ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

جموں و کشمیر : سری نگر میں سی آر پی ایف کی ٹیم پر گرینیڈ حملہ ، تین شہری زخمی ، ملی ٹینٹوں کی تلاش جاری

Jammu Kashmir Terrorist Attack CRPF Team: سرکاری ذرائع نے بتایا کہ مشتبہ ملی ٹینٹوں نے ہفتہ کی شام بربر شاہ میں سی آر پی ایف کے بنکر کو نشانہ بنا کر گرینیڈ پھینکا ۔ انہوں نے بتایا کہ گرینیڈ نشانہ چوک کر سڑک پر ایک زوردار دھماکہ کے ساتھ پھٹ گیا ۔

  • Share this:
جموں و کشمیر : سری نگر میں سی آر پی ایف کی ٹیم پر گرینیڈ حملہ ، تین شہری زخمی ، ملی ٹینٹوں کی تلاش جاری
جموں و کشمیر : سری نگر میں سی آر پی ایف کی ٹیم پر گرینیڈ حملہ ، تین شہری زخمی

سری نگر: سری نگر کے بربر شاہ علاقہ میں ہفتے کو ہونے والے ایک گرینیڈ حملے میں ایک خاتون سمیت تین عام شہری زخمی ہو گئے ہیں ۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ مشتبہ ملی ٹینٹوں نے ہفتہ کی شام بربر شاہ میں سی آر پی ایف کے بنکر کو نشانہ بنا کر گرینیڈ پھینکا ۔ انہوں نے بتایا کہ گرینیڈ نشانہ چوک کر سڑک پر ایک زوردار دھماکہ کے ساتھ پھٹ گیا ۔


ذرائع نے بتایا کہ گرینیڈ کے آہنی ریزوں سے ایک غیر مقامی خاتون سمیت تین عام شہری زخمی ہوگئے ، جنہیں علاج و معالجہ کے لئے اسپتال منتقل کیا گیا ہے۔ انہوں نے مزید بتایا کہ حملے کے فوراً بعد سی آر پی ایف اور جموں و کشمیر پولیس نے علاقے میں وسیع تلاشی آپریشن چلایا ۔ تاہم حملہ آور فرار ہونے میں کامیاب ہوگیا ۔


بتادیں کہ ایک دن پہلے ہی 25 جون کو جموں و کشمیر کے شوپیا ضلع میں سیکورٹی فورسیز کے ساتھ انکاونٹر میں ایک ملی ٹینٹ مارا گیا تھا جبکہ ایک دیگر نے خودسپردگی کردی تھی ۔ پولیس کے ایک افسر نے بتایا کہ ملی ٹینٹوں کی موجودگی کی خفیہ جانکاری ملنے پر سیکورٹی فورسیز نے شوپیاں ضلع میں محاصرہ کرکے تلاشی مہم شروع کی تھی ۔


انہوں نے بتایا کہ ملی ٹینٹوں نے سیکورٹی فورسیز پر گولیاں چلانی شروع کردیں ، جس کے بعد سیکورٹی فورسیز نے بھی جوابی کارروائی کی ۔ انہوں نے بتایا کہ انکاونٹر میں ایک ملی ٹینٹ مارا گیا ۔ انہوں نے بتایا کہ مارے گئے ملی ٹینٹ اور اس کی تنظیم کی شناخت کا پتہ لگایا جارہا ہے ۔

افسر نے بتایا کہ مہم کے دوران ایک دیگر ملی ٹینٹ نے سیکورٹی فورسیز کے سامنے خودسپردگی کردی ۔ انہوں نے بتایا کہ خودسپرگی کرنے والے ملی ٹینٹ کی شناخت شوپیاں ضلع کے رہنے والے ساحل رمضان ڈار کے طور پر ہوئی ہے ۔

نیوز ایجنسی یو این آئی کے ان پٹ کے ساتھ ۔ 
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Jun 26, 2021 08:12 PM IST