ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

وادی کشمیر میں بہت سے لوگ اپنے گھروں کے صحن یا آنگن میں سبزی یا پھل کی کر رہے ہیں کاشت

ماہرین کہتے ہیں کہ گھریلو باغبانی ایک ایسا شوق ہے جوڈپریشن کو کم کرتا ہے ، آنکھوں کو فرحت بخشتا ہے، خالص غذا کی فراہمی کا باعث بنتا ہے اور جیب پر بوجھ کو کم کرتا ہے۔

  • Share this:
وادی کشمیر میں بہت سے لوگ اپنے گھروں کے صحن یا آنگن میں سبزی یا پھل کی کر رہے ہیں کاشت
وادی کشمیر میں بہت سے لوگ اپنے گھروں کے صحن یا آنگن میں سبزی یا پھل کی کر رہے ہیں کاشت

وادی کشمیر میں بہت سے لوگ اپنے گھروں کے صحن یا آنگن کو ضائع کئے بغیر  سبزی یا پھل کی کاشت کررہے ہیں ۔ اعلیٰ تعلیم یافتہ کئی نوجوان اور دیگر لوگ اپنے گھروں  میں  گملوں، پلاسٹک کے تھیلوں، پرانے ٹائر، بوتلوں، لکڑی اور پلاسٹک کے کریٹ میں سبزیاں اگاکر خوب فائدہ اٹھا رہے ہیں۔ ماہرین کہتے ہیں کہ گھریلو باغبانی  ایک ایسا شوق ہے جو ڈپریشن کو کم کرتا ہے ، آنکھوں کو فرحت بخشتا ہے، خالص غذا کی فراہمی کا باعث بنتا ہے اور جیب پر بوجھ کو کم کرتا ہے۔ اس طرح گھر بیٹھے تازہ سبزی بھی مل جائے گی اور ایک بہترین مشغلہ بھی ہاتھ آجائے گا۔


گھروں کے صحن یا آنگن میں زیادہ تر پھول کے پودے اُگائے جاتےہیں لیکن وادی میں  اب لوگ  گھروں کے صحن یا آنگن  کو ضائع کرنے کے بجائے ان  میں سے تازہ سبزی اگانے کی پہل کرتے ہیں ۔ایسی ہی  ایک پہل  ٹنگمرگ کے خونچی پورہ کے رہنے والے تعلیم یافتہ  نوجوان  گوہر احمد لون کررہے ہیں ۔گوہر نے نیوز 18اردو کو بتایا کہ کشمیر میں تعمیراتی کاموں اور زیادہ تر مکانات کی تعمیر سے  دن بہ دن یہاں کاشت کاری کے لئے  زمین کم  اور مسدود  ہورہی ہے۔ انہوں نے مزید بتایا کہ وہ دن دور نہیں کہ جب یہاں کاشت کاری کے لئے زمین کا ایک ٹکڑا بننا محال ہوگا اسی تناظرمیں انہوں نے یہ پہل شروع کی جس میں گھروں کے صحن کے اندر سبزی یادوسرے پھلوں کے درختوں کو اُگایا جاسکے۔


دوسرا پہلو یہ ہے کہ بازاروں میں کھانے پینے کی چیزوں کی بڑھتی ہوئی قیمتوں کے باعث لوگ  اپنے گھروں میں ہی سبزیاں اور پھلوں کی کاشت کرسکتے ہیں ۔گوہر  اپنے گھر کے صحن میں ایک انچ زمین کو ضائع نہیں ہونے دے رہا ہے ۔گوہر گھر کے آنگن میں گملوں،پلاسٹک کے تھیلوں،پرانے ٹائر، بوتلوں، لکڑی اور پلاسٹک کے کریٹ میں سبزیاں اگارہے ہیں ۔ گوہر احمد ان ڈبوں میں بند گوبھی،ٹماٹر ،بینگن،کدو، پالک،کھیرا،ساگ ،شملہ مرچ،مولی،مکئی وغیرہ کے ساتھ ساتھ مشروم کی بھی کاشت کررہے ہیں ۔گوہر کاکہناتھا کہ لوگ سبزیاں اپنے گھر وں کی چھت ، فلیٹ کی گیلری میں بھی اُگا سکتے ہیں۔ گوہر احمد اپنے گھر کی سلیب یعنی چھت پر بھی سبزی اگارہے ہیں۔


حیران کن بات یہ ہے کہ گوہر  نے سیمنٹ کی  چھت پر ہی  پھل کے درخت بھی اگائے ہیں جن میں خاص کر ناشپاتی اور اخروٹ کے درخت ہیں ۔گوہر سیمنٹ کی سلیب  پر نو انچ کی مٹی ڈال کر اس میں کئی اقسام کی سبزیاں اگارہے ہیں اور پھل کے درخت بھی اگا کر خوب پھلوں کا مزہ لے رہے ہیں ۔اس طرح کی باغبانی کےلئے سرکار اور متعلقہ محکمہ نوجوانوں کے لئے روزگار کے وسائل فراہم کرنے کے لئے مختلف اسکیمیں بھی متعارف کرتے ہیں ۔جس کا فائد ہر کوئی فرد اٹھا سکتا ہے ۔ گوہر احمد لون وادی کے بے روزگار اعلیٰ تعلیم یافتہ نوجوانوں کو صلاح  دیتے ہیں کہ وہ اس طرح کے  یونٹس قائم کرکے اپنا  روزگار  خود حاصل کرسکتے ہیں۔
Published by: Nadeem Ahmad
First published: Aug 10, 2020 03:02 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading