ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

اننت ناگ میں انکاؤنٹر کے دوران ایک ملٹینٹ کو زندہ گرفتار کرنے میں فورسز کو ملی کامیابی

ذرائع کے مطابق دوسرا ملٹینٹ جو موٹر سائیکل پر سوار تھا فرار ہونے میں کامیاب ہوا ہے جسے پکڑنےکے لیے بڑے پیمانے پر تلاش شروع کردی گئی ہے۔ فورسز نے اس آپریشن کو ایک اہم کامیابی قرار دیا ہے کیونکہ یہ انکاؤنٹر جموں سرینگر قومی شاہراہ کے قریب پیش آیا ہے۔

  • Share this:
اننت ناگ میں انکاؤنٹر کے دوران ایک ملٹینٹ کو زندہ گرفتار کرنے میں فورسز کو ملی کامیابی
اننت ناگ میں انکاؤنٹر کے دوران ایک ملٹینٹ کو زندہ گرفتار کرنے میں فورسز کو ملی کامیابی

جنوبی کشمیر۔ جنوبی کشمیر کے سنگم اننت ناگ کے گنڈ بابا خلیل علاقے میں سیکورٹی فورسز کے ساتھ ایک مختصر انکاؤنٹر کے دوران حزب المجاہدین کا ایک ملٹینٹ زخمی ہو گیا جسے بعد میں فورسز نے دبوچ کر زندہ گرفتار کرنے میں کامیابی حاصل کی۔ پولیس نے ملٹینٹ کی شناخت زہیر عباس ساکنہ پلوامہ کے طور پر کی ہے اور اس کے قبضے سے ایک پستول بھی برآمد ہوئی ہے۔


تفصیلات کے مطابق یہ انکاؤنٹر اس وقت ہوا جب علاقے میں پولیس ، فوج اور سی آر پی ایف کی مشترکہ پٹرولنگ پارٹی نے ایک ناکہ قائم کیا۔ اس دوران وہاں سے ایک موٹر سائیکل گزری اور اس پر دو افراد سوار تھے۔  اگرچہ وہاں پر موجود سیکورٹی اہلکاروں نے موٹر سائیکل سواروں کو رکنے کا اشارہ کیا۔ تاہم موٹر سائیکل پر سوار ملیٹینٹوں نے فورسز پر فائرنگ کی اور جوابی کارروائی میں ایک ملیٹینٹ زخمی ہو گیا۔ بعد میں سیکورٹی فورسز نے ایک مشترکہ حکمت عملی مرتب کر کے زخمی ملٹینٹ کو زندہ گرفتار کرنے میں کامیابی حاصل کی۔ بعد میں زخمی ملیٹینٹ کو سخت سیکورٹی کے تحت اسپتال میں داخل کرایا گیا جہاں وہ زیر علاج ہے۔


ذرائع کے مطابق دوسرا ملٹینٹ جو موٹر سائیکل پر سوار تھا فرار ہونے میں کامیاب ہوا ہے جسے پکڑنےکے لیے بڑے پیمانے پر تلاش شروع کردی گئی ہے۔ فورسز نے اس آپریشن کو ایک اہم کامیابی قرار دیا ہے کیونکہ یہ انکاؤنٹر جموں سرینگر قومی شاہراہ کے قریب پیش آیا ہے ۔


سیکورٹی ذرائع کے مطابق سیکورٹی اعتبار سے حساس جموں۔ سرینگر قومی شاہراہ کے نزدیک اس طرح کا آپریشن انجام دینا ایک بڑی کامیابی ہے کیونکہ یہ ملیٹینٹ قومی شاہراہ پر کسی تخریبی سرگرمی کو انجام دینے کی کوشش میں ہو سکتے تھے۔ تاہم فورسز کی بروقت کاروائی سے اس طرح کی کسی بھی کوشش کو ناکام بنا دیا گیا۔ پولیس نے اس ضمن میں معاملہ درج کر کے مزید تحقیقات شروع کر دی ہے اور واقعہ کی تمام زاویوں اور باریک بینی سے تحقیقات کی جا رہی ہے۔
Published by: Nadeem Ahmad
First published: Dec 17, 2020 11:26 AM IST