உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    اگنی پتھ اسکیم کے خلاف جموں شہر میں زبردست احتجاج، کئی افراد کو پولیس نے کیا گرفتار

    ’اگنی پتھ اسکیم' کے خلاف جموں شہر میں زبردست احتجاج نے جموں شہر کو ہلا کر رکھ دیا۔ کانگریس، عام آدمی پارٹی اورکچھ دیگر تنظیموں نے حکومت سے فوجی بھرتی اسکیم کو منسوخ کرنے کا مطالبہ کیا، جس سے پولیس نے احتجاج کرنے والے کئی اراکین کو حراست میں لے لیا ہے۔

    ’اگنی پتھ اسکیم' کے خلاف جموں شہر میں زبردست احتجاج نے جموں شہر کو ہلا کر رکھ دیا۔ کانگریس، عام آدمی پارٹی اورکچھ دیگر تنظیموں نے حکومت سے فوجی بھرتی اسکیم کو منسوخ کرنے کا مطالبہ کیا، جس سے پولیس نے احتجاج کرنے والے کئی اراکین کو حراست میں لے لیا ہے۔

    ’اگنی پتھ اسکیم' کے خلاف جموں شہر میں زبردست احتجاج نے جموں شہر کو ہلا کر رکھ دیا۔ کانگریس، عام آدمی پارٹی اورکچھ دیگر تنظیموں نے حکومت سے فوجی بھرتی اسکیم کو منسوخ کرنے کا مطالبہ کیا، جس سے پولیس نے احتجاج کرنے والے کئی اراکین کو حراست میں لے لیا ہے۔

    • Share this:
    جموں: ’اگنی پتھ اسکیم' کے خلاف جموں شہر میں زبردست احتجاج نے جموں شہرکو ہلا کر رکھ دیا۔ کانگریس، عام آدمی پارٹی اورکچھ دیگر تنظیموں نے حکومت سے فوجی بھرتی اسکیم کو منسوخ کرنے کا مطالبہ کیا، جس سے پولیس نے احتجاج کرنے والے کئی اراکین کو حراست میں لے لیا ہے۔

    ملک کے کچھ حصوں میں منائے گئے بھارت بند کے پیش نظر، پولیس نے جموں شہر میں حفاظتی انتظامات سخت کر دیئے اور امن و امان کی صورت حال میں خلل ڈالنے کی کوشش کرنے والوں کے خلاف سخت کارروائی کا انتباہ دیا۔ ادے چِب کی قیادت میں یوتھ کانگریس کے سینکڑوں کارکن شہر میں جمع ہوئے اور اگنی پتھ کے خلاف احتجاجی ریلی نکالی، لیکن پولیس نے انہیں روک دیا۔

    کانگریس، عام آدمی پارٹی اورکچھ دیگر تنظیموں نے حکومت سے فوجی بھرتی اسکیم کو منسوخ کرنے کا مطالبہ کیا، جس سے پولیس نے احتجاج کرنے والے کئی اراکین کو حراست میں لے لیا ہے۔
    کانگریس، عام آدمی پارٹی اورکچھ دیگر تنظیموں نے حکومت سے فوجی بھرتی اسکیم کو منسوخ کرنے کا مطالبہ کیا، جس سے پولیس نے احتجاج کرنے والے کئی اراکین کو حراست میں لے لیا ہے۔


    چب سمیت ایک درجن سے زائد کارکنوں کو پولیس نے حراست میں لے لیا۔ ایک اور احتجاج میں، AAP کارکنوں نے جیول چوک میں ایک ریلی نکالی اور انہیں بھی حراست میں لے لیا گیا۔ حکومت پر تنقید کرتے ہوئے، ادے چِب نے الزام لگایا کہ اس اسکیم کا مقصد ہندوستانی نوجوانوں کے مستقبل کو تباہ کرنا ہے، جو مسلح افواج میں شامل ہونے کی خواہش رکھتے ہیں اور وہ اسے منسوخ کرنے کا مطالبہ کررہے ہیں۔

    چِب نے بتایا کہ یہ نہ صرف نوجوانوں کو چار سالہ ملازمت کی پالیسی کی پیشکش کرکے ان کے مستقبل کے ساتھ کھیلنا ہے، بلکہ یہ مسلح افواج کے ادارے کی توہین اور اس کے معیار کو کم کرنے کے مترادف ہے۔ عام آدمی پارٹی کے کارکنوں نے بھی اس سکیم کے خلاف سخت احتجاج کیا ہے۔

    دوسری جانب، کٹھوعہ، سانبہ، ریاسی اور راجوری اضلاع میں بھی احتجاجی مظاہرے ہوئے۔ تاہم پولیس نے کہا کہ کہیں سے تشدد کی کوئی اطلاع نہیں ہے۔ مرکز نے گزشتہ منگل کو 17 سے ساڑھے 21 سال کی عمر کے نوجوانوں کو فوج، بحریہ اور فضائیہ میں بھرتی کرنے کے لئے اگنی پتھ اسکیم کی نقاب کشائی کی، زیادہ تر چار سال کے کنٹریکٹ کی بنیاد پر، اس نے بعد میں اس سال کی بھرتی کے لئے عمر کی بالائی حد کو 23 کر دیا۔ اس اسکیم کے خلاف مظاہروں نے ملک کے مختلف حصوں کو متاثر کیا ہے، جس میں مظاہرین نے عوامی املاک کی توڑ پھوڑ کی اور بہار، پنجاب اور اتر پردیش جیسی ریاستوں میں ٹرینوں کو نذر آتش کیا۔ تاہم جموں میں کویی بھی تشدد کا واقعہ پیش نہیں آیا ہے۔
    Published by:Nisar Ahmad
    First published: