ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

تساہل پسندی برتنے والے اساتذہ سخت کارروائی کے لئے رہیں تیار، محکمہ تعلیم نے دیا الٹی میٹم

جموں وکشمیر کے کمشنر سکریٹری برائے تعلیم اصغر حسین سامون نے آج انتباہ دیا ہے کہ سرکاری اسکولوں کے اساتذہ کو اب ہول سیل کے بجائے کارکردگی کی بنیاد پر ہی ترقی ملے گی اور اس سلسلے میں سرکار سنجیدہ ہے۔

  • Share this:
تساہل پسندی برتنے والے اساتذہ سخت کارروائی کے لئے رہیں تیار، محکمہ تعلیم  نے دیا الٹی میٹم
تساہل پسندی برتنے والے اساتذہ سخت کاروائی کےلئے رہیں تیار، محکمہ تعلیم نے دیا الٹی میٹم

جموں وکشمیر کے کمشنر سکریٹری برائے تعلیم اصغر حسین سامون نے آج انتباہ دیا ہے کہ سرکاری اسکولوں کے اساتذہ کو اب ہول سیل کے بجائے کارکردگی کی بنیاد پر ہی ترقی ملے گی اور اس سلسلے میں سرکار سنجیدہ ہے۔ انہوں نےکہا کہ یہ قطعی طور ناقابل برداشت ہےکہ سرکار اساتذہ پر مراعات کی بارش کرے اور نتائج کو لے کر ہمیں مایوسی کا سامنا کرنا پڑے۔ اصغر سامون نے آج واضح کر دیا ہے کہ اسکولوں کے کھولنے سے متعلق مرکزی حکومت نے کچھ اشارے دے دیئے ہیں اور انہیں گائیڈ لائنوں کو لے کر جموں وکشمیر کے اندر بھی اسکول کھولنے کے حوالے سے کئی سارے پہلووں کا جائزہ لیا جائے گا اور مشترکہ مشاورت کے بعد ہی کوئی حتمی فیصلہ لیا جائے گا۔


کمشنر سکریٹری نے ایک افتتاحی تقریب کے دوران نیوز 18 سے بات کرتے ہوئے سخت نوٹس لیا ہے کہ سرکاری اساتذہ مراعات لینے کے باوجود بھی کسی حد تک تساہل پسندی کے شکار ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اب کسی بھی قیت پر محکمہ تعلیم میں ہول سیل میں ترقیاں نہیں ہوں گی بلکہ کارکردگی کی بنیاد پر ہی اب ہر کسی استاد کی پرموشن کی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ یہ قطعی طور پر برداشت نہیں ہے کہ سرکاری اساتذہ بھاری رقومات لیں اور نتائج پرائیوٹ اسکولوں کے مد مقابل بھی نہ ہوں اور ہمیں مایوسی کا شکار ہونا پڑے۔


انہوں نے کہا کہ حکومت نے یہ بات سنجیدگی سے لی ہے کہ اب سرکاری اسکولوں میں کام کاج بہتر ہو اور پڑھائی کا نظام پرائیویٹ اسکولوں کے عین متوازن ہی نہیں بلکہ ان سے بہتر ہو۔ انہوں نے کہا کہ اب تعلیم کے معاملے پر ہم سمجھوتہ نہیں کریں گے۔ انہوں نے اساتذہ کو موجودہ حالات میں بھی بچوں تک کسی نہ کسی طرح پہنچنے کی کوشش کا مشورہ دیتے ہوئے کہا ہے کہ کسی بھی طریقے سے وہ اپنی ذمہ داریاں ادا کر سکتے ہیں، لیکن اس کے لئے انہیں اپنے ضمیر کی آواز سننا ہی ہوگی۔


ان کا کہنا تھا کہ ہم اساتذہ پر بہت کچھ خرچ کر رہے ہیں، لیکن ہمارے نتائج حوصلہ افزا ہونے کی صورت ہے۔ تاکہ ہماری محنت رنگ لائے گی۔ اصغر سامون کا کہنا تھا کہ ایجوکیشن محکمہ عبادت کا ایک ذریعہ ہے اور اساتذہ تعلیم کو عبادت سمجھ کر کریں اور بچوں کو اس نور سے منور کریں۔ کیونکہ کوئی بھی قوم بناء تعلیم کے دنیا کے دیگر ممالک سے مقابلہ نہیں کرسکتی ہے۔ کمشنر سکریٹری برائے ایجوکیشن نے اس بات پر زور دیا ہے کہ ہمارے اساتذہ کسی سے کم نہیں ہے، لیکن صرف اور صرف انہیں محنت کی ضرورت ہے اور جوں ہی وہ محنت کریں گے وہ ضرور اس مشن میں کامیاب ہوجائیں گے۔ ہم اپنے نتائج میں بھی بہتری لانے کی ہر ممکن کوشش کریں گے کیونکہ یہ سب کو ایک ساتھ چلنا ہوگا۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Aug 09, 2020 04:22 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading