உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    جموں وکشمیر: کولگام میں استانی کے قتل کے خلاف کشمیری پنڈت ملازمین نے کیا احتجاج

    جموں وکشمیر کولگام میں اسکول ٹیچر رجنی بلا کے دہشت گردوں کے ہاتھوں قتل کی خبر کے بعد ہی مٹن اننت ناگ میں مقیم کشمیری پنڈت ملازمین نے احتجاج کیا۔ پی ایم پیکیج ملازمین نے مسلسل قتل کے خلاف سڑک پر احتجاجی مارچ کیا اور بمزوہ کے مقام پرکھنہ بل-پہلگام سڑک پر دھرنا دیا۔

    جموں وکشمیر کولگام میں اسکول ٹیچر رجنی بلا کے دہشت گردوں کے ہاتھوں قتل کی خبر کے بعد ہی مٹن اننت ناگ میں مقیم کشمیری پنڈت ملازمین نے احتجاج کیا۔ پی ایم پیکیج ملازمین نے مسلسل قتل کے خلاف سڑک پر احتجاجی مارچ کیا اور بمزوہ کے مقام پرکھنہ بل-پہلگام سڑک پر دھرنا دیا۔

    جموں وکشمیر کولگام میں اسکول ٹیچر رجنی بلا کے دہشت گردوں کے ہاتھوں قتل کی خبر کے بعد ہی مٹن اننت ناگ میں مقیم کشمیری پنڈت ملازمین نے احتجاج کیا۔ پی ایم پیکیج ملازمین نے مسلسل قتل کے خلاف سڑک پر احتجاجی مارچ کیا اور بمزوہ کے مقام پرکھنہ بل-پہلگام سڑک پر دھرنا دیا۔

    • Share this:
    کولگام: جموں وکشمیرکولگام میں اسکول ٹیچر رجنی بلا کے دہشت گردوں کے ہاتھوں قتل کی خبرکے بعد ہی مٹن اننت ناگ میں مقیم کشمیری پنڈت ملازمین نے احتجاج کیا۔ پی ایم پیکیج ملازمین نے مسلسل قتل کے خلاف سڑک پر احتجاجی مارچ کیا اور بمزوہ کے مقام پرکھنہ بل-پہلگام سڑک پر دھرنا دیا۔ دھرنے کی وجہ سے شاہراہ پر کافی دیر تک ٹریفک کی نقل و گے حمل میں خلل پیدا ہوگیا، تاہم صرف اسکول بسوں اور ایمرجنسی مریضوں کو آگے بڑھنے کی اجازت دی گئی۔

    احتجاجیوں نے کہا کہ سرکار اور انتظامیہ کی حالیہ یقین دہانیوں کے باوجود آج پھر سے ٹارگٹ کلنگ کی گئی۔ احتجاجیوں نے سرکار سے انہیں فوری طور پرجموں منتقل کرنے کا مطالبہ کیا۔ رنجن جوتشی نامی ایک احتجاجی پی ایم پیکیج ملازم نے الزام لگایا کہ سرکار انہیں تحفظ فراہم کرنے میں ناکام ہوگئی ہے جبکہ حال ہی میں وہ اپنے خدشات کو لے کر جموں وکشمیر کے ایل جی منوج سنہا سے بھی ملاقات ہوئی، لیکن وہ میٹنگ بھی آج بے معنی ثابت ہوگئی ہے، جب ایک اور ہندو خاتون کو بے دردی سے قتل کر دیا گیا۔

    رنجن نے کہا کہ ان سے ملنے کے لئے آئی جی پی کشمیر اور ڈویژنل کشمیر بھی آئے تھے، جنہوں نے انہیں یہ یقین دلایا تھا کہ بڈگام میں قتل ہوئے راہل بٹ کی ہلاکت آخری ٹارگٹ کلنگ ہوگی، لیکن اس کے بعد مسلم خاتون امبرین بٹ کو قتل کیا گیا اور آج رجنی کو ان تازہ قتل کی وارداتوں سے یہ بات عیاں ہوتی ہے کہ سرکار یہاں پر جاری بے گناہوں کا قتل عام کو روکنے میں ناکام ہوگئی ہے۔ رنجن نے مزید بتایا کہ ایسے حالات میں اقلیتوں کا یہاں پر رہنا مشکل سے مشکل تر بن گیا ہے، اس لئے وہ سرکار کو الٹی میٹم دیتے ہیں کہ انہیں 24 گھنٹے کے اندرکشمیر سے سخت حفاظتی بندو بست کے بیچ جموں منتقل کیا جائے۔

    یہ بھی پڑھیں۔

    جموں وکشمیر: کشمیری پنڈت ملازمین نے حکومت کو دیا الٹی میٹم، 24 گھنٹے میں کشمیر سے باہر نکالنے کا مطالبہ

    دوسری جانب، کولگام میں استانی کے قتل کی ہرسو مذمت ہو رہی ہے۔ بی جے پی کے یوٹی نائب صدر، صوفی محمد یوسف نے کولگام میں دہشت گردوں کے ہاتھوں ہندو ٹیچرکے قتل کو پاکستان کی بوکھلاہٹ قرار دیتے ہوئے اسے سیکورٹی کی چوک قرار دیا۔

    اننت ناگ میں وزیراعظم نریندر مودی کے آٹھ سالہ اقتدار مکمل ہونے کے سلسلے میں بی جے پی اجلاس سے خطاب کے بعد صوفی نے ان باتوں کا اظہار کیا۔ انہوں نے کہا کہ راہل بٹ کی ہلاکت کے بعد اقلیتوں کے تحفظ کے لئے ایل جی نے یقین دہانی کرائی تھی لیل۔ اس کے باوجود بھی اس طرح کا قتل ہونا یقینی طور پرسیکورٹی اعتبار سے ایک بہت بڑی چوک ہے جسکو ٹھیک کرنے کی ضرورت ہے۔
    Published by:Nisar Ahmad
    First published: