ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

پولیس و دیگر حفاظتی عملہ سیاسی ورکروں پر کئے جانے والے جان لیوا حملوں کو روکنے میں ناکام: بشیر منظر

روزنامہ کشمیر ایمیجز کے چیف ایڈیٹر بشیر منظر کا کہنا ہے کہ پولیس اور دیگر حفاظتی عملہ سیاسی ورکروں پر کئے جانے والے جان لیوا حملوں کو روکنے میں ناکام رہی ہے۔

  • Share this:
پولیس و دیگر حفاظتی عملہ سیاسی ورکروں پر کئے جانے والے جان لیوا حملوں کو روکنے میں ناکام: بشیر منظر
روزنامہ کشمیر ایمیجز کے چیف ایڈیٹر بشیر منظر کا کہنا ہے کہ پولیس اور دیگر حفاظتی عملہ سیاسی ورکروں پر کئے جانے والے جان لیوا حملوں کو روکنے میں ناکام رہی ہے۔

جموں و کشمیر میں دہشت گردوں کی طرف سے سیاسی ورکروں کو قتل کرنے کا سلسلہ تھمنے کا نام نہیں لے رہا ہے۔ بی جے پی لیڈر راکیش پنڈتا (Rakesh Pandita) دہشت گردوں کی اس کاروائی کا تازہ شکار بنے۔ دہشت گردوں نے تین جون کو جموں و کشمیر کے ترال علاقے میں بی جے پی سے وابستہ ایک میونسپل کونسلر راکیش پنڈتا کو گولی مار کر ہلاک کردیا۔ بی سیاسی تجزیہ نگار مانتے ہیں کہ دہشت گردوں کی طرف سے نہتے شہریوں کو قتل کرنا انتظامیہ اور حفاظتی ایجنسیوں کی ناکامی کو اجگر کرتا ہے۔ روزنامہ کشمیر ایمیجز کے چیف ایڈیٹر بشیر منظر کا کہنا ہے کہ پولیس اور دیگر حفاظتی عملہ سیاسی ورکروں پر کئے جانے والے جان لیوا حملوں کو روکنے میں ناکام رہی ہے۔

مقتول کونسلر راکیش پنڈت کے قتل کے سلسلے میں پولیس کی طرف سے جاری کئے گئے بیان پر بشیر منظر نے کہا کہ یہ بیان جاری کرکے پولیس اپنی ذمہ داریوں سے بچنے کی کوشش کر رہی ہے۔ واضح رہے کہ پولیس نے یہ بیان جاری کیا تھا کہ مقتول کونسلر اپنے ذاتی محافظوں کے بغیر ترال کے علاقے میں گئے تھے جس کی وجہ سے ملی ٹنٹ انہیں قتل کرنے میں کامیاب ہوگئے۔


نیوز ایٹین اردو کے ساتھ بات کرتے ہوئے بشیر منظر نے کہا " مُجھے بنائے کہ اگر ایک کونسلر ایک محلے یا گائوں میں پہنچتا ہے تو کیا علاقے کی پولیس کو اسبارے میں بروقت کوئی جانکاری کیوں نہیں مل پائی تاکہ ان کی حفاظت کے لئے اقدامات کئے جاتے۔ انہوں نے سوال کیا کہ جب علاقے میں موجود ملی ٹنٹوں کو یہ جانکاری حاصل ہوئی تو مقامی پولیس کو کیوں نہیں۔" کشمیر وادی میں ٹارگیٹ کیلنگس کے واقعات کی وجوہات سے متعلق پوچھے گئے ایک سوال کے جواب میں بشیر منظر نے کہا کہ اسکے لئے حکومت ذمہ دار ہے۔


بی جے پی لیڈر راکیش پنڈتا (Rakesh Pandita) دہشت گردوں کی اس کاروائی کا تازہ شکار بنے۔
بی جے پی لیڈر راکیش پنڈتا (Rakesh Pandita) دہشت گردوں کی اس کاروائی کا تازہ شکار بنے۔


انہوں نے کہا کہ سال دو ہزار اُنیس میں دفعہ تین سو ستھر کی منسوخی کے بعد سرکار نے یہ دعوی کیا تھا کہ کشمیر میں اب ملی ٹینسی ختم ہوگئی ہے بشیر منظر نے کہا کہ فوج اور دیگر سیکورٹی عملے کے کیمپوں پر دہشت گردانہ حملے نہ ہونا یہ بات ظاہر نہیں کرتا کہ جموں و کشمیر میں ملیٹینسی کا خاتمہ ہوچکا ہے کیونکہ ملی ٹنٹوں کے ہاتھوں نہتے عوام کی ہلاکتوں کا سلسلہ ابھی تھما نہیں ۔ بشیر منظر نے کہا کہ سرکار کو چاہئیے کہ وہ عام شہریوں کی حفاظت کرنے کے لئے بیانات جاری کرنے کے بجائے شہری ہلاکتوں کو روکنے کے لئے مواثر اقدامات کرے۔

جموں سے شایع ہونے والے روزنامہ تسکین کے مُدیر اعلی سُہیل کا ظمی کا کہنا ہے کہ بی جے پی کے لیڈران ملی ٹنٹوں کے نشانے پر ہیں۔ کیونکہ دہشت گرد تنظیموں اور علحیدگی پسند طاقتوں کو بھارتی جنتا پارٹی کا ایجنڈا راس نہیں آتا۔ نیوز ایٹین اردو کے ساتھ بات کرتے ہوئے سُہیل کاظمی نے کہا کہ قومی دھارے والے سیاسی لیڈران کے ساتھ ساتھ بی جے پی کے نو منتخبہ عوامی نمائیندوں کی حفاظت کے لئے مواثر اقدامات کئے جانے کی اشد ضرورت ہے۔جے پی کے اعداد و شمار کے مطابق گزشتہ دو برسوں میں پارٹی کے 17لیڈران کو ملی ٹنٹوں نے ہلاک کیا ہے۔ جن میں سے آٹھ کا تعلق جنوبی کشمیر ، سات کا تعلق شمالی کشمیر جبکہ مزید دو کا تعلق وسطی کشمیر سے تھا۔
Published by: Sana Naeem
First published: Jun 03, 2021 04:01 PM IST