உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    بین الاقوامی سرحدوں کے کھل جانے سے غیر ملکی سیاحوں کی بڑی تعداد آرہی ہے کشمیر

    بین الاقوامی سرحدوں کے کھل جانے سے غیر ملکی سیاحوں کی بڑی تعداد آرہی ہے کشمیر

    بین الاقوامی سرحدوں کے کھل جانے سے غیر ملکی سیاحوں کی بڑی تعداد آرہی ہے کشمیر

    وادی کشمیر میں سیاحت کو کافی فروغ مل رہا ہے جبکہ بین الاقوامی سرحدوں کے کھل جانے سے غیر ملکی سیاحوں کی کافی تعداد وادی کا رخ کر رہی ہے جو کہ ایک خوش آئندہ بات ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Jammu and Kashmir | Jammu | Srinagar
    • Share this:
    کولگام : وادی کشمیر میں سیاحت کو کافی فروغ مل رہا ہے جبکہ بین الاقوامی سرحدوں کے کھل جانے سے غیر ملکی سیاحوں کی کافی تعداد وادی کا رخ کر رہی ہے جو کہ ایک خوش آئندہ بات ہے۔ ان باتوں کا اظہار ٹاک یعنی ٹریول ایجنٹس ایسوسی ایشن آف کشمیر کے صدر فاروق احمد کتھو نے نیوز 18 نیٹ ورک کے ساتھ ایک خاص بات چیت کے دوران کیا ۔ ٹاک کی چودہ ویں سالانہ کانفرنس سیاحتی مقام اہرہ بل میں منعقد ہوئی، جس میں ملکی و غیر ملکی سطح پر سیاحت کو فروغ دینے پر زور دینے کے علاوہ نئی آف بیٹ سیاحتی مقامات کو نقشے پر لانے کے لیے اقدامات اٹھانے کی کوششیں تیز کرنے پر سرکار کی کوششوں کی سراہنا کی گئی ۔

     

    یہ بھی پڑھئے: دہشت گردوں کی شامت! 248 کروڑ روپئے کے جدید ترین ہتھیاروں سے لیس ہوگی جموں وکشمیر پولیس


    فاروق احمد کتھو نے کہا کہ ہندوستان جیسے بڑے ملک میں بین الاقوامی سیاحوں کے لئے کافی کچھ دیکھنے کے لئے ہیں اور وہ یہاں لطف اندوز ہوسکتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ سیاحوں کے لئے کشمیر سے محفوظ جگہ کوئی نہیں ہے۔ ٹاک کے صدر نے کہا کہ گزشتہ کچھ سالوں سے سیاحت کو کافی فروغ ملا ہے اور یہی وجہ ہے کہ غیر ملکی سیاحوں کے لئے کشمیر نہ صرف محفوظ جگہ ہے بلکہ سیاح یہاں آنے کے لیے کافی پُر جوش ہیں۔

     

    یہ بھی پڑھئے: جموں و کشمیر میں کریک ڈاؤن، پبلک سیفٹی ایکٹ کے تحت مزید سات مذہبی رہنما زیر حراست


    انہوں نے کہا کہ سیاحت سے وابستہ افراد کو نیک نیتی سے کام کرنا ہوگا اور ساتھ ہی سیاحت کے شعبہ کو آگے بڑھانے کے لئے کوشش کرنی ہوگی ۔ محکمہ سیاحت کی اسسٹنٹ ڈائریکٹر ٹورزم کولگام رحمت بٹ نے کہا کہ محکمہ اس حوالےسے کئی اقدامات اٹھارہا ہے ۔

    ادھر محکمہ کے مطابق ایسی میٹنگوں سے اہرہ بل جیسے سیاحتی مقام کو مزید فراغ ملے گا۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: