உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    جموں وکشمیر: بارہمولہ اور کپواڑہ میں دہشت گردوں نے سیکورٹی اہلکاروں پر کیا گرینیڈ حملہ، ایک جوان سمیت تین زخمی

    جموں وکشمیر: بارہمولہ اور کپواڑہ میں دہشت گردوں نے سیکورٹی اہلکاروں پر کیا گرینیڈ حملہ، ایک جوان سمیت تین زخمی

    جموں وکشمیر: بارہمولہ اور کپواڑہ میں دہشت گردوں نے سیکورٹی اہلکاروں پر کیا گرینیڈ حملہ، ایک جوان سمیت تین زخمی

    Jammu Kashmir Terrorist Attack Security Forces: کپواڑہ ضلع کے ہندواڑہ کے لنگیٹ علاقے میں سی آرپی ایف بنکر پر گرینیڈ حملے میں ایک جوان زخمی ہوگیا ہے۔

    • Share this:

      سری نگر: بارہمولہ کے آزاد گنج علاقے میں پیر کے روز دہشت گردوں نے سی آرپی ایف جوانوں پر ایک گرینیڈ پھینکا، جس میں دو شہری زخمی ہوگئے اور ایک ٹویرا گاڑی تباہ ہوگئی۔ حملے کے فوراً بعد کپواڑہ ضلع کے ہند واڑہ کے لنگیٹ علاقے میں دہشت گردوں نے سی آر پی ایف بنکر پر پھر حملہ کیا، جس میں سی آرپی ایف کا ایک جوان زخمی ہوگیا۔


      زخمیوں کو علاج کے لئے اسپتال لے جایا گیا ہے۔ سی آرپی ایف جوان سمیت تینوں زخمیوں کی حالت سنگین بتائی جارہی ہے۔ دہشت گردانہ حملے میں سی آر پی ایف جوان کی ٹھڈی پر معمولی چوٹ آئی ہے۔ سیکورٹی اہلکاروں نے حملہ آوروں کو پکڑنے کے لئے بارہمولہ کے آزاد گنج اور ہندواڑہ کے لنگیٹ علاقے کو گھیر لیا ہے۔


      کچھ دنوں پہلے ہی 13 اگست کو جموں وکشمیر میں یوم آزادی سے قبل قومی شاہراہ پر حملے کی سازش کر رہے ایک پاکستانی دہشت گرد کے کلگام ضلع میں ایک تصادم میں مارے جانے سے سیکورٹی اہلکاروں کو بڑی کامیابی ملی تھی۔ افسران نے کہا تھا کہ رات بھر چلا تصادم اس وقت شروع ہوا تھا جب ایک عمارت میں چھپے دو دہشت گردوں نے جموں - سری نگر قومی شاہراہ پر بی ایس ایف کے قافلے پر ‘اندھا دھند’ گولی باری شروع کردی۔




      سیکورٹی اہلکاروں نے دہشت گردوں کی آمدورفت کی نگرانی کے لئے ڈرونوں کی مدد لی تھی۔ کشمیر کے پولیس جنرل ڈائریکٹر (آئی جی پی) وجے کمار نے کہا تھا کہ مارے گئے دہشت گردوں کی شناخت پاکستان کے عثمان کے طور پر ہوئی ہے، جو گزشتہ 6 ماہ سے سرگرام ایک ’خطرناک دہشت گرد‘ تھا۔ دہشت گردوں کی اندھا دھند گولی باری میں ایک سی آر پی ایف جوان، ایک فوجی اہکار اور دو شہری زخمی ہوئے تھے۔

      Published by:Nisar Ahmad
      First published: