ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

وادی کشمیر میں بارہویں جماعت کے شاندار نتائج ، نامساعد حالات اور غیر یقینی صورتحال میں بھی طلبہ کی اچھی کارکردگی

طلبہ نے اپنی محنت اور لگن سے بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کیا اور کامیابی کا مجموعی تناسب 76 فیصد رہا جو کہ گذشتہ سال کے مقابلہ توقع سے زیادہ ہی رہا۔

  • Share this:
وادی کشمیر میں بارہویں جماعت کے شاندار نتائج ، نامساعد حالات اور غیر یقینی صورتحال میں بھی طلبہ کی اچھی کارکردگی
وادی کشمیر میں بارہویں جماعت کے شاندار نتائج

وادی کشمیر میں پانچ اگست کے بعد نا مساعد حالات اور غیر یقینی صورتحال کی اب تک کی سب سے طویل مدت رہی ہے۔ وادی میں کشیدگی اور افراتفری کے بیچ بارہویں جماعت  کے امتحانات منعقد ہوئے تھے۔ نصاب نا مکمل رہنے کے باوجود طلبہ کو امتحان میں شرکت کرنی پڑی ، لیکن طلبہ نے اپنی محنت اور لگن سے بہترین  کارکردگی کا مظاہرہ کیا اور کامیابی کا مجموعی تناسب 76 فیصد رہا جو کہ گذشتہ سال کے مقابلہ توقع  سے زیادہ ہی رہا۔ بارہویں جماعت  کے امتحانات میں 46599 اسٹوڈنٹس نے حصہ لیا جن میں 23606 طلبہ  اور22993 طالبات شامل ہیں ۔ طلبہ کی کامیابی کا تناسب 75 فیصد اورطالبات کا 77 فیصد رہا ہے ۔ اس سال سرکاری اسکولوں کی کارکردگی بھی بہتر ہوئی ہے اور ان اسکولوں میں کامیابی کی شرح 74 فیصد رہی ہے۔


نا مساعد حالات کی وجہ سےاسکولوں اور کوچنگ سینٹرس میں تعلیمی سرگرمیاں شدید طور پر متاثر رہیں ۔ تعلیم کے حصول کا ایک اور اہم ذریعہ انٹرنیٹ بھی مستقل بند رہا ۔ ایسے میں   بارہویں کے ان نتائج پر نہ صرف طلبہ وطالبات بلکہ انکے اہل خانہ، مقامی افراد اور تعلیمی شعبہ سے وابستہ افراد نے مسرت کا اظہار کیا ۔


سائنس اسٹریم میں دو طالبات حمیرا رشید اور ایشا بشیر نے 98 فیصد نمبرات کے ساتھ پہلی پوزیشن حاصل کی ہے ۔ کامرس میں عیسیٰ گلزار نے 97 فیصد نمبرات کے ساتھ اول مقام  حاصل کیا ہے ۔ ہوم سائنس میں ایک سرکاری اسکول کی طالبہ منشا نے نمایاں مقام حاصل کیا تو آرٹس میں عطیہ تبسم کو پہلا مقام ملا ہے ۔ ہمہامہ بڈگام کی ٹاپر حمیرا رشید نے  نیوز 18 اردوسے بات کرتے ہوئے اپنی کامیابی پر والدین اور اساتذہ کا شکریہ ادا کیا ۔ حمیرا نے کہا کہ انھوں نے سچی لگن اور پوری توجہ کے ساتھ  پڑھائی کی تھی ۔ حمیرا رشید نے دیگر طلبہ کو بھی اعتماد کے ساتھ تعلیم کے میدان میں آگے بڑھنے کا مشورہ دیا ۔

First published: Jan 23, 2020 09:34 PM IST