ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

مستقل رہائشی سہولیات فراہم نہ کرنے کے خلاف مائیگرنٹ کشمیری پنڈتوں کا احتجاج، ایک دہائی سے سرکار بازآبادکاری پروگرام کو عملی جامہ پہنانے میں ناکام

ٹرانزٹ کیمپ میں مقیم کشمیری پنڈتوں کا کہنا ہے کہ وہ گذشتہ ایک دہائی سے بہتر رہائشی سہولیات کی مانگ کر رہے ہیں تاہم آج یہ سہولیات کشمیری پنڈتوں کے بجائے سیاسی ورکروں اور دیگر عوامی نمائندوں کو چور دروازے سے فراہم کی جا رہی ہیں۔

  • Share this:
مستقل رہائشی سہولیات فراہم نہ کرنے کے خلاف مائیگرنٹ کشمیری پنڈتوں کا احتجاج، ایک دہائی سے سرکار بازآبادکاری پروگرام کو عملی جامہ پہنانے میں ناکام
مستقل رہائشی سہولیات فراہم نہ کرنے کے خلاف مائیگرنٹ کشمیری پنڈتوں کا احتجاج

ویسو قاضی گنڈ: ویسو قاضی گنڈ میں مقیم مائگرینٹ کشمیری پنڈت پچھلے ایک دہائی سے Pre Fabricated یعنی عارضی کوارٹروں میں رہایش پذیر ہیں جس کی وجہ سے مائگرینٹ اسامیوں کے تحت سرکاری ملازمت کرنے والے ان کنبوں کو کافی دشواریوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ اس دوران حکومت نے  وزیراعظم پیکج کے تحت بازآبادکاری پروگرام کے چلتے ویسو قاضی میں ہی مستقل طور پر رہائشی کوارٹر تعمیر کیے ہیں۔ اگرچہ ان میں سے کئی ایک بلڈنگوں پر کام جاری ہے تاہم بیشتر کا کام مکمل ہو چکا ہے۔


ٹرانزٹ کیمپ میں مقیم کشمیری پنڈتوں کا کہنا ہے کہ وہ گذشتہ ایک دہائی سے بہتر رہائشی سہولیات کی مانگ کر رہے ہیں تاہم آج یہ سہولیات کشمیری پنڈتوں کے بجائے سیاسی ورکروں اور دیگر عوامی نمائندوں کو چور دروازے سے فراہم کی جا رہی ہیں۔ ویسو قاضی گنڈ میں مقیم کشمیری پنڈتوں نے حکومت کے اس رویہ کی نہ صرف نکتہ چینی کی بلکہ رہائشی سہولیات فراہم نہ کرنے پر برہمی کا اظہار بھی کیا۔ ویسو مائگرینٹ ملازمین ویلفیر ایسوسی ایشن کے صدر سنی رینہ کا کہنا ہے کہ ٢٠١٠ میں انہیں بازآبادکاری پالیسی کے تحت وادی واپس لایا گیا جبکہ اس وقت ١٢٠٠ سو افراد پر مشتمل ٣٢٨ کنبے یہاں رہایش پذیر ہیں جبکہ 4 سو کنبے کرایہ کے مکانوں میں رہایش پذیر ہیں۔


سنی رینہ کے مطابق ٢٠٢٥ میں کچھ ملازمین ریٹایر ہو رہے ہیں اور  اگر انہیں یہ رہائشی سہولیات آج فراہم نہیں کی جاتی ہے تو اس کا مطلب اور مقصد فوت ہو جاتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ سرکار کشمیری پنڈتوں کی مشکلات کا ازالہ نہیں کر رہی ہے جس کے چلتے اب بیشتر بزرگوں نے وزیراعظم دفتر کو خط بھیجا ہے تاکہ اس مسلے کی شنوائی ہو سکے۔ مائگرینٹ کشمیری پنڈت ملازم سنجے ہانگلو کا کہنا ہے کہ انکا اہل و عیال کسمپرسی کی زندگی گزار رہا ہے اور سرکار نے جن وعدوں کے تحت انہیں وادی واپس لانے کا منصوبہ بنایا اس کو عملی جامہ پہنانے میں سرکار ناکام ہو گئی ہے۔


ظہور رضوی کی رپورٹ
Published by: Nadeem Ahmad
First published: Aug 10, 2020 09:11 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading