ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

وادی کشمیر میں مسلمانوں نے پھر پیش کی مذہبی ہم آہنگی کی انوکھی مثال ، جم کر ہورہی تعریف

اوقاف کیمیٹی کے چیئرمین محمد اکرم نے بتایا کہ وادی کشمیر ہمیشہ سے مذہبی آہنگی کیلئے جانی جاتی ہے اور یہاں کے مسلمان ، سکھ اور ہندو ہمشہ ایک دوسرے کے دکھ سکھ میں شریک رہتے ہیں ۔

  • Share this:
وادی کشمیر میں مسلمانوں  نے پھر پیش کی مذہبی ہم آہنگی کی انوکھی مثال ، جم کر ہورہی تعریف
وادی کشمیر میں مسلمانوں نے پھر پیش کی مذہبی ہم آہنگی کی انوکھی مثال ، جم کر ہورہی تعریف

وادی کشمیر ہمشیہ ہندو مسلم بھائی چارے کا گہوارہ رہی ہے ، جہاں تمام مذاہب کے لوگ موجودہ حالات میں ایک دوسرے کی مدد کر کے حالات کا مقابلہ کر رہے ہیں ۔ جنوبی کشمیر کے پانپور کے کھریوعلاقہ میں منگل کو پھر ایک مرتبہ اس وقت بھائی چارے کی انوکھی مثال دیکھنے کو ملی ، جب پنجاب کے گرداس پورہ علاقہ سے تعلق رکھنے والے ایک 80 سالہ سکھ تاجر کی اچانک موت ہولئی ہے ۔ مقامی لوگوں کے مطابق تحیل سنگھ اصل میں گرداس پورہ پنچاب کے رہنے والے تھے اور گزشتہ 32  سالوں سے کھریو پانپور میں کرایہ پر رہایش پذیرتھے اور کپڑوں کے کاروبارکے ساتھ منسلک تھے ۔


لوگوں کا کہنا ہے ملک میں کورونا وائرس اور لاک ڈاون کی وجہ سے وہ ان کی لاش کو گرداس پور نہیں پہنچاسکتے تھے اور نہ ہی ان کا کوئی رشتہ دار یہاں پہنچ سکتا تھا ۔ اس دوران کھریو پانپور کے اوقاف کمیٹی کے سکریٹری محمد اشرف نے نیوز ۱۸ کو بتایا کہ انہوں نے پھر تحیل سنگھ کے بیٹے کے ساتھ مشورہ کرکے  فیصلہ کیا کہ ان کی آخری رسومات یہیں انجام دیدی جائے ، جس کے بعد انہوں کچھ سکھ برادری کے لوگوں کو بلاکر ان کی آخری رسومات انجام دیں ، جس کا پورا انتظام مقامی مسلمانوں نے کیا ۔


اوقاف کیمیٹی کے چیئرمین محمد اکرم نے بتایا کہ وادی کشمیر ہمیشہ سے مذہبی آہنگی کیلئے جانی جاتی ہے اور یہاں کے مسلمان ، سکھ اور ہندو ہمشہ ایک دوسرے کے دکھ سکھ میں شریک رہتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ کھریو پانپور میں مہشور جوالا جی مندر موجود ہے اور ہر سال ہزاروں کی تعداد میں یہاں پنڈت برادری کے لوگ درشن کرنے کے لئے آتے ہیں اور مسلمان ہمیشہ ان کے لئے انتظامات کرتے ہیں ۔


قابل ذکر بات یہ ہے کہ یہ پہلا موقع نہیں ہے جب یہاں کے مسلمان اس طرح کی مدد کیلئے پیش پیش رہے ہیں ۔ اس سے قبل بھی لاک ڈون میں متعدد ایسے واقعات دیکھے گئے ہیں ، جس پر ہر کوئی کہتا کہ ہمیں کشمیری ہونے پر فخر ہے ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Aug 04, 2020 09:26 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading