உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ملیٹنسی متاثرین کا حکومت سے انصاف کا مطالبہ، ادھیڑ عمر کے تیج کرشن کول نے سنائی درد بھری داستاں

    Youtube Video

    تیج کے گھر والوں کی طرح کئی کشمیری پنڈت خاندان، ملی ٹنسی کی مار جھیل رہے ہیں۔ ان کا کہنا ہےکہ حکومت قصورواروں کو سزا دیتے ہوئے متاثرین کے ساتھ انصاف کرے۔

    • Share this:
      وادی کشمیر میں تین دہائیوں سے جاری ملی ٹنسی نے کئی افراد کی زندگیوں کو شدید طور پر متاثر کیا ہے۔ ملی ٹنسی کے دوران کئی کشمیری پنڈتوں کی جان گئی اور ان کے اہل خانہ کو اب بھی مختلف مسائل سے دو چار ہونا پڑرہا ہے۔ جگتی مائگرینٹ ٹاؤن شپ میں مقیم ایسے ہی ایک خاندان کے بارے میں جانتے ہیں۔

      ادھیڑ عمر کے تیج کرشن کول بجبہاڑہ اننت ناگ کے رہنے والے ہیں تاہم اب وہ جگتی مائگرینٹ ٹاؤن شپ جموں میں مقیم ہیں۔ تیج کرشن، کافی برہم و مایوس ہیں اور اِس کے لئے ان کے پاس کئی وجوہات ہیں۔ تیج کرشن کے مطابق۱۹۹۳ میں ملی ٹنٹ حملے میں ان کے چھوٹے بھائی کی موت ہوگئی تھی جس سے ان کے والد کو گہرا صدمہ پہنچا تھا۔ بعد میں ان کا خاندان جموں منتقل ہوگیا لیکن یہاں انھیں نِت نئے مسائل کا سامنا رہا۔

      تیج کرشن کا کہنا ہے کہ ریلیف کی قلیل رقم سے وہ اپنی والدہ، اہلیہ اور دو بچیوں کی گذر بسر کا انتظام کررہے ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ ملی ٹنسی میں چھوٹے بھائی کو گنوانے کے باوجود انھیں کوئی معاوضہ یادیگر امداد حکومت سے نہیں ملی۔



      تیج کرشن کی والدہ موہنی کول مختلف بیماریوں میں مبتلا ہیں۔ ان کے علاج پر بھاری رقم خرچ ہورہی ہے۔ انہوں نے بازآبادکاری کو لیکر حکومت کی سنجیدگی پر سوال کھڑے کئے ہیں۔ تیج کے گھر والوں کی طرح کئی کشمیری پنڈت خاندان، ملی ٹنسی کی مار جھیل رہے ہیں۔ ان کا کہنا ہےکہ حکومت قصورواروں کو سزا دیتے ہوئے متاثرین کے ساتھ انصاف کرے۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: