உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    کولگام میں 2سے 3دہشت گردوں کے چھپے ہونے کا اندیشہ، 1جوان زخمی، Encounter جاری

    Youtube Video

    kulgam encounter: دو سے تین دہشت گردوں کے چھپے ہونے کی خبر ہے۔ فوج اور پولیس نے دہشت گردوں کو گھیرے میں لے لیا ہے۔ جموں و کشمیر پولیس نے اطلاع دی ہے کہ کولگام میں دہشت گردوں کے ساتھ انکاؤنٹر جاری ہے۔

    • Share this:
      kulgam encounter:جموں و کشمیر کے کولگام ضلع کے کاٹھ پورہ علاقے میں بدھ کی صبح سے سیکورٹی فورسز اور دہشت گردوں کے درمیان تصادم شروع ہو گیا ہے۔ اس تصادم میں ایک جوان زخمی ہوگیا ہے۔ 2 سے 3 دہشت گردوں کے چھپے ہونے کی خبر ہے۔ فوج اور پولیس نے دہشت گردوں کو گھیرے میں لے لیا ہے۔ جموں و کشمیر پولیس نے اطلاع دی ہے کہ کولگام میں دہشت گردوں کے ساتھ تصادم جاری ہے۔ اس آپریشن میں فوج اور پولیس دونوں ایک ساتھ موجود ہیں۔ آپ کو بتا دیں کہ 24 جولائی کو کولگام کے رام پورہ علاقے میں سیکورٹی فورسز اور دہشت گردوں کے درمیان تصادم ہوا تھا۔ اسی دوران، کچھ دن پہلے، دہشت گرد تنظیم لشکر طیبہ میں بھرتی ہونے والے دو نوجوانوں نے جموں و کشمیر کے کولگام ضلع میں اپنے والدین کی جذباتی اپیل کے بعد سیکورٹی فورسز کے سامنے ہتھیار ڈال دیے تھے۔

      ندیم عباس بھٹ (18) اور کفیل میر (19) نے ایک پندرہ دن قبل لشکر طیبہ میں شمولیت اختیار کی تھی۔ حکام کے مطابق ندیم عباس بھٹ کیموہ کے علاقے راشی پورہ کا رہائشی تھا اور کفیل میر میرپورہ کا رہائشی تھا۔ ایک خفیہ اطلاع پر کارروائی کرتے ہوئے، پولیس اور فوج نے ضلع کولگام کے علاقے ہدیگام میں گھیرا بندی کر لی تھی جہاں انہیں دو دہشت گردوں کے چھپے ہونے کا شبہ تھا۔ تصادم آدھی رات کو کچھ دیر تک جاری رہا اور سیکورٹی فورسز نے اس مکان کا محاصرہ مضبوط کر لیا۔ اس دوران معلوم ہوا کہ ان دونوں دہشت گردوں کی نئی بھرتیاں کی گئی ہیں۔ اس کے بعد اس کے والدین کو بلایا گیا اور ان سے اپیل کی گئی جس کے بعد دونوں نے ہتھیار ڈال دیے۔

       

      جلد آرہی ہےShoaib Akhtarکی راولپنڈی ایکسپریس، پاکستانی کھلاڑی ہر پہلی ہوگی غیر ملکی فلم


      جموں۔کشمیر اپنی پارٹی کی خواتین ونگ کا اجلاس،اسمبلی میں خواتین کو 33فیصدریزرویشن کا مطالبہ


      میڈیا رپورٹس کے مطابق جنوری سے 23 جولائی تک وادی میں سیکورٹی فورسز کے مقابلے میں 118 دہشت گرد مارے گئے ہیں۔ ان میں 32 غیر ملکی دہشت گرد بھی شامل ہیں۔ آئی جی پی کشمیر کے مطابق 118 میں سے 77 دہشت گرد لشکر طیبہ کے رکن تھے۔ 26 دہشت گردوں کا تعلق جیش محمد سے تھا۔

      (ان پٹ  بھاشا  سے)
      Published by:Sana Naeem
      First published: