ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

جموں وکشمیر: بے بنیاد خبریں پھیلانے والوں کے خلاف کارروائی کا سخت انتباہ

ایک پنڈت کا کہنا تھا کہ اس طرح کی بے بنیاد خبریں پھیلانے والوں کےخلاف کڑی کاروائی ہونی چاہئے۔

  • Share this:
جموں وکشمیر: بے بنیاد خبریں پھیلانے والوں کے خلاف کارروائی کا سخت انتباہ
جموں وکشمیر: بے بنیاد خبریں پھیلانے والوں کو سخت انتباہ

جموں کشمیر کے کپوارہ کے وٹر کھنی علاقے میں ایک مندر گرائے جانے  سے متعلق سوشل میڈیا میں آئی خبر بے بنیاد نکلی اور اس سلسلے میں ڈپٹی کمشنر کپوارہ کے ساتھ ساتھ خود پنڈتوں نے بھی خبر کو بے بنیاد قرار دیا۔ کپوارہ ضلع کے وٹر کھنی علاقے میں برسوں سے ندی کے کنارے مندر آباد تھا جو  پنڈتو ں کے ہجرت کے بعد یہ مندر کافی عرصہ تک ویران رہا جس کے دوران مقامی مسلمان اس کی دیکھ بھال کرتے رہے۔ اس دوران گزشتہ روز سوشل میڈیا پر اس مندر کی گری ہوئی تصویر وائرل کی گئی اور اس کے وائرل ہونے کےساتھ ہی اس کی تحقیقات کےلئے مقامی پنڈت بھائی مندر کی جگہ کا معائنہ کرنے لگے جہاں انہوں نے مندر کو گرا ہوا دیکھاجو کہ بقول ان کے خود ہی گرا ہوا تھا۔


اس سلسلے میں آج پنڈتوں کے ایک وفد نے آخر اس خبر کی وضاحت کرتے ہوئے کہا ہے کہ چونکہ مندر کافی پرانا ہے اور وقت کے ساتھ ساتھ وہ خستہ بھی ہوتا رہا اور مندر کی یہ عمارت آج خود ہی گر گئی۔ پنڈتوں نے نیوز ایٹین کو بتایا کہ جس کسی نے بھی یہ خبر وائرل کی اس نے کوئی نیک کام نہیں کیا کیونکہ بےبنیاد خبر پھیلا کر پنڈتوں او ر مسلمانوں کے درمیان صدیوں پرانے بھائی چارے کو زک پہنچنے کا امکان پیدا ہوگیا تھا۔ ایک پنڈت کا کہنا تھا کہ اس طرح کی بے بنیاد خبریں پھیلانے والوں کےخلاف کڑی کاروائی ہونی چاہئے۔ ادھر مقامی لوگو ں کا کہنا تھا کہ مندر کو کسی نے نہیں گرایا بلکہ وقت کے ساتھ ساتھ مندر کی عمارت خستہ حالی کی شکار ہوئی اور آج وہ خود ہی گر گئی۔ ان کا کہنا تھا کہ مندر کی زمین بھی پنڈت بھائیوں کی ہے لہذا اس کو گرانے کا کوئی جواز نہیں ہے اور ایسی خبریں محض بھائی چارے کو زک پہنچانے کے سوا کچھ نہیں ہیں۔


ادھر ڈپٹی کمشنر کپوارہ انشل گرک نے بھی مندر گرائے جانے کی خبر کو مسترد کرتے ہوئے کہاکہ یہ مندر بہت ہی پرانا ہے اوراس کی عمارت وقت وقت کے ساتھ ناگہانی آفات کا سامنا کرتی رہی ہے۔ کبھی طوفانی ہوائیں چلی ہیں، تو کبھی بارشوں اور برفباری کے دوران بھی اس کی خستہ حالی میں اضافہ ہوگیا اور یوں وقت کے ساتھ اب اس کی عمارت کمزور پڑ گئی جس کے باعث وہ خود ہی گر گئی ہے۔ انہوں نے سوشل میڈیا کا استعمال کرنے والے لوگوں کو مشورہ دیا ہے کہ وہ خبر کی تصدیق کریں اور بعد میں اس کو اپ لوڈ کریں کیونکہ کبھی کبھی معمولی سی ٖبے بنیاد خبر سوشل میڈیا میں آنے کے بعد بڑا بھونچال مچا سکتی ہے اور ایسے میں امن وقانون کو بھی خطرہ پیدا ہوجاتا ہے ۔انہوں نے کہاکہ اس طرح کی بے بنیاد خبر پھیلانے والوں کےخلاف سخت کاروائی کی جائے گی۔

Published by: Nadeem Ahmad
First published: Aug 11, 2020 01:42 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading