உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Jammu and Kashmir: کلگام میں دہشت گردوں نے سرپنچ کا گولی مار کر قتل کردیا

    Jammu Kashmir Kulgam News: سابق وزیر اعلیٰ اس کے بعد ایک اور ٹوئٹ کیا اور کہا کہ اس بحران کی گھڑی میں میں شبیر احمد میر کی فیملی کے تئیں اظہار ہمدردی کرتا ہو کہ انہیں جنت ملے۔ انہوں نے کہا کہ کاش ان کی موت آخری ہوتی، لیکن دکھ کی بات ہے کہ ایسا بالکل بھی نہیں ہوگا۔

    Jammu Kashmir Kulgam News: سابق وزیر اعلیٰ اس کے بعد ایک اور ٹوئٹ کیا اور کہا کہ اس بحران کی گھڑی میں میں شبیر احمد میر کی فیملی کے تئیں اظہار ہمدردی کرتا ہو کہ انہیں جنت ملے۔ انہوں نے کہا کہ کاش ان کی موت آخری ہوتی، لیکن دکھ کی بات ہے کہ ایسا بالکل بھی نہیں ہوگا۔

    Jammu Kashmir Kulgam News: سابق وزیر اعلیٰ اس کے بعد ایک اور ٹوئٹ کیا اور کہا کہ اس بحران کی گھڑی میں میں شبیر احمد میر کی فیملی کے تئیں اظہار ہمدردی کرتا ہو کہ انہیں جنت ملے۔ انہوں نے کہا کہ کاش ان کی موت آخری ہوتی، لیکن دکھ کی بات ہے کہ ایسا بالکل بھی نہیں ہوگا۔

    • Share this:
      سری نگر: جموں وکشمیر (Jammu Kashmir) کے کلگام ضلع (kulgam District) میں جمعہ کے روز دہشت گردوں نے ایک سرپنچ کا گولی مار کر قتل کردیا۔ افسران نے یہ جانکاری دی۔ ایک افسر نے بتایا، ’جنوبی کشمیر کے کلگام ضلع کے اڈورا علاقے میں رات تقریباً 8 بجکر 50 منٹ پر دہشت گردوں نے شبیر احمد میر کو ان کے گھر کے قریب گولی ماردی۔

      انہوں نے کہا کہ شبیر احمد میر کو اسپتال لے جایا گیا، جہاں ڈاکٹروں نے انہیں مردہ قرار دے دیا۔ شبیر احمد میر آزاد سرپنچ تھے۔ افسران نے بتایا کہ حادثۃ کی اطلاع کے بعد پورے علاقے کی گھیرا بندی کردی گئی تھی اور حملہ آوروں کی تلاش جاری ہے۔

      سرپنچ کے قتل کے بعد ریاست کے سابق وزیر اعلیٰ عمر عبداللہ نے ٹوئٹ کرکے اظہار افسوس کیا۔ انہوں نے اپنے ٹوئٹ میں لکھا کہ سرپنچ شبیر احمد میر کے قتل سے کافی دکھ ہوا اور حیران ہوں۔ انہوں نے کہا کہ سیاسی کارکنان مارے جاتے ہیں اور ہم اظہار تعزیت کرتے ہیں اور اس کے بعد زندگی چلتی رہتی ہے اور پھر سے ویسا ہی حادثہ ہوتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ سب سے بڑے دکھ کی بات یہ ہے کہ کچھ بھی بدلتا نہیں۔

      یہ بھی پڑھیں۔

      Jammu and Kashmir: پانچ ریاستوں کا انتخابی نتائج جموں وکشمیر کے سیاسی بیانیہ کو کرسکتاہے متاثر

      سابق وزیر اعلیٰ نے اس کے بعد ایک اور ٹوئٹ کیا اور کہا کہ اس بحران کی گھڑی میں، میں شبیر احمد میر کی فیملی کے تئیں اظہار ہمدردی کرتا ہوں اور دعا کرتا ہوں کہ انہیں جنت ملے۔ انہوں نے کہا کہ کاش ان کی موت آخری ہوتی، لیکن دکھ کی بات ہے کہ ایسا بالکل بھی نہیں ہوگا۔

      واضح رہے کہ اس سے قبل بھی بدھ کو دہشت گردوں نے ایک سرپنچ کا گولی مار کر قتل کردیا تھا۔ اس سرپنچ کی پہچان سمیر بھٹ کے طور پر ہوئی تھی۔ اس وقت بھی ریاستی جماعتوں نے سرپنچ کے قتل پر سخت تنقید کی تھی۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: