உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    جموں۔کشمیر: شوپیاں میں سکیورٹی فورسز اور دہشت گردوں کے درمیان انکاؤنٹر، دو دہشت گرد ڈھیر

    Youtube Video

    Shopian Encounter: رپورٹ کے مطابق آئی جی پی کشمیر نے کہا کہ مارے گئے دہشت گردوں میں سے ایک کی شناخت شوپیاں کے جان محمد لون کے طور پر کی گئی ہے۔ وہ حال ہی میں ضلع کولگام میں 2 جون کو بینک منیجر وجے کمار کے قتل میں ملوث تھا۔

    • Share this:
      شوپیاں۔ جموں و کشمیر کے شوپیان کے کنجیلور علاقے میں سیکورٹی فورسز اور دہشت گردوں کے درمیان انکاؤنٹر شروع ہوا ہے۔ اس انکاؤنٹر میں دہشت گرد تنظیم لشکر طیبہ کے دو دہشت گرد سیکورٹی فورسز کے ہاتھوں مارے گئے۔ خبر رساں ایجنسی اے این آئی کی رپورٹ کے مطابق آئی جی پی کشمیر نے کہا کہ مارے گئے دہشت گردوں میں سے ایک کی شناخت شوپیاں کے جان محمد لون کے طور پر کی گئی ہے۔ وہ حال ہی میں ضلع کولگام میں 2 جون کو بینک منیجر وجے کمار کے قتل میں ملوث تھا۔ دوسرے دہشت گرد کی شناخت کی جا رہی ہے۔

      وہیں گزشتہ کل سری نگر کے علاقے بومینہ میں پولیس نے لشکر طیبہ کے دو دہشت گردوں کو ڈھیر کر دیا تھا۔ تاہم اس دوران ایک پولیس اہلکار زخمی بھی ہوا۔ پولیس نے بتایا تھا کہ بومینہ کے علاقے میں دہشت گردوں کی موجودگی کی اطلاع پر علاقے کو گھیرے میں لے کر سرچ آپریشن چلایا گیا تھا۔ اس دوران دہشت گردوں نے فائرنگ شروع کر دی تھی۔ کشمیر زون کے انسپکٹر جنرل آف پولیس وجے کمار نے بتایا ہے کہ برآمد شدہ دستاویزات کے مطابق ایک دہشت گرد کی شناخت عبداللہ گوری کے نام سے ہوئی ہے جو فیصل آباد، پاکستان کا رہائشی تھا۔

      دوسرے دہشت گرد کی شناخت اننت ناگ ضلع کے عادل حسین کے طور پر ہوئی ہے۔ عادل سال 2018 میں پاکستان گیا تھا۔ پولیس افسر نے کہا کہ یہ دہشت گردوں کا وہی گروپ ہے، جو سوپور انکاؤنٹر سے فرار ہوا تھا۔ خبر رساں ایجنسی اے این آئی کی رپورٹ کے مطابق انسپکٹر جنرل آف پولیس نے بتایا ہے کہ پاکستان میں مقیم ہینڈلرز نے اننت ناگ کے رہنے والے دہشت گرد عادل حسین میر کے ساتھ دو پاکستانی لشکر دہشت گردوں کو بھیجا تھا۔ یہ سبھی 2018 سے پاکستان میں تھے اور امرناتھ یاترا پر حملہ کرنے کی تیاری میں تھے۔ تینوں مارے گئے ہیں۔ آپ کو بتاتے چلیں کہ 7 جون کو پاکستان کے لاہور کے ہنجالا میں رہنے والے ایک دہشت گرد کو سوپور میں سیکورٹی فورسز نے مار گرایا تھا۔

      Pakistan سے بھیجے گئے  2 دہشت گرد ڈھیر، امرناتھ یاترا پر حملے کی فراق میں تھے

      Amarnath یاتریوںکی نقل و حمل پر نظر رکھنے کیلئے ریڈیو فریکوئنسی چپ گاڑیوں میں ہوں گی نصب

      میڈیا رپورٹس کے مطابق رواں سال سیکیورٹی فورسز کے ہاتھوں 102 دہشت گرد مارے جاچکے ہیں۔  ان میں لشکر سے وابستہ دہشت گردوں کی تعداد سب سے زیادہ ہے۔ ساتھ ہی مارے گئے ان دہشت گردوں میں سے 73 مقامی اور 29 پاکستانی دہشت گرد ملوث ہیں۔ اس کے ساتھ ہی جون کے 14 دنوں میں سیکورٹی فورسز کے ہاتھوں 11 دہشت گرد مارے گئے ہیں۔ اس سال مئی میں سب سے زیادہ 27 دہشت گرد مارے گئے اور سب سے کم 7 دہشت گرد فروری میں مارے گئے۔ منگل کو جموں و کشمیر کی سری نگر پولیس کو بڑی کامیابی ملی ہے۔ جموں و کشمیر پولیس نے لشکر طیبہ کے دو دہشت گردوں کو مار گرایا۔ تاہم اس تصادم میں ایک پولیس اہلکار بھی زخمی ہوا۔ خبر رساں ایجنسی اے این آئی کے مطابق پولیس نے اطلاع دی تھی کہ بمنہ علاقے میں دہشت گردوں کی موجودگی کی اطلاع ملنے پر محاصرے کی کارروائی کی گئی۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: