உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    جموں و کشمیر اور لداخ میں گزشتہ 48 گھنٹوں میں 4 مرتبہ زلزلے کے جھٹکے

    علامتی تصویر

    علامتی تصویر

    واضح رہے کہ جموں کشمیر اور لداخ زلزلیاتی پیمانے پر سب سے زیادہ خطرناک پانچ اور چار زون میں آتے ہیں۔ جموں و کشمیر میں ماضی میں زلزلوں نے بے تحاشا تباہی مچائی ہے۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:
      سری نگر۔ جموں و کشمیر اور لداخ میں گزشتہ 48 گھنٹوں کے دوران کم از کم چار مرتبہ زلزلے کے ہلکے جھٹکے محسوس کئے گئے تاہم کسی جانی یا مالی نقصان کی کوئی اطلاع نہیں ہے۔ نیشنل سینٹر فار سیسمولوجی کے مطابق جموں و کشمیر میں ہفتے کی علی الصبح چار بج کر 18 منٹ اور چار بج کر 29 منٹ پر زلزلے کے جھٹکے محسوس کئے گئے۔ ریکٹر اسکیل پر زلزلوں کی شدت بالترتیب چار اعشاریہ ایک اور دو اعشاریہ 8 ریکارڈ کی گئی ہے اور ان کا مرکز جموں و کشمیر کے ہی علاقے تھے۔

      سینٹر فار سیسمولوجی کے مطابق اس سے قبل لداخ میں جمعہ کی رات نو بج کر تین منٹ اور جمعرات کی شام چار بجکر 14 منٹ پر زلزلے کے جھٹکے محسوس کئے گئے۔ ریکٹر اسکیل پر ان زلزلوں کی شدت بالترتیب تین اعشاریہ 8 اور تین اعشاریہ ایک ریکارڈ کی گئی ہے۔ مقامی محکمہ موسمیات نے بھی تصدیق کی ہے کہ جموں و کشمیر اور لداخ میں گذشتہ 48 گھنٹوں کے دوران چار مرتبہ زلزلے کے جھٹکے محسوس کئے گئے۔ تاہم نقصان کی کوئی اطلاع نہیں ہے۔

      اس سے پہلے 2 جولائی 2020 کو زلزلے کے جھٹکے لداخ کے علاوہ جموں وکشمیر کے کچھ علاقوں بھی محسوس کئے گئے تھے۔ دوپہر دو بج کر دو منٹ پر آئے اس زلزلے کے شدت 3.6 تھی۔ اس وقت زلزلے کا مرکز کرگل کا کوئی علاقہ تھا جبکہ اس کی گہرائی 90 کلو میٹر درج کی گئی تھی۔

      واضح رہے کہ جموں کشمیر اور لداخ زلزلیاتی پیمانے پر سب سے زیادہ خطرناک پانچ اور چار زون میں آتے ہیں۔ جموں و کشمیر میں ماضی میں زلزلوں نے بے تحاشا تباہی مچائی ہے۔ 8 اکتوبر 2005 میں ہونے والے قیامت خیز زلزلے کے نتیجے میں ایل او سی کے آر پار زائد از 80 ہزار لوگوں کی موت واقع ہوئی تھی اور بے تحاشا مالی نقصان ہوا تھا۔ ریکٹر اسیکل پر اس زلزلے کی شدت 7.6 ریکارڈ ہوئی تھی۔
      Published by:Nadeem Ahmad
      First published: