ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

دو لوگوں نے مسجد میں گھس کر کی بیحد گھنونی حرکت، سی سی ٹی کیمرے میں سب ہو گیا قید، گرفتار

شمالی کشمیر کے ضلع بارہمولہ کے کنزر میں کئی مساجد میں چوری کی وارداتیں انجام دی گئیں۔

  • Share this:
دو لوگوں نے مسجد میں گھس کر کی بیحد گھنونی حرکت، سی سی ٹی کیمرے میں سب ہو گیا قید، گرفتار
شمالی کشمیر کے ضلع بارہمولہ کے کنزر میں کئی مساجد میں چوری کی وارداتیں انجام دی گئیں۔

وادی کشمیر میں چوروی اور بینک ڈکیتی کی وارداتیں آئے دن سامنے آتی رہتی ہیں یہاں تک کہ مذہبی مقامات جن میں مساجد، آستان وغیرہ بھی شامل ہیں۔ چور ان مذہبی مقامات کوبھی نہیں بخشتے ہیں۔ شمالی کشمیر کے ضلع بارہمولہ کے کنزر میں کئی مساجد میں چوری کی وارداتیں انجام دی گئیں۔ ان مساجد سے بھاری جمع شدہ رقومات پر ہاتھ صاف کیا گیا۔ جموں وکشمیر پولیس نے ان چوروں کے خلاف مہم شروع کرکے سی سی ٹی وی فوٹیج کی مدد سے مسجدوں کی چوری میں شامل دو چوروں کو گرفتار کیا۔ اٹکو علاقے کی مسجد میں جب ان چوروں نے رات کی اندھیری کا فائدہ اٹھا کر مسجد کی سیف توڑ کران میں موجود رقومات اڑا لئے۔ انہیں یہ پتہ نہیں چل سکا کہ مسجد میں سی سی ٹی وی کیمرہ نصب ہے اس میں ان کی ساری کارستانی قید ہورہی ہے ۔ کنزر کے لوگوں نے جب سی سی ٹی وی کیمرے میں قید ہوئی ساری گھنونی حرکت پولیس اسٹیشن میں پیش کی تو پولیس نے فوراً کاروائی شروع کرکے دو چوروں کو فی الحال سلاخوں کے پیچھے ڈال دیا گیا۔


غلام محمد نامی ایک مقامی نے نیوز 18 اردو کو بتایا کہ اٹکو علاقے میں مسجدوں کی کئی بار چوری ہوئی جن میں قائم کردہ سیف سے بھاری رقومات اور دیگر ساز وسامان اڑا لئے اس ناسور کو ختم کرنے کی غرض سے مقامی لوگوں نے پولیس اسٹیشن کنزر میں شکایت درج کروائی جس پر پولیس نے کارروائی کرتے ہوئے مسجد کی سی سی ٹی وی فوٹیج کی مدد سے دو ملوث چوروں کو گرفتار کیا۔پولیس نے اپنے پریس ریلیز میں کہاکہ ان چوروں نے اعتراف کرکے اپنے ساتھیوں کانام بھی ظاہر کیا۔ ان چوروں کی شناخت چھان پورہ ٹنگمرگ کے عبدالمجید لون اور میر گنڈ کے عمران حسین میرکے طور پر ہوئی۔ دونوں کے خلاف کیس درج کیا گیا ہے۔ مزید تحقیقات شروع کردی گئی۔




غلام نبی نامی ایک مقامی نے نیوز18اردوکوبتایاکہ انتظامیہ کو نوجوانوں کی کونسلنگ کرنی چاہیے انہوں نے کہاکہ جس طرح انتظامیہ لوگوں کی فلاح وبہبودی اور تعمیروترقی کے حوالے سے مختلف گرام سبھا،بیک ٹو ولیج جیسے پروگرام منعقد کرتے ہیں اسی طرح ان پروگراموں میں ایسے واردات کے روک تھام کے لیے اقدامات اٹھا کر نوجوانوں کی بنیادی سطح پر کونسلنگ کرنی چاہیے تاکہ بروقت انہیں جرائم کی طرف جانے سے روکا جاسکے۔انہوں نے جموں وکشمیر پولیس کی اس کاروائی پر ایس ایچ او کنزر کا شکریہ ادا کیا۔ادھر مقامی لوگوں نے بھی پولیس کے اس اقدام کی ستائش کی۔ضرورت اس بات کی ہے کہ ایسے جرائم میں ملوث افراد کے خلاف سخت کارروائی کی جائے۔
Published by: Sana Naeem
First published: May 08, 2021 07:35 PM IST