உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    RainFall in Kashmir: کشمیر میں لمبی خشک سالی کے بعد بارش، ڈل جھیل کے کنارے سیاحوں نے لیا بارش کے خوشگوار موسم کا مزہ

    Youtube Video

    Rain Fall in Kashmir: ڈل جھیل کے کنارے کئی سیاح بارش کے بعد خوشگوار موسم کا مزہ لیتے نظر ائے۔ حالانکہ کچھ سیاح اس بات سے نا خوش تھے کہ بارش کے چلتے وہ باغوں کی سیر آج نہیں کر پائے لیکن اکثر موسم کے بدلے مزاج سے خوش ہیں۔

    • Share this:
    سرینگر: لمبی خشک سالی اور بارش کی کمی سے جوجھ رہے کشمیر میں کل دیر رات سے شروع ہوئی بارش راحت کا سامان بن کے آئی ہے۔ کشمیر میں مارچ اور اپریل کے مہینے میں سب سے زیادہ بارش ہوتی ہے لیکن اس بار بارش نہ ہونے کے برابر ہوئی ہئ۔ محکمہ موسمیات کے مطابق جموں کشمیر میں مارچ اور اپریل میں معمول کے حساب سے 222 ملی میٹر بارش ہوتی ہے لیکن اس بار پہلی مارچ سے 20 اپریل تک صرف 23 ملی میٹر بارش ہوئی تھی جو بارش کی کمی کا ایک ریکارڈ رہا۔ کل دیر رات اکثر علاقوں میں بارش کا سلسلہ شروع ہوا اور دوپہر ایک بجے تک اکثر علاقوں میں اوسط درجے کی بارش ہوئی۔

    محکمہ موسمیات کے افسران کے مطابق سرینگر شہر میں دوپہر تک 15 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی اور گلمرگ میں 24 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی۔ موسمیاتی مرکز سرینگر کے انچارج مختار احمد نے بتایا کہ آج شام تک بارش کا سلسلہ کم و بیش جاری رہے گا لیکن اس کے بعد اپریل کی آخر تک عام طور پر موسم خشک رہنے کا امکان ہے۔ بارش کے ساتھ ہی درجہ حرارت بھی معمول پر آگیا ہےجو ایک ہفتہ قبل معمول سے 8 سے 10 ڈگری سیلسیس زیادہ ہوگیا تھا۔ عام لوگ بارش سے کافی خوش ہیں۔

    یہ بھی پڑھئے: Athiya Shetty and KL Rahul کرنے والے ہیں شادی! جانئے کب بجے گی شہنائی؟

    عامر ملک نامی ایک مقامی شخص نے بتایا کہ یہ بارش رحمت بن کے برسی ہےکیونکہ پھل کے باغات اور یہاں کی سیاحت سمیت کئی شعبوں کے لئے یہ بارش اہم ہے۔ انھوں نے کہا کہ خشک سالی کے چلتے پینے کے پانی کی قلت کا بھی اندیشہ تھا ۔ حالانکہ بارش ابھی بھی معمول کے حساب سے 80 فیصد کم ہوئی ہےلیکن فی الحال اس بارش نے کافی خدشات کو کم کیا کیا ہے۔


    ڈل جھیل کے کنارے کئی سیاح بارش کے بعد خوشگوار موسم کا مزہ لیتے نظر ائے۔ حالانکہ کچھ سیاح اس بات سے نا خوش تھے کہ بارش کے چلتے وہ باغوں کی سیر آج نہیں کر پائے لیکن اکثر موسم کے بدلے مزاج سے خوش ہیں۔ کشمیر کے کچھ پہاڑی  علاقوں جیسے گریز، مچھل اور زبرون کے اوپری پہاڑیوں پر ہلکی برفباری بھی ہوئی ہے۔
    Published by:Sana Naeem
    First published: