ایک نائب تحصیلدار اور تین اساتذہ کو ملازمت سے فارغ کر دیا تھا ۔


ہفتے کو جاری برطرفی کے 11 الگ الگ احکامات ، جن کا متن ایک جیسا ہے، میں کہا گیا ہے کہ لیفٹیننٹ گورنر مطمئن ہیں کہ ملک کی سلامتی کے مفاد میں ان معاملات (کیسز) کی تحقیق کرنا لازمی نہیں ہے ۔ ملازمین کی برطرفی کے لیے ہندوستانی آئین کی دفعہ 311 کی ذیلی شق 2 (سی) کا سہارا لیا جا رہا ہے ، جس کے تحت صدر جمہوریہ یا ریاست کے گورنر تحقیقات کے بغیر کسی بھی سرکاری ملازم کو 'ملک کی سلامتی کے مفاد' میں ملازمت سے فارغ کر سکتے ہیں۔


افسران نے بتایا کہ ان گیارہ ملازمین میں اننت ناگ سے چار ، بڈگام سے تین اور بارہمولہ ، سری نگر ، پلوامہ اور کپواڑہ سے ایک ایک ہیں ۔ افسران کے مطابق برطرف کئے گئے ملازمین تعلیم ، پولیس ، زراعت ، بجلی ، محکمہ صحت اور ایس کے آئی ایم ایس سے وابستہ تھے ۔


بتادیں کہ پانچ اگست 2019 (جب کشمیر کی خصوصی آئینی حیثیت ختم کر دی گئی تھی) سے قبل ہندوستانی آئین کی دفعہ 311 کا کشمیر پر اطلاق نہیں ہوتا تھا۔ خیال رہے کہ سرکاری ملازمین کی نمائندہ تنظیمیں اور علاقائی سیاسی جماعتیں سرکاری ملازمین کو نوکری سے برطرف کرنے کی پالیسی پر سخت برہمی کا اظہار کر چکی ہیں۔

نیوز ایجنسی یو این آئی کے ان پٹ کے ساتھ ۔ 
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Jul 11, 2021 12:00 AM IST